پیپلز مومنٹ اور سکھ انٹلکچول کا اجلاس

جموں//جموں کشمیرپیپلز مومنٹ نے اور سکھ انٹلکچول سرکل نے الزام عائد کیا ہے کہ وادی میں نوجوان نسل کو اپنی گولیوں کا شکار بنا کر کشمیریوں کی نسل کشی کی جارہی ہے جسے فوری طور پر بند کیا جانا چاہیے ۔یہاں جاری بیان کے مطابق جموں میں پیپلز مومنٹ اور سکھ انٹلکچول سرکل کی جانب سے منعقد کئے گئے ایک مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سینئر حریت رہنما اور پیپلز مومنٹ کے چیئرمین میر شاہد سلیم نے گزشتہ اتوار کو شوپیاں میں شہری ہلاکتوں کی پر زور مذمّت کرتے ہوئے کہا کہ بھارت نے کشمیری عوام کے خلاف اعلانِ جنگ کر رکھا ہے جس کا واحد مقصد کشمیریوں کی نسل کشی کرنا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارت میں ایک ہرن مارنے کی پاداش میں 20برس بعد بھی کسی امیر اور با اثر شخص کو سزا دی جا سکتی ہے مگر ہزاروں کشمیریوں کے قتل عام میں ملوث اہلکاروں کے خلاف کوئی بھی کاروائی نہیں کی جاتی بلکہ انہیں ریاست میں نافذ سیاہ قوانین کے تحت ہر طرح کا تحفظ دیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا نوٹس لے کر اس سلسلہ کو بند کروانے میں اپنا بھر پور رول ادا کریں۔پیپلز مومنٹ کے چیئرمین نے کہاکہ بھارت کی جانب سے اپنائی گئی ظالمانہ پالیسی کے خطر ناک نتائج بر آمد ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کو کشمیر میں جبرو استبداد کی پالیسی ترک کر کے مسئلہ کشمیر کے پر امن اور دائمی حل کے لئے فریقین سے سنجیدہ مذاکرات شروع کرنے چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ظلم و زیادتی کے ذریعے کشمیریوں کی مبنی بر صداقت تحریک کو کچلنے میں بری طرح ناکامی ہوئی ہے لہٰذا نوشتہ دیوار پڑھ کر مسئلہ کشمیر کی حقائق تسلیم کرنی چاہیے ۔اس موقعہ پر سکھ انٹلکچول سرکل کے چیرمین سردار نریندر سنگھ خالصہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کشمیر میں طاقت کا بے دریغ استعمال کر کے تشدد اور قتل غارتگری کا ارتکاب کر رہا ہے جس کے بعث نوجوان نسل میں فرسٹریشن اور مایوسی کا رجحان بڑھتا جا رہا ہے۔ سرکار کی جانب سے اپنائی گئی ہٹ دھرمی اور غیر منصفانہ رویے کے باعث نوجوان تشدد کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور ہو رہے ہیں۔ انہوں نے بھارت اور پاکستان کی حکومتوں پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر کو اپنے تاریخی پس منظر میں حل کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کو یہ بات اچھی طرح سمجھ لینی چاہیے کہ مسئلہ کشمیر کو حل کئے بنا خطہ میں امن قائم ہو سکتا ہے اور نہ تعمیر و ترقی کا دور شروع ہو سکتا ہے۔ مشترکہ اجلاس سے دونوں تنظیموں کے جن دوسرے رہنما ؤں نے خطاب کیا ان میں عبدل الجبار حجام، سردار دلجیت سنگھ، محمد شریف کھانڈے، امنجیت سنگھ، محمد عبداللہ ملک اور سرجیت سنگھ شامل ہیں۔