مشروم کی کاشت روزگار کا بہترین ذریعہ | محکمہ زراعت کا آٹھ روزہ ہنر مندی پروگرام

عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر// ڈائریکٹر زراعت کشمیر چودھری محمد اقبال نے منگل کو ایگریکلچر کمپلیکس لالمنڈی میں آٹھ روزہ ہنر مندی کے فروغ کے پروگرام سے خطاب کیا جس کا عنوان’’مشروم فارمنگ بطور ایگری بزنس‘‘ تھا۔ اس پروگرام کا اہتمام کرشی وگیان کیندر سرینگر نے 10 بٹالین سیما سشستر بل اور محکمہ زراعت اور کسان بہبود کشمیر کے اشتراک سے کیا تھا۔اپنے خطاب میں ڈائریکٹر زراعت کشمیر چوہدری محمد اقبال نے زراعت کے شعبے کی مجموعی ترقی میں چھوٹے پیمانے پر زرعی کاٹیج صنعتوں جیسے مشروم کی کاشت، شہد کی مکھیوں کو پالنا وغیرہ کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے پروگراموں کے انعقاد کا بنیادی مقصد ایسے اداروں کو فروغ دینا اور ایک ہنر مند کسان برادری پیدا کرنا ہے۔ ڈائریکٹر زراعت نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ کھمبی کی کاشت سے بہت سے لوگ زیادہ تر پڑھے لکھے نوجوان اپنی روزی روٹی کمانے کے قابل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مشروم کی کاشت کاری مربوط کاشتکاری کا ممکنہ حصہ ہے اور کسانوں کی آمدنی کو پورا کرنے میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کھمبی کی کاشت ایک آف فارم سرگرمی کے طور پر روزگار کے مواقع پیدا کرنے اور دیہی اقتصادی ترقی میں حصہ ڈالنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔