ہندوستان بمقابل آسٹریلیا: بنگلور کے ایم چنا سوامی اسٹیڈیم میں پہلی بار ٹوئنٹی -20 میچ کھیلیں گی

بنگلور// آسٹریلیا نے پہلے ٹوئنٹی -20 میچ میں آخری گیند پر شکست کھانے والی ٹیم انڈیا بدھ کو بنگلور میں ہونے والے دوسرے اور آخری ٹوئنٹی -20 مقابلے میں سیریز برابر کرنے کے مضبوط ارادے سے اترے گی۔ہندستان نے وشاکھاپٹنم میں پہلا ٹوئنٹی -20 میچ آخری اوور میں گنوا دیا تھا۔ ہندستان نے سات وکٹ پر 126 رنز بنائے تھے لیکن جسپریت بمراہ کے کمال کے 19 ویں اوور نے ہندوستان کی میچ میں واپسی کرا دی تھی۔ آسٹریلیا کو آخری اوور میں جیت کے لئے 14 رن چاہئے تھے اور اس کے لو آرڈر بلے بازوں نے اس اوور میں ضروری 14 رن بنا کر ہندستان کو فتح سے محروم کر دیا تھا۔ آسٹریلیا نے یہ مقابلہ تین وکٹ سے جیتا تھا۔ہندستان نے اپنی پچھلی 11 ٹوئنٹی -20 سیریز میں صرف نیوزی لینڈ سے حالیہ ٹوئنٹی -20 سیریز 1-2 سے گنوائي تھی۔ کیوی سیریز سے پہلے پچھلی 10 سیریز میں ہندستانی ٹیم ناقابل شکست رہی تھی۔ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے وشاکھاپٹنم کی شکست کے بعد قبول کیا تھا کہ ٹیم کی بلے بازی اچھی نہیں رہی اور کھلاڑیوں کو بلے سے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا چاہئے تھا۔ کپتان کے اس انتباہ کے بعد ہندوستانی بلے بازوں کو بنگلور میں بہتر کھیل کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ٹاپ آرڈر میں شکھر دھون کی جگہ اوپننگ میں لائے گئے لوکیش راہل نے بلا شبہ نصف سنچری بنائی تھی لیکن روہت شرما کا سستے میں آؤٹ ہو نا ہندستان کے لئے گہرا دھچکا تھا۔ مڈل آرڈر میں دنیش کارتک اور رشبھ پنت سستے میں نپٹ گئے تھے ۔ ہندوستان کو مڈل آرڈر کی بلے بازی کو بہتر کرنا ہوگا جو اس کے لئے گزشتہ چند سالوں میں سر درد رہی ہے ۔ اگر شکھر کو ٹیم میں شامل کیا جاتا ہے تو روہت کو آرام مل سکتا ہے یا پھر راہل کو مڈل آرڈرپر جانا پڑ سکتا ہے ۔یہ دو میچوں کی سیریز ہے اس لئے ٹیم میں زیادہ تبدیلی کی گنجائش نہیں نظر آتی ہے کیونکہ ہندستانی ٹیم کی بنیادی توجہ اس کے بعد ہونے والی پانچ میچوں کی ون ڈے سیریز پر ہے ۔ ہندستانی آل راؤنڈر کرونال پانڈیا نے میچ کی شام اعتماد کا اظہار کیا کہ ٹیم واپسی کرے گی اور سیریز میں برابری حاصل کرے گی۔ہندستان نے جنوری 2008 میں آسٹریلیا سے میلبورن میں واحد ٹوئنٹی -20 میچ گنوانے کے بعد آسٹریلیا سے کوئی دو طرفہ ٹوئنٹی -20 سیریز نہیں گنوائی ہے اور ہندستان اس ریکارڈ کو بنگلور میں فتح حاصل کر ہی برقرار رکھ سکتا ہے ۔