خمینی چوک بمنہ میں اے ٹی ایم لُوٹنے کا معمہ حل | بینک سیکورٹی گارڈ پولیس کی گرفت میں ،لاکھوں روپے برآمد

سرینگر//پولیس نے خمینی چوک بمنہ میں اے ٹی ایم لوٹنے کے معاملے کو حل کرتے ہوئے بینک سیکورٹی گارڈکو گرفتار کرکے اس کے قبضے سے تقریبا 9لاکھ روپے برآمد کئے ۔پولیس بیان کے مطابق 27نومبر کو پولیس اسٹیشن پارمپورہ کو برانچ منیجر جے اینڈ کے بینک خمینی چوک بمنہ سرینگر کی طرف سے تحریری شکایت موصول ہوئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ خمینی چوک میں اے ٹی ایم مشین سے  9,06,400روپے غائب ہیں۔پولیس نے شکایت درج کرکے اس سلسلے میں متعلقہ دفعات کے تحت ایف آئی آر نمبر 258/2020 پولیس تھانہ پارمپورہ میں درج کیا اور تفتیش شروع کی۔ابتدائی تفتیش کے دوران پولیس نے لمحہ بہ لمحہ جرم کے منظر کا جائزہ لیا اور پتہ چلا کہ اے ٹی ایم مشین کو معمول کے مطابق بند کردیا گیا تھا جس وجہ سے اے ٹی ایم میشن پر کسی قسم کا کوئی نشان و نقصان کے آثارموجود نہ تھے ۔ تفتیش کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ اے ٹی ایم مشین سے نقد ی رقم لینے کے لئے کوڈکااستعمال کیا گیا ہے ، جس سے یہ شبہ پیدا ہوا کہ بینک کوڈ کے معاملات اور اے ٹی ایم مشین کھولنے اور بند کرنے سے متعلق دیگر طریقہ کار کے بارے میں جاننے والے شخص نے یہ چوری کی ہے۔تفتیش کے دوران اے ٹی ایم مشین سے واقفیت رکھنے والے تمام افراد سے پوچھ گچھ کی گئی ہے اور آخر کار مذکورہ بینک میں بینک سکیورٹی گارڈ کی حیثیت سے کام کرنے والے ایک شخص نے جرم کا اعتراف کیا۔اس کی شناخت جاوید احمد ملہ ولد غلام حسن ساکن خمینی چوک بمنہ کے طور ہوئی۔پولیس نے اس کے قبضے سے  8,90,600 روپے کی چوری شدہ نقدی برآمد کی ہے۔مذکورہ چور کو گرفتار کرکے پولیس اسٹیشن پارمپورہ میں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا گیاہے۔