۔88فیصد ہندوستانی برآمدات بحال

 نئی دہلی// یورپی، مشرقی ایشیائی اور افریقی ممالک کی جانب سے ڈیمانڈ (مانگ) آنے اور کووِڈ۔19 عالمی وبا کے درمیان معیشت کی رفتار تیز کرنے کے لیے حکومت کی کوششوں کے درمیان تقریباً 88 فیصد ہندوستانی برآمدات (ایکسپورٹ) بحال ہو گئی ہے ۔ مرکزی وزارت صنعت و تجارت کے ذرائع نے پیر کے روز بتایا ہے کہ حکومت کی کوششوں کے نتائج نظر آنے لگے ہیں۔ ڈائریکٹوریٹ جنرل آف فارن ٹریڈ کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق جون 2020 میں 87.39 فیصد ہندوستانی برآمدات (ایکسپورٹ) کو بحال کیا گیا ہے ۔ رواں ماہ لوہے کی برآمدات 63.11 فیصد، تلہن میں 63.11 فیصد، چاول میں 32.72 فیصد، خوردنی تیل میں 27.36 فیصد، مسالے میں 22.92 فیصد، دیگر اناج میں 19.35 فیصد، نامیاتی اور غیر نامیاتی کیمیکلز میں 19.06 فیصد، اناج کی تیاری اور متنوع پروسیسڈ اشیاء میں 13.8 فیصد، پھلوں اور سبزیوں میں 11.01 فیصد، دوا اور فارما میں 9.89 فیصد، تمباکو میں 3.56 فیصد اور کافی میں 2.58 فیصد اضافہ ہوا ہے ۔فیڈریشن آف انڈین ایکسپورٹ آرگنائیزیشن کے شرد کمار نے آئندہ ماہ میں اکسپورٹ میں اضافہ ہونے کا امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی معیشتیں دھیرے دھیرے کھل رہی ہیں اور ہندوستانی اشیاء کی ڈیمانڈ ہو رہی ہے ۔ آنے والے وقت میں زیورات، چمڑا اور چمڑا اشیاء، گارمینٹس، دھاگا اور کپڑا، پٹرولیم اشیاء، کاجو، گوشت، ڈیری اور پولٹری اشیاء، دستکاری، قالین، الیکٹرانک اشیاء، جوٹ اشیاء، فرش کور، سیریمک اشیاء، اور کانچ کی بنی اشیاء، قالین، سمندری اشیاء، چائے ، انجینیئرنگ اشیاء، پلاسٹک اور المونیم، میکا، کوئیلہ اور دیگر اشیاء، پروسیسڈ معدنیات وغیرہ میں ڈیمانڈ آنے کا امکان ہے ۔