شمی کا آئی پی ایل میں کھیلنا مشکوک

 نئی دہلی//عصمت دری، ہراساں ، مختلف خواتین کے ساتھ ناجائز تعلقات جیسے سنگین الزامات کا سامنا کررہے ہندستانی تیز گیند باز محمد شمی کا اس سال انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) ٹوئنٹی-20 میں کھیلنا مشکو ک لگ رہا ہے ان کی فرنچائز ی دہلی ڈیئرڈیولز فی الحال ان کے کھیلنے کے لئے کرکٹ بورڈ کے فیصلے کا انتظار کررہی ہے ۔شمی (27) کی اہلیہ حسین جہاں نے ان پر الزامات عائد کئے ہیں اوران کے خلاف کولکتہ کے مقامی پولیس اسٹیشن میں جمعرات کو ایف آئی آر بھی درج کرائی ہے جس پر پولیس نے کارروائی شروع کردی ہے ۔ شمع پر تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے تحت معاملہ درج ہو ا ہے جس میں کچھ دفعات غیر ضمانتی بھی ہیں۔ ان حالات کے پیش نظر اپریل سے شروع ہونے والے ٹورنامنٹ کے لئے مہیا ہونا مشکل ہو رہا ہے ۔ وہیں ان کے ہندستانی کرکٹ ٹیم میں کیئرئر پر بھی سوال کھڑے ہوگئے ہیں اور بدھ کو ہندستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ نے کانٹریکٹ حاصل کرنے والوں کی فہرست میں بھی شامل نہیں کیا ہے ۔ شمی نے حالانکہ ٹوئیٹر پر اپنے اوپر عائد الزامات سے انکار کیا ہے ۔ لیکن معاملے میں پولیس کی جانچ شروع ہونے کے بعد سات اپریل سے شروع ہونے والے آئی پی ایل کے لئے بھی ان کی تیاریوں کو جھٹکا لگا ہے ۔ دریں اثنا دہلی ڈیئر ڈیولس کے چیف ایکزیکیوٹیو ہیمنت دعا نے کہا ہم شمی کو لے کر بی سی سی آئی کے حکم کا انتظار کررہے ہیں۔دعا نے کہا ہم نے بی سی سی آئی سے رابطہ کیا ہے ۔فرنچائز کا کھلاڑی اور بی سی آئی کے ساتھ سہ رخی معاہدہ ہوتا ہے اور اس معاملے میں شمی کو لے کر بورڈ اپنی حتمی رائے قائم کررہی ہے اس کے بعد وہ ہمیں آگے کی اطلاع دیں گی۔ ہم بورڈ کے فیصلہ کا انتظار کررہی ہیں۔ وہیں بی سی سی آئی کی آپریشن کمیٹی کے صدر ونود رائے نے کہا اس معاملہ کی صورتحال مختلف ہے کیونکہ کسی دیگر کے معاملے میں اسے نجی مسئلہ کہا جاسکتا ہے ۔ لیکن وہ ایک کھلاڑی ہیں اور ان کی موجودگی میں بورڈ پر سوال اٹھ سکتا ہے ۔ شمی نے سال 2013 میں ویسٹ انڈیز کے خلاف ہندستانی ٹیم میں اپنا پہلا میچ کھیلا تھا اور جنوبی افریقہ کے دورے پر بھی ٹیم کا حصہ تھے ۔ انہوں نے ہندستان کی جانب سے 50 ایک روزہ ٹسٹ کھیلے ہیں۔ اس کے علاوہ سات ٹوئنٹی 20 بین الاقوامی میچ بھی کھیل چکے ہیں۔یو این آئی