منیال علاقہ میںنجی سکول کو کووڈ کئیر سنٹر بنایا گیا

 تھنہ منڈی //تھنہ منڈی کے منیال علاقہ میں سرکاری عمارت کی عدم دستیابی کی وجہ سے پنچایتی اراکین و انتظامیہ نے ایک نجی سکول کی عمارت کو کووڈ کئیر سنٹر میں تبدیل کر دیا ہے ۔جموں و کشمیر میں کووڈ قہر کو دیکھتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے ہر ایک پنچایت میں پانچ بستروں پر مشتمل ایک کووڈ کئیر سنٹر قائم کرنے کا حکم جاری کیا تھا تاکہ پنچایتوں میں مریضوں کو آبائی علاقہ میں ہی قرنطینہ میں رکھ کر بنیادی سہولیات اور ادوایات فراہم کی جاسکیں۔ سرکاری حکم نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ کووڈ کئیر سینٹر کو ایک سرکاری ایمبولینس بھی دستیاب رہے گی جو شدید تکلیف میں مبتلا مریض کو کووڈ کئیر سینٹر سے کووڈ کئیر ہسپتال منتقل کرے گی۔ بگڑتے حالات اور کووڈ مثبت معاملات کو دیکھتے ہوئے علاقہ کی تمام سرکردہ شخصیات نے گورنر انتظامیہ کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔اس حکم کی عمل آوری کے سلسلے میں پنچائت منیال میں 5 بستروں پر مشتمل کوویڈ کیئر سنٹر کے قیام کے لئے کوئی سرکاری عمارت دستیاب نہیں تھی چنانچہ مقامی سرپنچ حاجی کرامت اللہ خان نے ایک پرائیویٹ سکول (بیسک اسکول آف ایجوکیشن منیال) کے ناظم اعلیٰ غلام نبی کملاک سے رابطہ کیا جنھوں نے پنچایت ہذا میں گورنمنٹ بلڈنگ کی عدم دستیابی اور لیفٹیننٹ گورنر کی ہدایات کی تعمیل کرتے ہوئے اپنے سکول کی عمارت کو کووڈ کئیر سینٹر کےلئے وقف کر دی۔ علاقہ کی تمام سرکردہ شخصیات اور عوام نے سرپنچ موصوف اور غلام نبی کملاک کی طرف سے اپنے عوام کی سہولت کے لئے کی جانے والی اس کوشش کو سراہا اور انھیں دلی مبارک باد پیش کی۔