مزید خبرں

فاسٹ ٹریک بھرتی عمل مذاق بن گیا 

انٹرویو 4سال قبل دیا ، محکمہ فائر و ایمرجنسی کی فہرست کا ہنوز انتظار 

حسین محتشم
پونچھ// حکومت کی طرف سے بھرتی عمل کو فاسٹ ٹریک بنیاد پر کئے جانے کے دعوے تو کئے جاتے ہیں مگر ان کی حقیقت ان امیدواروں سے بہتر کوئی نہیں جانتا جو انٹرویو دینے کے کئی سال بعد بھی فہرست کے مشتہر کا انتظار کررہے ہیں۔اس کی واضح مثال محکمہ فائر و ایمرجنسی سروس ہے جس نے سال 2013میں ملازمت کیلئے فارم طلب کئے تھے تاہم امیدوار آج بھی فہرست جاری ہونے کا انتظار کررہے ہیں ۔ 2014میں 840اسامیوں کے لئے 60ہزار نوجوانوں نے امتحانات دیئے تاہم چار سال بعد بھی فہرست جاری نہیں کی گئی ۔ ان امتحانات میں حصہ لینے والے پونچھ کے امیدواروں نے کرشن چندر پارک میں جمع ہوکر حکومت کے خلاف احتجاج کیا ۔ مظاہرین نے سرکار اور محکمہ کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے اپنے غم و غصہ کا اظہار کیا۔اس موقعہ پر انہوںنے حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے اسے نا اہل قر ار دیا ۔ ایک نوجوان عمران معراج نے کہا کہ محکمہ نے سال 2013 میں 840اسامیاں پُر کئے جانے کے لئے اعلان کیا تھا جس میں تقریباً ساٹھ ہزار فارم بھرے گئے اور سال 2014میں انٹریو بھی ہوا لیکن آج تک یہ لسٹ منظر عام پر نہیں آئی جو حکومت کی نااہلی کا ثبوت ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہزاروں نوجوان بیروزگاری کی مار جھیل رہی ہے اور حکومت کو ٹس سے مس نہیں۔ انہوںنے مانگ کی کہ یہ فہرست جلد سے جلد مشتہر کی جائے ۔اس موقعہ پر اسرار خان، صفدر خان، محمد عباس، افراد خان اور سرفراز خان بھی موجود تھے ۔
 

غیر سرکاری تنظیم نے خون کا عطیہ دیا 

حسین محتشم
پونچھ// پونچھ کے نوجوانوں کی جانب سے بنائی گئی تنظیم یوتھ ایسوسی ایشن سروس فور ہیومین اینڈ نیشن(YASHAN) نے خون کا عطیہ پیش کیا۔ تنظیم کے چیئرمین امتیاز احمد سلاریہ کی قیادت میں ضلع ہسپتال پونچھ میں خون عطیہ کیمپ کا اہتمام کیا گیا۔اس موقعہ پر ایک تقریب بھی منعقد کی گئی جس میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر پونچھ ڈاکٹر بشارت حسین انقلابی تھے جبکہ اس موقعہ پر چیف میڈیکل افسرپونچھ ڈاکٹر ممتاز بھٹی ، سپرانٹنڈنٹ ضلع ہسپتال پونچھ اور دیگر افسران و شہری بھی موجود تھے ۔ امتیا ز سلاریہ نے کہا کہ ضلع ہسپتال پونچھ میں آنے والے مریضوں کو اکثر خون نہ ملنے کی وجہ سے کئی طرح کی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اوریہی وجہ ہے کہ وہ اور ان کے ساتھی خون کا عطیہ کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وہ اور انکے نوجوان ساتھی کسی بھی شخص کی جان بچانے کے لئے ہر وقت رضاکارانہ طور پر تیار ہیں۔ بشارت انقلابی نے یشن کے تمام ممبران اور عہدیداران کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ دوسروں کو بھی ان نوجوانوں سے سبق حاصل کرنا چاہئے۔ 
 
 

کل جماعتی اجلاس محض چال:پیپلز مومنٹ

کشمیریوں کی نسل کشی کیلئے ہندنوا ز جماعتیں ذمہ دار

راجوری// جموں کشمیر پیپلز مومنٹ نے کہا ہے کہ ہند نواز جماعتوں بالخصوص پی ڈی پی اور نیشنل کانفرنس کے ہاتھ کشمیریوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں اور انہوں نے اقتدار کے عوض اپنے ضمیر اور کشمیری قوم کے مفادات کو گروی رکھا ہوا ہے۔یہاں جاری پریس بیان کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما اور پیپلز مومنٹ کے چیئرمین میر شاہد سلیم نے پارٹی کارکنان کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر میں جاری قتل و غارتگری میں ہند نواز جماعتیں وہی رول ادا کر رہی ہیں جو جنگل کاٹنے والی ایک کلہاڑی کے لئے دستے کا ہوتا ہے۔انہوں نے کہاکہ اگر جموں کشمیر کی ہند نواز جماعتیں جن میں نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی شامل ہیں، بھارت کی کلہاڑی کے لئے دستے کا رول ادا نہ کرتی تو بھارت کشمیری قوم کو اس بیہمانہ طریقے سے تہ تیغ نہ کرتا۔انہوں نے وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی جانب سے بلائے گئے کل جماعتی اجلاس کو محض دکھاوا اور منافقانہ چال کا حصہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر یہ جماعتیں صحیح معنوں میںکشمیریوں کی خیر خواہ ہوتی تو یہ اقتدار کو ٹھکرا کر مزاحمتی خیمے میں شامل ہو چکی ہوتی ۔حریت رہنما نے کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ ان جماعتوں کے اصلی چہروں کو عوام کے سامنے بے نقاب کیا جا ئے۔ انہوں نے کشمیر عوام سے اپیل کی کہ وہ صبرو تحمل اور یکسوئی کے ساتھ پرامن تحریک کے ساتھ کھڑے رہیںاور تقسیم کرنے والے عناصر اور قوتوں سے خبردار رہیں۔
 
 

بین ضلعی بھرتی پر عائد پابندی ہٹانے کا مطالبہ 

پونچھ//گوجر بکروال ایمپلائز ایسو سی ایشن کے صدر چوہدری محمد اسد نعمانی نے کہا ہے کہ بین ضلعی بھرتی کی وجہ سے خطہ پیرپنچال،لیہہ لداخ و دیگر اضلاع میں نوجوانوں کو نوکریاں حاصل نہیں ہو رہی اور وہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے باوجود دربدر گھوم رہے ہیں۔یہاں جاری ایک پریس بیان میں اسد نعمانی نے کہا کہ بین ضلعی بھرتی کی وجہ سے پسماندہ طبقہ کے نوجوان خاص کر اے ایل سی،آر بی اے،ایس ٹی، و دیگر رزرو کیٹگری کے نوجوانوں کو سب سے زیادہ نقصان اٹھانا پڑ رہا۔ نعمانی نے کہا کہ موجودہ حکومت نے اپنی تشکیل سے قبل یہ وعدہ کیاتھاکہ اس پابندی کو ختم کیاجائے گامگر اس پر عمل نہیں کیاگیا ۔انہوںنے کہاکہ بہت سے تلخ حقائق سامنے آئے ہیں کہ ہزاروں کی تعداد میں ایسی نشستیں ہیںجو ڈی ریزرو ہوئی ہیں کیونکہ ایسے نوجوان ہی نہیں ملے جوکشمیر صوبہ میں ا ن سیٹوں کیلئے اہل ہوں ۔انہوںنے کہاکہ یہ سیٹیں دوسرے طبقوں کو دی گئی ہیں جو ان کے ساتھ ناانصافی ہے ۔اسد نعمانی نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس پابندی کو فوراََ ہٹایا جائے اور اس غیر منصفانہ قانون کا خاتمہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ اگر یہ پابندی ہٹانے میں کوئی دشواری آرہی ہے توپھر آبادی کے تناسب سے ریزرویشن دی جائے ۔اسد نعمانی نے کہا کہ یہ کہاں کا انصاف ہے کہ ایک ضلع میں جس طبقہ کی آبادی40فیصد ہے ،کو بھی8فیصد ریزرویشن اور ایک ضلع میں2فیصد رہنے والی اسی آبادی کو 8فیصد ہی ریزرویشن ہو،اسی وجہ سے ایک ہی طبقہ کو دو زمروں میں بانٹ کر رکھ دیا گیا ہے اور ایسا ہرگز نہیں ہونا چاہئے اور انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں۔
 

پبلک سیفٹی ایکٹ کا اطلاق 

جرائم اور منشیات کاعادی ڈھانگری جیل منتقل 

منیر خان 
راجوری //راجوری پولیس نے منشیات مخالف کارروائی کے دوران بدنام زمانہ نقب زن اور منشیات فروش کوگرفتار کرکے اسے پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت ضلع سنٹرل جیل ڈھانگری منتقل کردیا گیا  ۔پولیس نے درہال پل کے قریب مصدقہ اطلاع ملنے پر ناکہ لگاکر ایک شخص کو گرفتار کیا جس کی پہچان عرفان احمد ٹی ٹی ولد ذاکر حسین ساکن ناریاں تحصیل نوشہرہ کے طور پر ہوئی ۔ مذکورہ شخص چوری سمیت منشیات فروشی کے کئی معاملات میں پولیس کومطلوب تھا ۔پولیس اسٹیشن راجوری میں اس سے قبل میں مذکورہ شخص کے خلاف ایف آئی آر زیر نمبرات526/2016 US 8/2،602/2014 U/S 379،118/2014 U/S 457اور1/22این ڈی پی ایس ایکٹ کے کیس درج ہیں ۔پولیس نے یہ کارروائی ہیڈ کانسٹبل غلام احمد کی سربراہی میںانجام دی ۔پولیس کے مطابق ملزم کی تحویل سے منشیات بھی برآمد ہوئی ۔ ایس ایس پی راجوری یوگل منہاس نے بتایا کہ مفاد عامہ کے لئے مذکورہ شخص خطرہ ثابت ہورہا تھا اور اکثر اسکولی بچوں میں منشیات فروش کرنے کی شکایات موصول ہورہی تھیں جس کے پیش نظر پولیس کو یہ قدم اٹھانا پڑا ۔ انہوں نے کہاکہ کئی بار متعلق شخص کو متنبہ کیا گیا تاہم اس پرکوئی بھی اثرنہ ہواجس کے بعد پولیس نے اسے پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت جیل منتقل کردیاہے۔
 
 

رہبرتعلیم اساتذہ نے سکریٹریٹ گھیرائو کال کی حمایت کی 

منیر خان 
راجوری // رہبر تعلیم اساتذہ فورم نے 14مئی کو سیکریٹریٹ سرینگر گھیراؤ کال دی ہے جس کا خیر مقدم کرتے ہوئے فورم کے ضلع صدرراجوری آفتا ب تانترے نے کہا کہ ریاستی سرکار کو چاہئے کہ وہ اساتذہ کی تنخواہوں کا معاملہ حل کرے ورنہ بڑے پیمانے پر احتجاج ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ کو ریاستی سرکار نے بیوقوف سمجھ رکھا ہے جنہیں ہر چھ ماہ کے بعد ایک ماہ کی تنخوا ہ دی جاتی ہے جو بنک سے باہر تک بھی نہیں آتی ۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ کے تقدس کو بحال کیاجائے اورریاستی سرکار کو چاہئے کہ وہ فوری تنخواہوں کے مسئلے پر غور کرے اور مشکلات کے ازالہ کے لئے اقدامات اٹھائے ۔ آفتاب تانترے نے مزیدکہا کہ اساتذہ معاشرے کا ایک حصہ ہیں جن کااہل و عیال ہے جنہیں پیسوں کی ضرورت اسی طرح ہوتی ہے جس طرح دیگر ملازمین کو لیکن اس کے باوجود سرکار اساتذہ کو تنخواہوں کیلئے ترسارہی ہے ۔ 
 

بھرتی کی افواہ پر نوجوان امڈ آئے 

جاوید اقبال
مینڈھر//مینڈھر کے بالاکوٹ علاقے میں پولیس کی بھرتی کی افواہ پر نوجوان دوڑ کر وہاں پہنچے تاہم بعد میں پتہ چلاکہ یہاں ایسی کوئی بھرتی نہیں ہورہی اور یہ محض افواہ تھی ۔افواہ بازی کو دیکھتے ہوئے ایس ایس پی پونچھ کو ایک چھٹی بھی نکالنی پڑی جس میں بتایاگیا کہ بالاکوٹ میں کوئی بھرتی نہیں ہورہی اور لوگوں کو شوشے پر یقین نہیں رکھنا چاہیے۔ کئی نوجوانوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کے خلاف کارروائی کی جائے جنہوں نے بھرتی کا شوشہ چھوڑ اکہ بالاکوٹ میں بھرتی ہو رہی ہے اوراسی افواہ میں آکر غریب گھرانوں کے نوجوان کرایہ کے پیسے خرچ کرکے بالاکوٹ پہنچے ۔
 

ژالہ باری متاثرین کو 6 ماہ کا مفت راشن فراہم کیا جائے:وبودھ 

طارق شال
تھنہ منڈی // ممبر قانون ساز کونسل ایڈووکیٹ وبودھ گپتا نے بلاک تھنہ منڈی کے بادل پھٹنے و ژالہ باری متاثرین کے حق میں 6 ماہ کا مفت را شن فراہم کرنے کا مطالبہ کیاہے۔ گپتا بلاک تھنہ منڈی میں ژالہ باری اور بادل پھٹنے سے ہوئے نقصانات کا جائزہ لینے کے لئے مقامی ڈاک بنگلہ پہنچے جہاں انہوںنے پارٹی ورکران کے علاوہ متاثرین سے بھی ملاقات کی ۔انہوں نے کہاکہ بکروال طبقہ کی بھیڑ بکریاں ہلاک ہوئی ہیںجبکہ تھنہ منڈی میں گندم کی فصل اور میوہ جات کو نقصان پہنچاہے اس لئے اس نقصان کی بھرپائی کرتے ہوئے حکومت کو چھ ماہ کا مفت راشن فراہم کرناچاہئے ۔انہوں نے محکمہ باغبانی سے اپیل کی کہ اس علاقے میں مفت پھلدار پودے فراہم کئے جائیں ۔ بلاک صدر بھارتیہ جنتا پارٹی ماسٹر عبدالغنی شال، زاہد احمد ،قاضی خلیل الرحمن، نعیم گنائی ودیگر ان بھی ان کے ہمراہ تھے ۔
 

تحصیلدار تھنہ منڈی نے نقصان کا جائزہ لیا 

طارق شال
تھنہ منڈی // تحصیلدار تھنہ منڈی قدیر الرحمن قاضی نے میونسپل کمیٹی تھنہ منڈی کے حکام کے ہمراہ ژالہ باری سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کر کے نقصانات کا جائزہ لیا۔ انہوں نے متعدد باغات کا دورہ کر کے تباہ شدہ میوہ جات کی تفصیلات حاصل کی۔ اسکے علاوہ میونسپل کمیٹی تھنہ منڈی کی تباہ حال گلیوں کا جائزہ لیاگیا اور متاثرین کو یقین دہانی کروائی گئی کہ و ہ ان کیلئے معاوضہ فراہم کرنے کی سفارش کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ قصبہ تھنہ منڈی میں صفائی ستھرائی کے علاوہ راستوں اور پگڈنڈیوں سے رکاوٹوں کو دور کرنے کے اقدامات کئے جائیںگے۔وہیںمیونسپل کمیٹی نے رکاوٹوں اور گلیوں کی از سر نو تعمیر کے لئے منصوبہ پر کام شروع کردیاہے ۔
 

منجاکوٹ میں مارکیٹ چیکنگ کی گئی 

پرویز خان 
منجاکوٹ //تحصیل منجاکوٹ میں تحصیلدار شیراز چوہدری اور تحصیل سپلائی آفیسر منجاکوٹ ریاض چوہدری نے دوکانوں کی چیکنگ کرنے کے ساتھ ساتھ کئی دوکانداروں کو جرمانہ بھی کیا۔ اس موقعہ پر تحصیل سپلائی آفیسر نے بتایا کہ سبزیوں کے ساتھ ساتھ کریانہ اور دیگر دوکانوں کی بھی چیکنگ کی گئی ۔انہوں نے کہا کہ سبزی ،پھل اور دیگر تمام اشیاء کا معائنہ کیاگیااو ر دکانداروں کو ہدایت دی گئی کہ لوگوں کو معیاری اشیاء فراہم کی جائیں۔
 

فوج نے کئی سال کام کروانے کے بعد نکال دیا 

بطور پورٹر کام کرنے والے بالاکوٹ کے نوجوانوں کا مستقبل مخدوش 

جاوید اقبال 
مینڈھر //فوج نے کئی کئی سال تک بطور پورٹر (کلی ) کا م کرنے والے نوجوانوں کو نکال دیاہے جس کی وجہ سے بالاکوٹ کے کئی نوجوان اپنے مستقبل کو لیکر فکر مند ہیںکیونکہ انہیں اپنا مستقبل مخدوش نظر آرہاہے ۔انہوںنے ڈپٹی کمشنر پونچھ سے مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ اگر ان کے ساتھ بیس دنوں کے اندر اندر انصاف نہ ہواتو وہ کوئی سخت قدم اٹھانے پر مجبور ہوجائیںگے ۔ان نوجوانوں کاکہناہے کہ پچاس سے ساٹھ نوجوان فوج کی 49ریجمنٹ بھمبر گلی کے ساتھ کام کررہے تھے جنہیں گزشتہ سال جولائی کے مہینے میں نکال دیاگیا ۔بارہویں پاس محمد افراد نے بتایاکہ انہیں یہ کہہ کر نکالاگیاکہ ابھی فنڈز نہیں ہیں اور جیسے فنڈز آجائیںگے تو انہیں پھر واپس بلایاجائے گاتاہم ابھی تک واپس نہیں بلایاگیا جس کی وجہ سے انہیں مالی دشواریوں کاسامناہے ۔انہوںنے بتایاکہ یہ کہاں کا انصاف ہے کہ بارہ بارہ سال تک کام کروانے کے بعد انہیں نکال دیاجائے اور وہ اب کسی بھی کام کے نہیں رہے کیونکہ ان کی نوکری کیلئے بھی عمر کی حد پار ہوچکی ہے ۔ان پورٹروں نے کہاکہ وہ اگر انہیں واپس نہیں بلایاگیاتو وہ کوئی سخت قدم اٹھائیںگے اور کشمیر ی نوجوان کی راہ پر بھی جاسکتے ہیں۔انہوںنے ڈپٹی کمشنر پونچھ سے اپیل کی کہ وہ اس سلسلے میں وہ ان کو انصاف دلائیں اور فوج کے افسران سے بات کی جائے ۔
 

منجاکوٹ دھرناجاری 

شبیر خان مقامی نمائندگان پر برس پڑے 

پرویز خان 
منجاکوٹ //تحصیل منجاکوٹ میں کئی دنوں سے کالج اور دیگر مطالبات پر جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے بینر تلے دھرنادیاجارہاہے ۔جمعرات کواس دھرنے میںکانگریس کے سینئر لیڈر وسابق وزیر شبیر احمد خان نے بھی شمولیت کی۔انہوںنے ایم ایل اے راجوری، ایم ایل سی راجوری اورپہاڑی ایڈوائزری بورڈ کے وائس چیئرمین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ان لیڈران کی وجہ سے میڈیکل کالج جنگل میں چلا گیااور انہی کی وجہ سے منجاکوٹ کے ساتھ انصاف نہیں ہورہا۔ شبیر خان نے کہا کہ منجاکوٹ کالج کا مستحق ہے اور موجودہ حکومت نے مقامی عوام کی مانگوں کو ٹھکرا دیا ہے جو بہت بڑی ناانصافی ہے۔ شبیر احمد خان نے کہا کہ جن کاموں کی بنیاد کانگریس سرکار کے دوران رکھی گئی تھی، وہ سب کے سب ادھورے پڑے ہوئے ہیں جن میں منی سیکریٹریٹ ،بچوں کا ہسپتال اور سٹیڈیم قابل ذکر ہیں ۔انہوں نے کہا کہ منجاکوٹ کے ساتھ ساتھ تھنہ منڈی میں بھی ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی پوسٹ دی جائے ۔شبیر احمد خان نے وزیر اعلیٰ سے مانگ کی کہ وہ تھنہ منڈی اور منجاکوٹ کے لوگوں کے مطالبات جلد سے جلد حل کریں۔