کشمیر میں نارملسی کا بیان

سرینگر//سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوزنے کہا ہے کہ پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کو اس بیان پر کہ کشمیر میں نارملسی نہیں ہے ، گھر میں نظر بند کیا گیا ہے ،جو انتہائی افسوسناک ہے۔ایک بیان میں سوز نے کہاکہ ’میں اس بات پر حیران ہوں کہ پی ڈی پی پریذیڈنٹ نے کیا بات غلط کہی تھی، یہ بات تو عیاں ہے کہ کشمیر میں حالات نارمل نہیں ہے‘‘۔ انہوںنے کہاکہ محبوبہ مفتی کا گھر نظر بند کیا جانا بھی اسی بات کی دلیل ہے کہ کشمیر میں حالات بالکل نارمل نہیں ہے،مجھے اس بات پر سخت افسوس ہو رہا ہے کہ یونین ٹریٹری انتظامیہ کشمیر میں سیاسی لیڈروں کے تعلق میں اس قدر تنگ نظر ہو گئی ہے کہ محبوبہ جی کے حقیقت پر مبنی بیان کیلئے اُن کو نظر بند کیا گیا ہے‘‘۔سوز نے کہاکہ ’میں یونین ٹریٹری انتظامیہ کے لیفٹینٹ گورنر سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ محبوبہ مفتی صاحبہ کو فوراً رہا کرے تاکہ وہ اپنی پارٹی پروگراموں میں شرکت کر سکے‘‘۔انہوںنے کہاکہ ’مجھے اس بات کیلئے بھی تعجب ہو رہا ہے کہ جموں وکشمیر انتظامیہ آئے دن یہ اعلان کرتی رہتی ہے کہ جموںوکشمیر میں سیاسی سرگرمیوں کیلئے ماحول سازگار ہے، کیا محبوبہ مفتی کو گھر میں نظر بند کرنا کشمیر کے حالات سازگار ہونی کی دلیل ہو سکتی ہے؟ اس پر جموںوکشمیر انتظامیہ کو ذرا غور کرنا چاہئے۔ ‘‘