ایران میں ‘آرمی ڈے’پراسلحہ کے بجائے طبی آلات کی نمائش

تہران //ایران میں جمعے کو 'آرمی ڈے' منایا گیا ہے۔ اس دوران سڑکوں پر فوجی گاڑیوں کے بجائے جراثیم کش ادویات کا اسپرے کرنے والی گاڑیاں، موبائل اسپتال اور طبّی سامان لے جانے والی دیگر گاڑیاں گشت کرتی رہیں۔'یوم فوج' کے موقع پر "ملک کے محافظ، صحت میں مددگار" کے عنوان سے ایک چھوٹی سی فوجی پریڈ کا بھی انعقاد کیا گیا۔ پریڈ میں شریک کمانڈوز نے کرونا وائرس سے بچاو کے لیے ماسک پہنے ہوئے تھے۔پریڈ کے دوران ایران میں کرونا وائرس کا پھیلاو روکنے کے لیے فوج کی کوششوں پر بھی روشنی ڈالی گئی۔یہ پریڈ عام طور پر ہونے والی فوجی پریڈ سے خاصی مختلف تھی۔ اس میں نہ تو اسلحے کی نمائش کی گئی اور نہ ہی جنگی طیاروں کی گھن گرج سنائی دی۔ایران کے صدر حسن روحانی نے اس موقع پر فوجیوں کو پیغام دیتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کے ماحول میں یہ ممکن نہیں ہے کہ فوجیوں کی باقاعدہ پریڈ کی جا سکے۔ ہمارا مقابلہ جس دشمن سے ہے، وہ چھپا ہوا ہے اور فرنٹ لائن پر ڈاکٹر اور طبی عملہ کھڑا ہے۔ایران کی فوج کے سربراہ جنرل عبدالرحیم موساوی نے بھی کرونا وائرس کے خلاف جنگ میں شریک 11 ہزار سے زائد فوجی طبّی عملے کے ارکان کا شکریہ ادا کیا۔