کم لاگت سے مشروم کی کاشت گاندربل میں ہفتہ طویل ترقیاتی پروگرام کا آغاز

 عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر// شیرِ کشمیر یونیورسٹی آف ایگریکلچرل سائنسز اینڈ ٹکنالوجی کے زیر اہتمام ’کم لاگت سے مشروم کی کاشت: دیہی نوجوانوں کے لیے روزی روٹی کا امکان‘ پر ایک ہفتہ طویل ترقیاتی پروگرام (E-MDP) کا جمعرات کو آغاز ہوا۔ پروگرام کا اہتمام SKUAST کے کرشی وکاس کیندر، گاندربل نے مرکزی وزارت مائیکرو، سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز، حکومت ہند کی سرپرستی میں کیا ہے۔SKUAST جموں و کشمیر اور لداخ کے مختلف حصوں میں ہنر مندی کے فروغ کے 550 پروگراموں کا انعقاد کر رہا ہے تاکہ نوجوانوں کو انٹرپرینیورشپ کی طرف ہنر مند بنایا جا سکے۔کے وی کے، گاندربل کے سربراہ ڈاکٹر اشفاق عابدی نے مشروم کی غذائیت کی اہمیت پر زور دیا اور مشروم کی کاشت کو دیہی نوجوانوں کے لیے ایک قابل عمل اور پرکشش سرگرمی قرار دیا۔ انہوں نے کاشتکاروں کو مشروم کی کاشت کرنے کی ترغیب دی، جیسا کہ یہ انتہائی منافع بخش ہے اور ان کے لیے اضافی روزگار کا ذریعہ بن سکتا ہے۔ڈاکٹر فاروق احمد آہنگر اور ڈاکٹر روف احمد خان (JKEDI) نے J&K میں ایک زرعی کاروبار کے طور پر مشروم کی کاشت کے بارے میں تفصیلی بیان دیا۔