بھارت کیلئے جاپان کی ترقیاتی امداد | 9پروجیکٹوں کیلئے 232ارب ین فراہم کرنے کا عہد

یو این آئی

نئی دہلی// حکومت جاپان نے مختلف شعبوں میں 9 پروجیکٹوں کیلئے 232.209 ارب ین کا آفیشل ڈیولپمنٹ اسسٹنس (اوڈی اے) قرض فراہم کرنے کاہندوستان کے ساتھ عہد کیا ہے۔وزارت خزانہ کے محکمہ اقتصادی امور کے ایڈیشنل سکریٹری وکاس شیل اور ہندوستان میں جاپان کے سفیر سوزوکی ہیروشی کے درمیان اس سلسلے میں قرض کی منظوری کا تبادلہ ہوا۔ اوڈی اے قرض امداد جن پروجیکٹوں کے لیے منظور کیاگیا ہے ان میں نارتھ ایسٹ روڈ نیٹ ورک کنیکٹیویٹی امپرومنٹ پروجیکٹ (فیز 3) (قسط 2)، دھوبری-فْلباری پل (34.54 ارب ین)، نارتھ ایسٹ روڈ نیٹ ورک کنیکٹیویٹی امپرومنٹ پروجیکٹ (فیز 7)، این ایچ 127 بی (فولباری-گویراگری سیکشن) (15.56 ارب ین)، تلنگانہ میں اسٹارٹ اپس اور اختراع کو فروغ دینے کا پروجیکٹ (23.7 ارب ین)، چنئی پیریفرل رنگ روڈ (فیز 2) کی تعمیر کا پروجیکٹ (49.85 ارب ین)، ہریانہ میں پائیدار باغبانی کو فروغ دینے کا پروجیکٹ (قسط ایک) (16.21 ارب ین)، راجستھان میں موسمیاتی تبدیلی کے ردعمل اور ایکو سسٹم سروس میں اضافہ کا پروجیکٹ (26.13 ارب ین)، ناگالینڈ انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز اینڈ ریسرچ، کوہیما میں میڈیکل کالج اسپتال کے قیام کے لئے (10 ارب ین)، اتراکھنڈ میں شہری پانی کی فراہمی کے نظام کو بہتر بنانے کا پروجیکٹ (16.21 ارب ین) اور وقف فریٹ کوریڈور پروجیکٹ (فیز 1) (قسط 5) (40 ارب ین) شامل ہے۔سرکاری معلومات کے مطابق، روڈ نیٹ ورک کنیکٹیویٹی پروجیکٹس کا مقصد ہندوستان کے شمال مشرقی علاقے میں بنیادی ڈھانچے کی مناسب ترقی کرنا ہے، جب کہ چنئی پیریفرل رنگ روڈ پروجیکٹ کا مقصد ٹریفک کی بھیڑ کو کم کرنا اور ریاست کے جنوبی حصے سے رابطوں کو مضبوط کرنا ہے۔ ناگالینڈ میں یہ پروجیکٹ میڈیکل کالج اسپتالوں کو ترقی دے کر تیسرے درجے کی طبی خدمات کی فراہمی کے نظام کو فروغ دینے میں مدد کرے گا، اس طرح مجموعی صحت کی کوریج میں نمایاں طور پر حصہ ڈالے گا۔ تلنگانہ میں ایک منفرد پروجیکٹ خواتین اور دیہی آبادی پر توجہ مرکوز کرنے کے ساتھ کاروباری مہارتوں کو ابھارنیاور ایم ایس ایم ای کے کاروبار کی توسیع کو فروغ دینے میں مدد کرے گا۔ ہریانہ میں، یہ پروجیکٹ پائیدار باغبانی کو فروغ دے گا اور فصلوں کے تنوع اور بنیادی ڈھانچے کی ترقی کو فروغ دیتے ہوئے کسانوں کی آمدنی بڑھانے میں مدد کرے گا۔ راجستھان میں فاریسٹری پروجیکٹ جنگل کاری، جنگلات اور حیاتیاتی تنوع کے تحفظ کے ذریعے ماحولیاتی نظام کو مزید مضبوط کرے گا۔ پہاڑی ریاست اتراکھنڈ میں اس پروجیکٹ کا مقصد شہری قصبوں کو پانی کی مسلسل فراہمی فراہم کرنا ہے۔ ڈیڈیکیٹڈ فریٹ کوریڈور پروجیکٹ کی پانچویں قسط ایک نئے وقف شدہ مال بردار ریلوے نظام کی تعمیر میں مدد کرے گی اور مال برداری میں ا?ئی تیزی کو سنبھالنے کے قابل انٹر موڈل لاجسٹکس سسٹم کو جدید بنائے گی۔ہندوستان اور جاپان کے درمیان 1958 سے دو طرفہ ترقیاتی تعاون کی ایک طویل اور نتیجہ خیز تاریخ ہے۔ ہند-جاپان تعلقات کا ایک اہم ستون اقتصادی شراکت داری میں گزشتہ چند برسوں میں مسلسل ترقی ہوئی ہے۔ ان اہم پروجیکٹوں کے لیے لائن آف کریڈٹ کا تبادلہ ہندوستان اور جاپان کے درمیان اسٹریٹجک اور عالمی شراکت داری کو مزید مضبوط کرے گا۔