عید گاہ و قبرستان کی جگہ کو منظوری نہ مل سکی | مینڈھر قصبہ کے لوگوں کو مشکلات کا سامنا

مینڈھر //مینڈھر قصبہ میں انتظامیہ کی جانب سے ابھی تک عید گاہ اور قبرستان کیلئے کوئی جگہ ہی دستیاب نہیں کروائی گئی ہے جس کی وجہ سے عام لوگوں کو شدید مشکلات درپیش ہیں ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ قصبہ میں عید گاہ کی عدم موجودگی کی وجہ سے زیادہ آبادی عید کے موقعہ پر اپنے اپنے گائوں میں چلی جاتی ہے تاکہ عید کی نماز بخوبی سے انجام دی جاسکے جبکہ قبرستان نہ ہونے کی وجہ سے لوگوں لاشوں کو گائوں کے قبر ستانوں میں منتقل کرنے پر مجبور ہو جاتے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ عید گاہ کے سلسلہ میں ایک فائل برسوں سے متعلقہ سرکاری دفاتر میں پڑی ہوئی ہے لیکن ابھی تک کوئی عملی کام نہیں کیا گیا ۔جامع مسجد مینڈھر کے امام و خطیب مولانا محمد سلطان نقشبندی نے بتایا کہ لگ بھگ 9برس قبل عید گاہ کے سلسلہ میں ایک فائل ڈی سی دفتر تک منتقل کی گئی تھی لیکن کئی برسوں تک سرکاری دفاتر میں رہنے کے بعد سابقہ ضلع ترقیاتی کمشنر نے جگہ دینے سے انکار کر دیا تھا جبکہ اس کے بعد جب مذکورہ دفتر سے رجوع کیا گیا تو فائل ہی لاپتہ ہوئی تھی ۔انہوں نے افسوس کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ سرکاری دفتر سے فائل کا گم ہونا سمجھ سے بالا تر ہے ۔موصوف نے بتایا کہ اب دوبارہ سے محکمہ مال سے رجوع کیا گیا ہے ۔مقامی لوگوں و علماء نے ضلع انتظامیہ سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ مینڈھر میں قبر ستان و عید گاہ کی جگہ کا تعین کر کے لوگوں کی مشکل کو حل کیا جائے ۔