’بھدرواہ فیسٹیول کی وسیع پیمانے پر کوئی تشہیر نہیں ‘

ڈوڈہ //بھدرواہ ٹورز و ٹرویل و ہوٹل و گیسٹ ہاؤس ایسوسی ایشن نے رواں ماہ کی 29 تاریخ کو 'آزادی کا امرت مہوتسو' کے نام سے منعقد ہونے جارہے بھدرواہ فیسٹیول کے سلسلے میں کئے گئی تیاریوں میں انہیں نظر انداز کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ہوٹل صوریہ جائی روڈ بھدرواہ میں منعقد ایک پریس کانفرنس سے مخاطب ہوتے ہوئے ٹور اینڈ ٹریول یونین و ہوٹل و گیسٹ ہاؤس ایسوسی ایشن نے کہا کہ ضلع و قصبہ کی انتظامیہ نے انہیں نظرانداز کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بھدرواہ فیسٹیول منعقد ہونے جارہا ہے لیکن بدقسمتی سے یہاں کی تاجر برادری، بیوپار منڈل و ٹورازم سے جڑے افراد سے کوئی صلاح مشورہ نہیں لیا گیا اور نہ ہی اس کی کوئی وسیع پیمانے پر تشہیر کی گئی۔انہوں نے کہا کہ اس سے پہلیبھدرواہ فیسٹیول کے لئے باقاعدہ طور پر ٹنڈر نوٹس جاری کرتے تھے جس میں سبھی کاروباری افراد شامل ہوکر اپنی شرکت کو یقینی بناتے تھے لیکن اس بار بناء ٹنڈر کئے ہی تیاریاں ہورہی ہیں اور کسی بھی مقامی ایسوسی ایشن کی خدمات حاصل نہیں کی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ تانا شاہی عروج پر ہے اور صرف پیسے کی دوڑ لگی ہے۔ ایسوسی ایشن نے کہا کہ یہاں کے ڈرائیور، مزدور پیشہ افراد ع ہوٹل ویران پڑے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے بھی ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں باہر سے لوگوں کی خدمات حاصل کی گئیں اور مقامی لوگوں کو نظر انداز کیا۔انہوں نے کہا کہ اس معاملے کو لے کر محکمہ سیاحت کے آفیسروں سے رجوع کیا گیا لیکن سب نے لاتعلقی کا اظہار کیا۔ انہوں نے وزیر اعظم مودی کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے گجرات کو پرموٹ کرنے کے لئے ایک اشتہار بنوایا جس کو وسیع پیمانے پر پذیرائی حاصل ہوئی لیکن زمینی سطح پر ہر کام اس کے برعکس کیا جاتا ہے۔انہوں نے ایل جی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ اس طرح کے پروگراموں میں مقامی لوگوں کی خدمات حاصل کر نے کے لئے متعلقہ اداروں کو پابند بنایا جائے اور سرکار کی طرف سے فراہم کی گئی رقومات کا زمین پر جائز استعمال کر کے ٹیکسی ڈرائیور سے لے کر ہوٹل مالک تک فائدہ پہنچایا جائے ورنہ اسطرح کے فیسٹیول منانے کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔