طلاب کا کلاسوں میں جانے کا عمل

 بانڈی پورہ+بڈگام//ضلع ترقیاتی کمشنر بانڈی پورہ ڈاکٹر اویس احمد اور ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزانے کہا ہے کہ کلاسوں میں جانے سے قبل طلاب کو کورونا مخالف ٹیکے لگانے لازمی ہے۔ ڈاکٹر اویس احمد نے زائد اَز 18 برس عمر کے طلباء پر زور دیا کہ وہ فوری طور پر کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائیں تاکہ وہ اَپنے کلاسوں کو دوبارہ شروع کرسکیںاور آنے والے اِمتحانات میں حکومت کی اِجازت کے مطابق حاضر ہوسکیں۔اِن خیالات کا اِظہار ضلع ترقیاتی کمشنر بانڈی پورہ نے میڈیا اَفراد کو ضلع میں موجودہ کووِڈ صورتحال کے بارے میں بریفنگ دینے کے دوران کیا۔اُنہوں نے کہا کہ کالجوں میںکلاس ورک جلد شروع کیا جاسکتا ہے اور صرف ٹیکے لگائے ہوئے طلباء کو ہی کالج میں داخلے کی اِجازت ہوگی ۔اُنہوں نے طلباء پر زور دیا کہ وہ جلد اَزجلد کووڈمخالف ٹیکے لگائیں تاکہ حکومت کی اِجازت کے بعد وہ اَپنے کلاسوں کو دوبارہ شروع کرسکیں۔ضلع ترقیاتی کمشنر بانڈی پورہ ڈاکٹر اویس نے کہا کہ 18 برس عمر سے 44برس عمر تک کے 65 فیصد اَفراد کو اَب تک کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائے جاچکے ہیں او راَب تک 50,000ٹیکے لگائے گئے ہیں۔ اُنہوں نے پسماندہ اَفراد پر زور دیا کہ وہ جلد سے جلد ویکسین لگائیں۔اُنہوں نے کہا کہ لوگوں کو رضاکارانہ طورپرٹیکے لگانے کے لئے آگے آنا چاہیئے کیوں یہ بالکل محفوظ ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ صحت ٹیمیں گھرگھر ٹیکہ کاری مہم کے لئے بھی جارہی ہیں تاکہ پوری آبادی کا اَحاطہ کیا جاسکے۔ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ نے کہا کہ کووِڈ ۔19 معاملات کا گراف آہستہ آہستہ نیچے جارہا ہے ۔ اُنہوں نے کہاکہ یہ گراف مزید نیچے جاسکتا ہے بشرطیکہ ہم کووِڈ مناسب طرز عمل ( سی اے بی ) اور ایس او پیز پر عمل پیرا رہیں۔اُنہوں نے مزید کہا کہ ضلع میں اَب 28 مثبت معاملات سرگرم ہیں اور ان میں سے صرف ایک مریض ہسپتال قرنطینہ میں ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ وسیع پیمانے پر نمونے لینے اور مثبت معاملات کو الگ تھلگ کرنے سے کنٹین منٹ زون میں وائرس کے پھیلائو کو کنٹرول کرنے میں مدد ملی۔ڈاکٹر اویس نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ کووِڈ مناسب طرزِ عمل ( سی اے بی ) کو اَپنائیں تاکہ وائرس کے پھیلائو سے بچاجاسکے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت کاررِوائی کی وارننگ دی جائے ۔ اُنہوں نے کہا کہ اِنفیکشن میں کسی بھی قسم کے اِضافے کو روکنے کے لئے سی اے بی او رایس او پیز پر من و عن عمل کرنا اِنتہائی ضروری ہے۔اُنہوں نے کہا کہ عوام الناس ایس او پیز کی خلاف ورزی کی اطلاع کنٹرول روموں کو دے سکتے ہیں تاکہ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کاررِوائی کی جا سکے۔ادھر ڈپٹی کمشنر بڈگام شہباز احمد مرزا نے منگل کو ضلع میں کورونا وائرس صورتحال پر منعقد کی گئی ایک پریس بریفنگ میں بتایا کہ ہمیں کووڈ مناسب رویہ اپنانے اور ایس او پیز پر سختی سے عمل کو جاری رکھنا ہوگا کیونکہ کورونا متاثرین کی تعداد میں دوبارہ اضافہ ہوسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے ایک ہفتہ کے دوران ہم نے کچھ علاقوں میں متاثرین کی تعداد میں اضافہ دیکھا ہے اوراسی وجہ سے کچھ علاقوں کو مائکرو کنٹینمنٹ زون قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 10ویںاور 12ویں جماعت کیلئے سکولوں کو کھولنے کو دیکھتے ہوئے  تمام احتیاط کو اپنانے کی ضرورت ہے۔ ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ 18سال سے 44سال کی عمر کے لوگوں کیلئے100فیصدٹیکہ کاری مکمل کرنا ضرور ی ہے اور یہ سب بچوں کے سکول جاننے سے قبل مکمل کرنا لازمی بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 18 سال سے کم عمر کے بچوں کیلئے ریپڈ ٹیسٹ کو بچوں کیلئے لازمی قرار دیا جانا چاہئے۔ کورونا وائرس کے بارے میں ڈی سی نے کہا کہ اس وقت ضلع  142سرگرم معاملات، 99فیصد صحت یابی کی شرح جبکہ مثبت کیسوں کی شرح 0.46فیصد ہے۔