ہڑوک میں ’’پرلنکا جپسم پروجیکٹ ‘‘سے منسلک مقامی ٹرانسپورٹروں کی ہڑتال

گول//ضلع رام بن کے دھرم کنڈ ہڑوک میں ’’پرلنکا جپسم پروجیکٹ ‘‘ سے منسلک مقامی ٹرانسپوروٹ نے گزشتہ روز سے اپنی گاڑیوں کو ایک جگہ کھڑا کر کے ہڑتال کر دی ہے اور انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس میں مداخلت کر کے ان کے مسائل کی طرف توجہ دی جائے ۔ مقامی ٹرانسپورٹروں کا کہنا ہے کہ یہ پروجیکٹ جویہاں ہماری پنچایت اور تحصیل میں ہے اور ہمارے ضلع میں ہے لیکن اس پروجیکٹ کے ٹھیکیدار اور اس کا محکمہ باہر سے گاڑیاں لاتے ہیں جس وجہ سے مقامی ٹرانسپوٹروں کو شدید نقصان سے دوچار ہونا پڑ رہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب یہاں پر جپسم نکلا تو مقامی لوگوں میں بالخصوص نوجوان طبقہ میں کافی خوشی ہوئی اور نوجوانوں نے بنکوں سے قرضہ اُٹھایا اور گاڑیاں لیں اور کافی دیر تک اس پروجیکٹ کے ساتھ منسلک رہے لیکن کچھ عرصے سے اس پروجیکٹ کے ٹھیکیدار اور محکمہ مقامی ٹرانسپوروں کو ترک کر رہا ہے جبکہ باہر اضلاع سے گاڑیوں کو لایا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ نہ صرف اس طرح کا برتائو کیا جاتا ہے بلکہ جب ہماری گاڑی جپسم لے کر جاتی ہے تو ہمیں وہاں پردو دو ، تین تین دن روک کر رکھتے ہیں جس وجہ سے ہمارے دن بھی ضائع ہو جاتے ہیں ۔ ٹرانسپوروں کا کہنا ہے کہ جب ہم کو ٹھیکیدار گاڑی کا کرایہ دیتا ہے وہ نقد نہیں بلکہ چیک ہاتھ میں تھما دیتا ہے جب ہم بنکوں میں جاتے ہیں تو وہاں پر اکائونٹ خالی ہوتے ہیں جس وجہ سے ہمیں مہینوں ضائع ہوتے ہیں اور اس طرح کے سلوک سے ہم تنگ آ چکے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے یہ ہڑتال انتظامیہ تک اپنی آواز پہنچانے کے لئے کی ہے اور ہم نے نہ کسی کی گاڑی کو روکا ہے اور نہ ہی ہماری ہڑتال سے کسی کو کوئی نقصان پہنچا ہے ۔انہوں نے کہا کہ یہاں سے لاکھوں ٹن مال باہر لے جا رہا ہے لیکن مقامی لوگوں کو اس سے کوئی فائدہ نہیں مل رہا ہے جبکہ ہماری ہزاروں کنال اراضی کو کورودا جا رہا ہے اور ٹھیکیداری چمکایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے سرکار سے مطالبہ کیا کہ اگر ہم مقامی ہیں تو ہمیں اس پروجیکٹ سے فائدہ کیوں نہیں مل رہا ہے اور جو بھی مسائل اس پروجیکٹ سے متعلق مقامی ٹرانسپوٹروں کو ہے اُن کو جلد از جلد حل کیا جائے تا کہ ہم بنکوں سے جو قرضہ لیا ہے ان کی قسطوں کوواگزار کریں ۔