کوٹرنکہ میں سرکاری اراضی پر قبضے کا سلسلہ جاری

کوٹرنکہ //سب ڈویژن کوٹرنکہ میں مختلف سرکاری محکموں کے زیر تحت لائی گئی اراضی پر مسلسل غیر قانونی طورپر قبضہ کیاجارہا ہے تاہم متعلقہ محکموں و محکمہ مال کی جانب سے اس سلسلہ میں کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے ۔محکمہ صحت ،بھیڑ پالن ،محکمہ زراعت ،محکمہ آبپاشی ،جل شکتی و تعلیم کے مختلف اداروں کے زیر تحت لائی گئی اراضی سکڑتی ہی جارہی ہے ۔محکمہ صحت کے کمیو نٹی ہیلتھ سنٹر کوٹرنکہ کی محکمہ کے ریکارڈ میں 17کنال کے قریب اراضی درج ہے لیکن مذکورہ اراضی اب تین کنال کے قریب موقعہ پر موجود ہے ۔اسی طرح بدھل میں محکمہ بھیڑ پالن کی زمین کم ہو کر اب کچھ ہی مرلے بچی ہوئی ہے لیکن محکمہ کے آفیسران قبضہ مافیا کےخلاف کارروائی کرنے میں پوری طرح سے ناکام رہے ہیں ۔مذکورہ محکمہ کی خسرہ نمبر 1690میں تین کنال اور تین مرلے جبکہ خسرہ نمبر 1691میں 14مرلے زمین تھی جو اب ایک کنال تک بچی ہوئی ہے ۔محکمہ زراعت کی 8کنال میں سے 2کنال جبکہ اسی طرح مختلف علاقوں میں قائم مذکورہ محکموں کے دفاتر کی اراضی بھی کم ہوتی جارہی ہے لیکن انتظامیہ کی جانب سے قبضہ مافیا کےخلاف کوئی کارروائی ہی نہیں کی جارہی ہے ۔سماجی کارکن کبیر راتھر نے بتایا کہ سرکاری زمینوں پر مسلسل قبضہ کیاجارہا ہے لیکن ابھی تک متعلقہ حکام کی جانب سے کوئی عملی کارروائی ہی نہیں کی جارہی ہے ۔مکینوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ سرکاری اراضی سے قبضہ ہٹانے کےلئے عملی بنیادوں پر مہم شروع کی جائے ۔