مزید خبریں

راجوری میں کئی سڑکوں و تعلیمی اداروں کے نام تبدیل | حکم نامہ پولیس کو اعتراضات کے سلسلہ میں روانہ کردیا گیا 

سمت بھارگو 
راجوری //ضلع انتظامیہ راجوری کی جانب سے ضلع میں کئی سڑکوں ، اداروں اور چوکوں کو کئی سول اور فورس کے شہدا کے ناموں پر رکھے جانے کی تجویز پیش کی ہے ۔اس سلسلہ میں ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری کے دفتر کی جانب سے ایک تجویز پیش کرنے کے بعد اعتراضات بھی طلب کئے گئے ہیں۔کشمیر عظمیٰ کے پاس موجود حکم نامے کی کاپی کے مطابق ایس ایس پی راجوری کے دفتر میں ایک حکم نامہ ارسال کیا گیا ہے جس میں پولیس سے کہا گیا ہے کہ وہ اس بات کی تصدیق کرے کہ جیسے مقامی آبادی کے درمیان اس طرح کے نام رکھنے پر کوئی اعتراض ہے یا نہیں جبکہ اس کے علاوہ شہیدا کے سلسلہ میں مزید جانکاری بھی طلب کی گئی ہے ۔اس تجویز کے تحت راجوری ضلع کے کئی کالج جن میں گور نمنٹ ڈگری کالج نوشہرہ کو سوامی وویکا نند کالج ،پوسٹ کالج راجوری کو ڈاکٹر اے پی جے عبدالکلام کالج ،سندر بنی کالج کو اٹل بہاری وجپائی کالج ،کالا کوٹ کالج کو ڈاکٹر شامہ پرساد مکھر جی کالج جبکہ گور نمنٹ ڈگری کالج ڈھونگی کو شہید گنشام کھجوریہ کالج کے طور پر تجویز کیا گیا ہے ۔اسکے علاوہ گور نمنٹ ڈگر ی کالج تھنہ منڈی کو حوالدار نصیر احمد کالج رکھنے کی تجویز رکھی گئی ہے ۔اسی طرح ضلع میں کئی دیگر تعلیمی اداروں وسکولوں کے نام کو تبدیل کرکے شہدا کے نام منسوب رکھا گیا ہے ۔اس کے علاوہ ضلع میں کئی سڑکوں وچوکوں کے نام بھی تبدیل کئے گئے ہیں جس میں تھنہ منڈی دیرہ گلی سڑک کو ڈاکٹر بھیم رائو امبیڈاکر روڈ،نوشہرہ میں چوکی تا گیان سڑک کو حوالدار بابو رام چوہدری سڑک ،بس سٹینڈ چوی درہال کو محمد اقبال چوک کے علاوہ دیگر سڑکوں کے نام بھی تبدیل کر دئیے گئے ہیں ۔ضلع انتظامیہ کے ایک آفیسر نے بتایا کہ مذکورہ قدم شہدا ء کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے اٹھایا گیا ہے ۔
 
 
 
 
 
 

راج نگر اپر کی عوام آلودہ پانی استعمال کرنے پر مجبور 

محمد بشارت
کوٹرنکہ //بدھل کی پنچایت حلقہ راج نگر اپر گھبر میں مقامی لوگ محکمہ جل شکتی کی لاپرواہی کی وجہ سے آلودہ پانی استعمال کرنے پر مجبور ہے ۔مقامی لوگوں نے متعلقہ محکمہ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ واٹر سپلائی ٹینک کی حالت انتہائی خراب ہو گئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ ٹینک میں سوراخ ہونے کی وجہ سے کیڑے مکوڑے ودیگر جانور ٹینک میں داخل ہو جاتے ہیں جبکہ اس وجہ سے کئی ایک کیڑے مکوڑے ٹینک میں ہی مردہ پائے جاتے ہیں لیکن متعلقہ محکمہ پانی کی صاف کرنے کے بجائے یوں ہی عوام کو سپلائی کردیتے ہیں ۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ٹینک میں صفائی ستھرائی کیساتھ ساتھ کیڑے مکوڑے مارنے والی کوئی بھی دوائی استعمال نہیں کی جارہی ہے ۔انہوں نے محکمہ جل شکتی کے اعلیٰ آفیسران و ضلع انتظامیہ راجوری سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ پانی کے ٹینک کی صفائی ستھرائی کیلئے ملازمین کوہدایت جاری کی جائیں تاکہ ان کی پریشانیاں کم ہو سکیں ۔
 
 
 

پنچایت گھر نکہ منجہاڑی سے 6 برس بعد ناجائز قبضہ ہٹایا گیا 

جاوید اقبال
مینڈھر //پنچایت گھر نکہ منجہاڑی مڈل میں حکام کی جانب سے 6برس بعد پنچایت گھر کی عمارت خالی کروا لی گئی ہے ۔انتظامیہ کی جانب سے 2013میں پنچایت گھر کی عمارت کی تعمیر عمل میں لائی گئی تھی تاہم اراضی مالک نے 2015میں غیر قانونی طور پر پنچایت گھر کی عمارت پر قبضہ کرلیا گیا تھا ۔اراضی مالک کا کہنا تھا کہ مذکورہ اراضی ان کی ملکیت ہے جبکہ متعلقہ محکمہ کی جانب سے ان کیساتھ وعدہ کیا گیا تھا کہ آراضی کے بدلے ان کے ایک فرد کو سرکاری نوکری دی جائے گئی جبکہ نوکری دینے تک وہ عمار ت پر قبضہ جاری رکھیں گے ۔پنچایت گھر کی عمارت پر قبضے کی وجہ سے پنچایتی اراکین کو شدید مشکلات کا سامنا کرناپڑرہا تھا تاہم مقامی سرپنچ صیاف خان نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ کیساتھ ملا قات کر کے اپنی مشکلات کے سلسلہ میں جانکاری فراہم کی جس کے بعد اعلیٰ آفیسران کی ہدایت پر گزشتہ روز نائب تحصیلدار ہرنی اور جموں وکشمیر پولیس کی ایک ٹیم کی موجود گی میں حکام کی جانب سے پنچایت گھر کی عمارت کو خالی کروالیا گیا ۔اس سلسلہ میں ضلع ترقیاتی کمشنر کی جانب سے متعلقہ آفیسران کو ہدایت جاری کی تھی جس کے بعد اس سلسلہ میں کارروائی عمل میں لائی گئی۔پنچایتی اراکین نے ضلع انتظامیہ کا شکریہ ادا کرتے ہوے کہاکہ اس عمل کے بعد ان کو سہولیات میسر ہونگی ۔
 
 

نیلی ۔حیات پورہ سڑک لوگوں کیلئے مشکلات کا باعث 

پرویز خان
منجا کوٹ //تحصیل منجا کوٹ کے نیلی تا حیات پورہ رابطہ سڑک کی غیر معیاری تعمیرات کی وجہ سے مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ ایک برس قبل سڑک پر تار کول بچھائی گئی تھی لیکن انتہائی غیر معیاری مٹریل استعمال کرنے کی وجہ سے مذکورہ سڑک اب کھڈوں میں تبدیل ہو چکی ہے ۔مکینوں نے بتایاکہ رابطہ سڑک کی وجہ سے ایک وسیع آبادی کو فائدہ پہنچنے کا تخمینہ لگایا جارہا تھا لیکن پروجیکٹ کو مکمل ہوئے ابھی دو برس کا عرصہ بھی مکمل نہیں ہوا ہے تاہم محکمہ کی جانب سے کئے گئے غیر معیاری کام کی وجہ سے پروجیکٹ لوگوں کیلئے مصیبت کا باعث بن گئی ہے ۔غور طلب ہے کہ منجا کوٹ تحصیل میں رابطہ سڑکوں کی حالت کو معیاری ہی نہیں بنایاجارہا ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو دوران آمد ورفت شدید مسائل کا سامنا کرناپڑتا ہے ۔مقامی لوگوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ سڑک پر بچھائی گئی غیر معیاری تار کول کا جائزہ لے کر محکمہ کے ملازمین کیخلاف کارروائی عمل میںلائی جائے ۔
 
 
 
 
 

راجوری میں فوجی پورٹر کی موت 

راجوری //راجوری ضلع کے کیری سرحدی علاقہ میں فوج کیساتھ پورٹر کے طورپر کام کرنے والا ایک شخص ممکنہ طورپر حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے لقمہ اجل بن گیا ۔ضلع کے سرحدی علاقہ میں فوت ہوئے شخص کی شناخت 35سالہ بچن لعل ولد دیا رام سکنہ کھوڑ جموں کے طورپر ہوئی ہے ۔جموں وکشمیر پولیس نے بتایا کہ مذکورہ پورٹر باڑ بندی کے سلسلہ میں کام کررہا تھا جبکہ دوران کام وہ بیہوشی کی حالت میں پایا گیا جس کے بعد اس کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں پر ڈاکٹروں نے اس کو مردہ قرار دے دیا ۔پولیس نے بتایا کہ لاش کو تحویل میں لے کر تمام قانونی لورزامات مکمل کرنے کے بعد معاملہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں ۔
 
 
 

اراضی تنازعہ پر لڑائی میں دو زخمی 

بختیار کاظمی
سرنکوٹ// سرنکوٹ کے سانگلہ علاقہ میں اراضی تنازعہ پر دو گروپوںمیں ہوئے آپسی تصادم میں 2افراد زخمی ہو گئے ۔مقامی ذرائع نے بتایا کہ سانگلہ گائوں میں دو گروپوں کے درمیان لڑائی میں زخمی ہونے والوں کی شناخت مقصود احمد ولدسلطانہ اور اس کی زوجہ شاہین کوثر کے طورپر ہوئی ہے ۔زخمیوں کو سرنکوٹ ہسپتال میں علاج معالجہ کیلئے منتقل کردیا گیاہے جہاں پر بنیادی علاج معالجہ کے بعد ان کومیڈیکل کالج راجوری منتقل کر دیا گیا ہے ۔اس ضمن میں جموں وکشمیر پولیس کی جانب سے سرنکوٹ میں ایک کیس زیر ایف آئی آر نمبر 335/2021درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہے ۔
 
 
 

پنچایت دندی دھڑا میں پانی کی شدید قلت 

بختیار کاظمی
سرنکوٹ// سرنکوٹ کی پنچایت دندی دھڑامیں پانی کی شدید قلت کی وجہ سے عام لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرناپڑرہا ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ پنچایت کی وارڈ نمبر 5محلہ کوکڑدندی گزشتہ ایک برس سے پینے کے صاف پانی کی سپلائی متاثر ہوئی ہے جس کی وجہ سے مکینوں کو قدرتی چشموں سے پانی لانے پڑتا ہے ۔مقامی لوگوں نے محکمہ جل شکتی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ گزشتہ ایک برس سے سپلائی متاثر ہوئی ہے تاہم متعلقہ محکمہ کے ملازمین کی جانب سے ابھی تک کوئی توجہ نہیں دی گئی ۔انہوں نے بتایا کہ ملازمین و آفیسران سے رابطہ کرنے کے باوجود بھی پانی سپلائی کو بحال نہیں کیا جارہا ہے ۔انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ جل شکتی کو ہدایت جاری کی جائیں تاکہ لوگوں کی متاثر سپلائی کو بحال کرنے کیلئے پائپوں کی مرمت کیلئے عملی کام کروایا جائے تاکہ لوگوں کی دقتیں کم ہو سکیں ۔
 
 
 
 

عارضی ملازمین نے ہڑتال ختم کرنے کا فیصلہ کیا 

عظمیٰ یاسمین
 تھنہ منڈی // لینڈ کیس ملازمین نے ڈی سی چیئرمین جاوید چوہدری کی یقین دہانی پر اپنی غیر معینہ مدت کی ہڑتال ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس فیصلے پر لوگوں نے راحت کی سانس لی ہے اور فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے ڈی ڈی سی چیئرمین کا شکریہ ادا کیا۔ واضح رہے کہ ضلع راجوری کے پی ایچ ای لینڈ کیس ملازمین کے حق میں پچھلے کئی ماہ سے تنخواہیں واگزار نہیں ہوئی ہیں جس کے چلتے ان ملازمین نے گزشتہ چار دنوں سے پانی کی سپلائی بندکرکے احتجاج شروع کر دیا تھا جسکی وجہ سے عوام الناس کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ ان ملازمین کا کہنا ہے کہ ہم نے اپنی زمینیں نوکریوں کے نام پر دی ہوئی ہیں لیکن پچھلے تین ماہ سے ہم تنخواہوں سے محروم ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کچھ عرصہ ہمیں تنخواہیں ملتی رہیں لیکن نامعلوم وجوہات کی بناء پر پچھلے تین ماہ سے ہماری تنخواہیں واگزار نہیں ہوئی ہیں جس ضلع بھر کے تمام لینڈ کیس ملازمین کو ایک ساتھ پانی کی سپلائی بند کرکے احتجاج کرنا پڑا۔ اس موقع پر لینڈ ڈونر ایسوسی ایشن کے ضلع صدر محمد لطیف چوہان نے تمام لینڈ کیس ملازمین سے اس ہڑتال کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین جاوید چوہدری نے ہمیں اپنے بھرپور تعاون اور ہرممکن مدد کا یقین دلایا ہے اور سارے مطالبات اپنے ذمے لے لی ہیں۔ چوہان نے کہا کہ ہم اس ہڑتال کو آئندہ 10 دنوں کیلئے ختم کر رہے ہیں اور اگر اس دوران ہمارے مطالبات تسلیم نہ کئے گئے اور ہماری تنخواہیں واگزار نہ کی گئیں تو از سرِ نو ہڑتال شروع کر دی جائے گی جس کی ساری ذمہ داری انتظامیہ کے سر ہو گی۔ انھوں نے مزید کہنا تھا کہ اس سلسلہ میں متعدد بار انتظامیہ سے بات ہوئی ہے لیکن تاحال اس جانب کوئی اہم پیشرفت نہیں ہوئی۔ 
 
 
 
 

منڈی ۔چنڈک سڑک کی کشادگی کا کام 3برسوں سے مکمل نہ ہوسکا 

سڑک کی ابتر حالت سے لوگ پریشان ،انتظامیہ پر لاپرواہی کا الزام 

عشرت حسین بٹ
منڈی//ضلع پونچھ کی منڈی تا چنڈک سڑک پر کشادگی کا تعمیراتی کام گزشتہ تین برس سے مکمل نہ ہو سکا جس کی وجہ سے اس سڑک پر روزانہ سفر کرنے والے ہزاروں لوگوں کو مشکلات کا سامناکرنا پڑتا ہے۔2018 میں منڈی تا چنڈک گیارہ کلو میٹر سڑک پر سرکار کی جانب سے کشادگی کا کام شروع کیا گیا تھا جو تین برس گزر جانے کے بعد بھی مکمل نہ ہو سکا ہے جس کی وجہ سے اس سڑک پر سفر کرنے والے لوگوں کو مشکلات کا سامناکرنا پڑتا ہے۔ اگرچہ اس سڑک کا کچھ حصہ تعمیر کیا گیا تھا مگر اس تعمیر شدہ حصہ کی حالت بھی ابتر ہو چکی ہے۔ ادھر اس سڑک پر سفر کرنے والے عوام کے ساتھ ساتھ گاڑیوں کے مالکان اورڈرائیوروں بھی گزشتہ تین برس سے سڑک کی بہتر تعمیر کے انتظار میں ہیں ۔مشتاق احمد نامی ایک گاڑی ڈرائیور نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ تین برس قبل منڈی چنڈک سڑک پر کشادگی کا تعمیری کام شروع کیا گیا تھا جو ابھی تک مکمل نہ ہو سکا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اسی روٹ پر گزشتہ چھ برس سے گاڑی چلا کر اپنے گھر والوں کا پیٹ پالتے ہیں۔ ڈرائیور نے بتایا کہ مذکورہ سڑک پر بینکوں سے قرض لے کر گاڑیاں چلا رہے ہیں لیکن سڑک کی انتہائی خستہ حالت کی وجہ سے ان کی گاڑیاں بھی تباہ ہورہی ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر چہ چنڈک تا منڈی سڑک پر کشادگی کا کام کیا گیا ہے اور چند جگہوں پر تارکول بھی بچھایا گیا ہے مگر سڑک پر مکمل کام نہ کرنے کی وجہ سے وہ حصہ بھی خستہ ہوگیا ہے ۔مقامی لوگوں نے انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ سڑک کو جلدازجلد مکمل کرنے کیلئے عملی بنیادوں پر کام کیا جائے ۔
 
 
 

منڈی صدر مقام سڑک کھڈوں میں تبدیل ہوگئی 

عشرت حسین بٹ
منڈی//ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی کے صدر مقام کی سڑک خستہ حالی کی شکار ہے سڑک پر جگہ جگہ کھڈے پڑے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے گاڑیوں کا چلنا بھی مشکل ہو گیا ہے ۔منڈی صدر بازار میں سڑک پر جگہ جگہ کھڈے پڑے ہوئے ہیں لیکن مقامی و ضلع انتظامیہ کی جانب سے مرمتی کے سلسلہ میں کوئی قدم نہیں اٹھایا جارہا ہے ۔منڈی کے دوکانداروں نے انتظامیہ سے مانگ کی ہے کہ منڈی بس اڈہ تا مندر منڈی سڑک پر تارکول بچھایا جائے تاکہ عوام کے ساتھ ساتھ دوکانداروں کو دھول سے نجات مل سکے ۔تاجروں کا کہنا تھا کچھ ہی عرصہ قبل سرکار کی جانب سے بازار میں تار کول بچھایا تھا جو غیر معیاری ہونے کی وجہ سے سڑک پر زیادہ دیر نہیں ٹک پایا اور آج سڑک کی حالت خستہ ہے جبکہ جگہ جگہ سڑک پر کھڈے پڑے ہوئے ہیں جن میں برسات کی وجہ سے پانی جمع ہو جاتا ہے اور گاڑیوں کے گزرنے پر بارش کا سارا پانی ان کی دکانوں میں جاتا ہے۔مقامی تاجرو ں وعام لوگوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ سڑک کی مرمت کیلئے کام کرنے کی ہدایت جاری کی جائیں ۔
 
 
 
 
 

ساتھرہ میں یوتھ کانگریس کامہنگائی کے خلاف احتجا ج

حسین محتشم
پونچھ//ضلع پونچھ میں پردیش یوتھ کانگریس کی طرف سے بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ کانگریس کمیٹی سے وابستہ یوتھ کارکناں کی اس احتجاجی ریلی میں کثیر تعداد میں جوانوں نے شرکت کی۔ کانگریس یوتھ بلاک صدر فیاض دیوان کی قیادت میں مہنگائی اور بے روزگاری کے خلاف احتجاج ساتھرہ کے صدر مقام پر ہوا اور صدر بازار میں ریلی نکالی گئی جس میں نوجوانوں نے بی جے پی حکومت کے خلاف جم کر نعرے بازی کی۔ یوتھ کانگریس کے صدر فیاض دیوان نے مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا کہ سرکار کی پالیسی ملازمین کے خلاف ہے جبکہ اس حکومت نے مہنگائی اور بے روزگاری کم کرنے کے بجائے بڑھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی سرکار نے دفعہ 370 اور 35 اے ختم کرتے وقت جو وعدے کئے تھے ان میں سے ایک بھی وعدہ پورا نہیں کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا نہ صرف جموں کشمیر بلکہ پورے ملک میں افراتفری کا ماحول ہے عام انسان ہے وہ بہت تنگ ہیں۔ انہوں نے سرکار سے ریاست کا خصوصی درجہ واپس دینے کا مطالبہ کیا۔
 
 
 
 
 

گور سائی میں چہلم کی مناسبت سے جلوس برآمد 

حسین محتشم
پونچھ//نواسہ رسولؐ امام حسین اور اْن کے رفقا کے چہلم کے سلسلہ میں ضلع پونچھ کے موہری گورسائی میں 18 صفر المظفر کو شبیہ عَلم کا جلوس نکالا گیا۔ اس دوران عزاداروں کی نوحہ خوانی اور ماتم، جلوسوں کی گزر گاہوں پر پانی کی سبیلوں اور لنگر کا انتظام کیا گیا۔عترت سوسائٹی موہری گورسائی میں شہدائے کربلا کی یاد میں ہر سال کی طرح جامع مسجد موہری سے برآمد ہوا جو روایتی راستوں سے ہوتا ہوئے امام بارگاہ میں پہنچ کر اختتام پذیر ہوا۔جلوس میں سیاہ لباس پہنے اور ہاتھوں میں سرخ، سبز اور سیاہ پرچم لئے عزادار لبیک یا حسین کی صدا بلند کرتے ہوئے چل رہے تھے اور ماتمی انجمنیں چہلم کے تاریخی اور قدیمی نوحے پڑ ھ رہی تھیں جسے سن کر عزاداروں کی آنکھیں نم ہوگئیں۔ مختلف مقامات پر علمائے کرام نے خطاب کرتے ہوے فلسفہ شہادت حضرت امام حسین علیہ السلام بیان کیا۔یہ جو سے عزا امام بارگاہ مورسی میں اختتام پذیر ہوا جہاں پر دعا و سلام ہوئی اس دوران عزاداروں میں تبرک تقسیم کیا گیا۔
 
 
 
 

لورن میں کارکنوں کی اپنی پارٹی میں شمولیت 

حسین محتشم
پونچھ//اپنی پارٹی کے سینئر لیڈر شاہ محمد تانترے کی قیادت میں لورن بلاک سے سینکڑوں افراد پی ڈی پی کو خیرآباد کہہ کر اپنی پارٹی میں شمولیت اختیار کی جن میں سابقہ بلاک صدر پی ڈی پی عبدالجبار تانترے و سرپنچ ایسوسی ایشن صدر اعجاز تانترے سرپنچ ہیڈ کوارٹر لورن چوہدری کامران نوجوان لیڈر لورن چوہدری عبدالحمید چیچی و انکے ساتھیوں نے شمولیت اختیار کر لی ۔تمام افراد کا استقبال سابقہ ممبر اسمبلی پونچھ شاہ محمد تانترے نے کیا اور انکے ہمراہ پارٹی کے لیڈر الحاج بشیر احمد خاکی چاہدری محمد صفیر سرپنچ لورن حاجی محمد اکرم تانترے نائب سرپنچ غلام محمد و پی ڈی سی لورن شمیمہ اختر موجود تھے۔اس موقعہ پر عبدالجبار تانترے نے کہا کے شاہ محمد تانترے کی قیادت میں اپنی پارٹی میں شمولیت اختیار کی ہے ۔انہوں نے کہا وہ کوشش کریں گے کہ پورے بلاک میں اپنی پارٹی کو مضبوط کریں۔ سرپنچ لورن چوہدری کامران نے کہا کہ تانترے واحد لیڈر ہیں جو ہر طبقہ کے لوگوں کو یکساں ترقی کرنے کی کوشش کرتے ہے اس لئے وہ ان کی قیادت میں اپنی پارٹی میں شمولیت اختیار کررہیے ہیں ۔
 
 
 

پونچھ میں وزیر اعظم کی من کی بات براہ راست سنی گئی

حسین محتشم
پونچھ// وزیر اعظم نریندرمودی کے پروگرام من کی بات کا سلسلہ اس بار بھی جاری رہا اس دوران پونچھ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈران نے خصوصی اہتمام کرکے اپنے ساتھیوں کے ساتھ وزیر اعظم نریندر مودی کی بات کو سننا۔ بی جے پی کے ضلع صدر انجینئر محمد رفیق چشتی نے اپنے دفتر میں عوام کے ہمراہ اس پروگرام کو سنا اور انکے خیالات سے آگاہی حاصل کی۔ اس سلسلہ میں انہوں نے وزیر اعظم کے خیالات اور انکی ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات کی ستائش کی۔سابق ایم ایل سی اور بھارتی جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر پردیپ شرما نے بھی اپنی رہائش گاہ پر خصوصی انتظام کیا جہاں پر پارٹی لیڈران اور کارکنان کی بڑی تعداد نے براہ راست نریندر مودی کے خطاب کو سنا۔ اس موقع پر پرمجیت سنگھ جنرل سکریٹری ،گوردیپ سنگھ صراف ریاستی کوآرڈی نیٹر اقلیتی مورچہ ، ابھیندن سودن اربن منڈل صدر ، چوہدری محمد اکبر صدر ایس ٹی مورچہ ،رویندر کمار بٹہ صدر مہاجر مورچہ ،وشال شرما منڈل جنرل سکریٹری، پرنس کمار منڈل نائب صدر ، سنیل شرما ، راج کمار ، اشیش کمار اور پونیت مہتا سینئر لیڈر موجود تھے۔ بھارتی جنتا پارٹی یوا مورچہ کے ضلع صدر منبر کی قیادت میں اجلاس میں ان کی رہائش گاہ پر ایک پروگرام منعقد کیا گیا جہاں پر براہ راست نریندر مودی کا خطاب خواتین اور مردوں نے بڑی تعداد میں جمع ہو کرسنا۔
 
 
 
 

انڈسٹریز سنٹر کی جانب سے پروگرام کا انعقاد

حسین محتشم
پونچھ// محکمہ انڈسٹریز سنٹر پونچھ کے زیر اہتمام ڈپٹی کمشنر پونچھ اندر جیت کی مجموعی رہنمائی میں ایک ہفتہ کا طویل ونجیا سپتہ اتسو منایا گیا۔ پروگرام کا مقصد چھوٹے پیمانے کی صنعت کو فروغ دینے کے ساتھ ساتھ مقامی زرعی ، باغبانی ، دستکاری ، ہینڈلوم اور ضلع کی سیاحت کی صلاحیت کو ظاہر کرنا تھا، خاص طور پر ضلع میں تیار کی جانے والی مصنوعات اور ان کے معاشی استحصال کے دائرہ کار کے بارے میں شعور اجاگر کرنا تھا۔ ضلع پونچھ کے مختلف محکموں نے ہفتے بھر جاری رہنے والے پروگرام کے دوران اپنی مصنوعات کے ساتھ ساتھ فائدہ مندوں پر مبنی سکیموں کی نمائش کی۔ ونجیا سپتہ پروگرام میں حصہ لینے والے محکموں میں ڈسٹرکٹ انڈسٹریز سنٹر پونچھ ، دستکاری ، زراعت ، ہارٹیکلچر ، محکمہ سیاحت ، پولیس ویلفیئر سنٹر پونچھ وغیرہ شامل ہیں۔ ایک ڈسٹرکٹ ون پروڈکٹ پروگرام کی اہم خاصیت تھی جس کا مقصد مصنوعات کی معاشی صلاحیت کو خاص طور پر ضلع پونچھ کو دکھانا تھا۔
 
 
 
 
 
 
 
 

سرانو راجوری میں پہاڑی قبیلے کا یک روزہ کنونشن

راجوری //ضلع راجوری میں ڈھانگری کے نزدیک خالصہ چوک سرانو میں پہاڑی قبیلے کا یک روزہ کونشن منعقد ہوا جس میں یک زباں وزیر اعظم ہند نریندر مودی سے اپیل کی گئی کہ سماجی، تعلیمی ، اقتصادی طور پسماندہ پہاڑی قبیلے کو شیڈیول ٹرائب کا درجہ دیا جائے جوکہ پچھلی چار دہائیوں سے اِس کے لئے جدوجہد کر رہے ہیں۔ مقررین نے کہاکہ وہ آئین ِ ہند کے تحت اپنے جائز حق کا مطالبہ کر رہے ہیں، جب اْن کے بھائیوں کو یہ مراعات دی گئیں یا جنگلات حقوق قانون دیئے گئے تھے، تو پہاڑی قبیلہ نے اْس کی مخالفت نہیں کی بلکہ خیر مقدم کیا، اسی طرح دیگر درج فہرست قبائل کو بھی پہاڑی قبیلہ کے اِس دیرینہ مطالبہ کی حمایت کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ مرکز میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی مکمل اکثریت والی حکومت ہے اور اْنہیں امید ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی قیاد ت والی حکومت جس کا نعرہ ’سب کا ساتھ، سب کا وکاس اور سب کا وشواس ہے‘وہ پہاڑی قبیلہ کے ساتھ بھی انصاف کرے گی۔ انہوں نے مانگ کی کہ حد بندی کمیشن سے قبل پہاڑی قبیلہ کو بھی ایس ٹی کا درجہ دیاجائے۔کیپٹن موہن سنگھ کی قیادت میں منعقدہ اِس کنونشن میں ایڈووکیٹ احسان مرزا، وکرانت شرما، ایڈووکیٹ الطاف جنجوعہ، ایڈووکیٹ گردیو سنگھ ٹھاکر، دھیرج شرما، شکتی شرما، کشمیر سنگھ، درشن لال، مہندر سنگھ، نگیش شرما، سجاد مرزا، سوم راج شرما، سریندر شرما، پریتم شرما، شیر سنگھ، اجیت سنگھ، ڈاکٹر گیان سنگھ، نونیت بالی وغیرہ کے علاوہ درجنوں افراد نے شرکت کی۔