عارضی ملازمین کا مستقلی کومطالبے کو لیکراحتجاج،لالچوک کی طرف پیش قدمی کو پولیس نے ناکام بنایا

سری نگر// عارضی ملازموں نے اپنی مستقلی کے مطالبے حق میں سرینگرمیں احتجاج کرتے ہوئے لالچوک کی جانب پیش قدمی کرنے کی کوشش کی تاہم نے پولیس نے انہیں لالچوک کی جانب پیش قدمی سے روکا۔جموں کشمیر کیجول ڈٰیلی ویجرس فورم کے جھنڈے تلے کیجول ملازمین اور ڈیلی ویجروں کی کی ایک بڑی تعداد نے جمعرات کے روز یہاں پریس کالونی میں جمع ہوکر اپنے مطالبات خاص طور پر نوکریوں کی مستقلی کے لئے زبردست احتجاج درج کیا۔احتجاجی جم کر نعرہ بازی کر رہے تھے اور ان کا احتجاج صرف پریس کالونی تک ہی محدود نہیں رہا بلکہ وہ باہر سڑکوں پر بھی آگئے جس سے تجارتی مرکز لالچوک میں ٹریفک کی نقل و حمل میں خلل واقع ہوئی۔پولیس نے احتجاجی ملازموں کے چند لیڈروں کو بھی حراست میں لے لیا تاہم اس کے باوجود بھی ملازمین بر سر احتجاج رہے۔اس موقع پر جموں کشمیر کیجول ڈٰیلی ویجرس فورم کے صدر سجاد احمد پر ے نے میڈیا کو بتایا کہ ہمیں نہ تنخواہ واگذار کی جا رہی ہے اور نہ ہی ہماری نوکریوں کو مستقل کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم گذشتہ پچیس پچیس برسوں سے مختلف محکموں کی خدمت کر رہے ہیں لیکن ہماری تنخواہ بہت ہی قلیل ہے جس سے ہم اپنے عیال کو پال نہیں سکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس نہ بچوں کا اسکول فیس ہے اور نہ دفتر آنے جانے کے لئے بس کرایہ ہوتا ہے۔ سجاد پرے نے کہا کہ آج تک جتنی بھی حکومتیں آئیں انہوں نے صرف ہمارے ساتھ وعدے کئے ہمارا کام کسی سرکار نے نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ ہم بہت تنگ آگئے ہیں اور ہم اب اپنے عیال کو ساتھ لا کر یہاں احتجاج درج کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ہماری لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا سے گذارش ہے کہ وہ ہمارے مسئلے کو حل کریں تاکہ ہمارے گھروں میں بھی چولھے جلنے کا بندوبست ہوسکے۔