سیاحتی سرگرمیوں میں اضافہ | سونہ مرگ میں سیاحوں کی آمد میں اضافہ

ٹی ای این

سرینگر//عالمی شہرت یافتہ سیاحتی مقام سونمرگ میں سال کے آغاز سے ہی سیاحوں کی آمد میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ سردیوں کے مہینوں کے باوجود سونمرگ قابل رسائی رہا ہے، جو اس کی قدرتی خوبصورتی کو دیکھنے کے خواہشمند سیاحوں کی ایک بڑی تعداد کو راغب کرسکاہے۔حکام کے مطابق سونمرگ میں سیاحت میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے، صرف جنوری اور فروری کے مہینوں میں تقریباً 91586 سیاح سونمرگ آئے جن میں 3079 غیر ملکی بھی شامل ہیں۔ سیاحوں کی آمد میں یہ اضافہ کشمیر میں مقامی اور غیر مقامی دونوں مسافروں کیلئے ایک پرکشش مقام کے طور پر سونمرگ کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کی نشاندہی کرتا ہے۔سونمرگ کے مقامی دکانداروں نے سیاحوں کی سرگرمیوں میں اضافے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اسے محکمہ سیاحت کی پروموشنل کوششوں کو قرار دیا ہے۔ انہوں نے نوٹ کیا کہ سیاحوں کی آمد نے پچھلے ریکارڈ کو پیچھے چھوڑ دیا ہے جو کہ سیاحوں کیلئے خطے کی بڑھتی ہوئی اپیل کی نشاندہی کرتا ہے۔دلکش مناظر اور دلفریب نظاروں کے درمیان واقع، سونمرگ زائرین کو قدرتی خوبصورتی اور ایڈونچر کا انوکھا امتزاج پیش کرتا ہے۔ برف پوش چوٹیوں سے لے کر سرسبز و شاداب میدانوں تک، سونمرگ فطرت کے شائقین اور ایڈونچر کے متلاشیوں کیلئے ایک ہی جگہ ہے۔چونکہ سونمرگ میں سیاحت کا فروغ جاری ہے، حکام خطے میں مزید ترقی کے امکانات کے بارے میں پر امید ہیں۔ توقع ہے کہ سیاحوں کی آمد میں اضافے سے مقامی معیشت کو فروغ ملے گا اور کشمیر میں ایک لازمی سیاحتی مقام کے طور پر سونمرگ کی ساکھ میں اضافہ ہوگا۔مقامی ساحتی طبقے کا کہنا ہے کہ گذشتہ برس جی 20کانفرنس کے سرینگر میں انعقاد سے غیر ملکی سیاھوں کی آمد بڑھی ہے اور امید ہے کہ آئندہ وقت میں بھی یہاں سیاحتی سرگرمیاں بڑھیں گی ۔