وزیر مملکت برائے جل شکتی و قبائلی امور کا کشتواڑ دورہ مکمل | کئی وفود کے ساتھ بات چیت کی ، جل شکتی محکمہ کے کام کاج کا جائزہ لیا

کشتواڑ //مرکزی وزیر مملکت برائے جل شکتی اور قبائلی امور بشیشور ٹوڈو جو مرکزی حکومت کے عوامی آؤٹ ریچ پروگرام کے ایک حصے کے طور پر ضلع کشتواڑ کے 3 روزہ دورے پر تھے ، نے پیر کواپنے دورے کا اختتام کیا ۔ اپنے دورے کے آخری دن انہوں نے پی آر آئی کے ارکان کے ساتھ بات چیت کی اور مختلف مسائل پر تبادلہ خیال کیا ، ان کی شکایات سُنیں اور اس کے علاوہ جل شکتی ڈیپارٹمنٹ کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ پی آر آئی کے ارکان کے وفد کے ساتھ بات چیت کیے دوران انہوںنے زور دیا کہ وہ شکایات کے ازالے کے طریقہ کار میں لوگوں اور انتظامیہ کے درمیان ایک پُل کا کام کریں ۔ انہوں نے ان پر زور دیا کہ وہ مقامی انتظامیہ کے ساتھ مل کر ترقیاتی سکیموں اور منصوبوں کے موثر نفاذ میں کام کریں ۔ شیڈول ٹرائب کے وفد کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے شیڈول ٹرائب کے سماجی ، معاشی ترقی کیلئے فلاحی اسکیموں کے موثر نفاذ سے متعلق کئی مسائل سُنے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے معاشرے کے قبائلی طبقات کیلئے بہت سی فلاحی اسکیمیں شروع کی ہیں جو ان پسماندہ طبقات کی بہتری کو یقینی بنائیں گی اور وقت کی ضرورت صرف ان سکیموں کے متعلقہ افراد کو آگاہ کرنا ہے ۔ بعد میں سیاسی جماعتوں اور ٹھیکیداروں کے وفد نے وزیر سے ملاقات کی اور انہیں ضلع میں مختلف ترقیاتی پروجیکٹس کے نفاذ کے راستے میں مختلف رکاوٹوں سے آگاہ کیا ۔ وزیر نے ان کے مسائل کو غور سے سُنا اور ان شکایات کے جلد ازالے کی یقین دہانی کرائی اور یقین دلایا کہ وہ ان کے حقیقی مسائل کو مرکزی اور مقامی حکومت کے ساتھ اٹھائیں گے ۔ مرکزی اور یو ٹی حکومت کی جانب سے نوجوانوں اور خواتین کی روزی روٹی مشن کے بینر کے تحت اٹھائے گئے اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے زوردیا کہ نوجوان آگے آئیں اور متعلقہ سرکاری محکموں میں اپنا اندراج کروائیں ۔ وزیر نے کہا کہ ضلع میں ہائیڈرو الیکٹرک پاور پراجیکٹس نے ضلع میں روز گار کے مواقع میں مزید اضافہ کیا ہے ۔ وفد نے وزیر کو علاقے کا دورہ کرنے ، ترقیاتی کاموں کا افتتاح کرنے کے علاوہ لوگوں کی شکایات سُننے کیلئے اُن کی تعریف کی ۔ قبل ازیں مرکزی وزیر نے جل شکتی ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ میٹنگ کی صدارت کی اور اس کے کام اور پیش رفت کا جائیزہ لیا ۔ وزیر نے ایگزیکٹو ایجنسیوں پر زور دیا کہ وہ ممتاز نائی گڑھ واٹر سپلائی سکیم کے سول ورکس پر پیش رفت کو تیز کریں اور اس بات کو یقینی بنانے پر زور دیا کہ زیر زمین پانی کے ذخائیر مقررہ وقت میں مکمل ہوں تا کہ شہر اور ملحقہ علاقوں میں پانی کی مناسب فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے ۔ مزید براں وزیر نے جل شکتی ڈیپارٹمنٹ کے حکام کو ہدایت دی کہ جل جیون مشن کے تحت 2022 تک نل کے پانی سے ہر گھر کی صد فیصد کوریج کو یقینی بنایا جائے ۔