سیاح کی موت کے ذمہ دارسنگ بازوں کاپتہ لگاکرسزادی جائے:رام سینا

 جموں//تامل ناڈوکے 22سالہ سیاح کی وادی کشمیرمیں سنگ باری میں ہلاکت پرگہرے رنج وغم کااظہارکرتے ہوئے شری رام سینا جموں وکشمیرنے وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی سے کہاہے کہ وہ اس سانحہ میں ملوث ملزموں کاپتہ لگا کر انہیں سزائے موت دی جائے تاکہ دوبارہ ایساکوئی واقعہ نہ ہونے پائے۔پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ریاستی صدرشری رام سینا راجیومہاجن نے مارے گئے سیاح کے وارثوں کوایک کروڑ روپے کامعاوضہ دینے کی مانگ کی ہے کیونکہ سیاحوں کوتحفظ فراہم کرناحکومت کی ذمہ داری ہے ۔ راجیومہاجن نے مہاجن کی آتما کی شانتی اورغمزدہ کنبہ کویہ صدمہ براشت کرنے کی ہمت وقوت کے لئے بھگوان سے پرارتھنا کی ۔ مہاجن نے ریاستی اور مرکزی حکومت سے کہاکہ وہ سنگ بازوں کے ساتھ سختی سے نمٹے کیونکہ دن بدن میں حدیں پارکرتے چلے جارہے ہیں اوراب وہ ہرکس وناکس کو اپنے عتاب کانشانہ بنارہے ہیں اوروہ امن کے دشمن ہیں اوروہ نہیں چاہتے ہیں کہ ریاست کی اقتصادیات کواستحکام ملے ۔انہوں نے کہاکہ اس سیلانی کے مارے جانے سے وادی کی سیاحت پرآنے والے سیاحوں کی آمدرُک جائے گی جس کی وجہ سے یہاں کی اقتصادیات کودھچکالگے گا۔انہوں نے اس سانحے کی این آئی اے انکوائری کامطالبہ کیا ۔امرناتھ یاتراکے دوران یاتریوں کوحفاظت کویقینی بنائیں اوراگریاتراکے دوران اس طرح کاکوئی واقعہ رونماہواتواُسے برداشت نہیں کیاجائے گا۔