آٹھنڈن پہلگام میں پانی کی قلت سے عوام پریشان | لوگ ندی نالوں کا ناصاف پانی پینے پر مجبور

سرینگر//جنوبی کشمیر کے پہلگام آٹھنڈن گائوں میں پینے کے پانی کی شدید قلت پائی جارہی ہے جس کے نتیجے میں لوگوں کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑرہا ہے اور لوگ ندی نالوں کاناصاف پانی استعمال کرنے پر مجبور ہورہے ہیں ۔لوگوں نے متعلقہ محکمہ کیخلاف سخت برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ محکمہ کے متعلقہ ملازمین خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔ سی این آئی کے مطابق جنوبی کشمیر کے اٹھنڈن پہلگام علاقے کی عوام نے پانی کی قلت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ناراضگی کا اظہار کیا۔اٹھنڈن گاؤں میں لوگوں نے محکمہ جل شکتی کے خلاف سخت برہمی کااظہارکیا ۔ مقامی شہری متین احمد شاہ کاکہنا ہے کہ علاقے میں گزشتہ کئی برسوں سے پانی کی فراہمی نہیں کی جارہی ہے اور گاوں میں ہر کوئی پانی کی مشکلات سے پریشان ہیںاور ہمیں پانی کی ایک ایک بوند کے لئے ترسایا جارہا ہے۔ مقامی لوگوں نے کہا کہ ہم نے پانی کی فراہمی کو بحال رکھنے کے لئے محکمہ جل شکتی کے ہر عہدیدار سے رجوع کیا ہے لیکن کوئی بھی ہماری شکایت پر توجہ نہیں دے رہا ہے۔مقامی لوگوں نے متعلقہ محکمہ پر گاؤں میں پانی کی فراہمی کی سہولت کے لئے کوئی توجہ نہیں دینے کا الزام عائدکیا۔لوگوں نے ایل جی انتظامیہ اور ضلع انتظامیہ اننت ناگ سے استدعا کی کہ وہ اس معاملے پر توجہ دیں اور ان کے مسئلے کو حل کریں۔اس معاملے پر اے ای ای محکمہ جل شکتی نے سی این آئی کو بتایا کہ علاقے کو پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے پہلے ہی ایک پروجیکٹ بنانے کی ایک تجویز پیش کی ہے جب تک اس پروجیکٹ کی منظوری مل جائے گی تب تک اس علاقے کی پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اعلی عہدیداروں سے گاؤں میں واٹر ٹینکر بھیجنے کی بات کی ہے تاکہ ان کو درپیش مشکلات سے تھوڑی سی راحت مل جائے۔