ہائی ڈینسٹی ایپل پلانٹیشن سکیم کا جائیزہ

جموں// وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے اعلیٰ پیداوار دینے والے سیب کے پودوں کو ریاست کی ہارٹی کلچر صنعت میں ایک کلیدی اہمیت کا حامل قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سکیم کو مزید وسعت دی جانی چاہئے اور زیادہ سے زیادہ اہداف حاصل کرنے کے لئے باغ مالکان کے لئے مراعات کے ساتھ منسلک کیا جانا چاہئے۔وزیر اعلیٰ نے اس حوالے سے ایک جائیزہ میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے متعلقہ محکموں، مالی اداروں اور تحقیقی یونٹوں کے مابین ایک مشترکہ اور فعال لائحہ عمل تیار کرنے کی ضرورت پر زور دیا تا کہ اس سکیم کوکسانوں میں عام کیا جاسکے اور مطلوبہ نتائج حاصل ہوسکیں۔باغبانی کے وزیر سید بشارت بخاری، خزانہ اور تعلیم کے وزیر سید محمد الطاف بخاری اور باغبانی کی وزیر مملکت پریا سیٹھی بھی میٹنگ میں موجود تھیں۔وزیر اعلیٰ نے جے کے بنک جو ہائی ڈینسٹی ایپل پلانٹیشن سکیم کے لئے مالی امداد فراہم کرتا ہے سے کہا ہے کہ وہ سبسڈی کے عمل کو مزید آسان بنائیں تا کہ عمل آوری میں تاخیر اور مشکلات پیش نہ آئیں۔وزیر اعلیٰ نے جموں وکشمیر بنک سے کہا کہ وہ اس سکیم کا جائیزہ لیں تا کہ اسے مزید کسان دوست بنایا جاسکے۔انہوں نے کہا کہ سکیم کو ترجیحاتی سیکٹر لینڈنگ سکیم کے دائرے میں لانے کے امکانات بھی تلاش کئے جانے چاہئیں۔محبوبہ مفتی نے تحقیقی اداروں کو ہدایت دی کہ وہ افرادی قوت کی مناسب تربیت کو یقینی بنائیں تا کہ اس سکیم کو نچلی سطح پر تکنیکی رکاوٹ کے عملایا جاسکے۔وزیر اعلیٰ کو اس موقعہ پر جانکاری دی گئی کہ محکمہ بڑے اقدامات کے تحت پبلک سیکٹر میں نرسریاں قائم کرنے میں صد فیصد مالی معاونت جبکہ نجی سیکٹر میں پودوں کی نرسریاں قائم کرنے کے لئے50 فیصد معاونت فراہم کر رہا ہے۔انہیں بتایا گیا کہ محکمہ سی اے سٹور قائم کرنے کے لئے 33 فیصد سبسڈی فراہم کرتا ہے۔میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ جے کے بنک نے اب تک رقومات کی فراہمی کے لئے 96 معاملات میں سے91 کو نمٹایا ہے جس کے لئے4.27 کروڑ روپے واگذار کئے گئے۔میٹنگ میں جانکاری دی گئی کہ ریاست میں اب تک72.5 ہیکٹر باغات اراضی کو ہائی ڈینسٹی ایپل شجرکاری کے دائرے میں لایا گیا ہے۔اس دوران وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا کہ ریاست میں باغبانی کا78 فیصد حصہ سیبوں کی کاشتکاری پر مشتمل ہے اور یہ ریاست کے48 فیصد علاقہ پر پھیلا ہوئی ہے۔میٹنگ میں کئی ترقی پسند کاشتکاروں نے ہائی ڈینسٹی شجرکاری کے حوالے سے اپنے تجربات پیش کئے اور اپنی طرف سے کئی تجاویز بھی سامنے رکھیں۔چیف سیکرٹری بی بی ویاس، پرنسپل سیکرٹری خزانہ نوین کے چودھری، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری روہت کنسل، سیکرٹری ہارٹی کلچر منظور احمد لون، ایم ڈی جے کے ایچ پی ایم سی ڈاکٹر عبدالکبیر ڈار، چئیرمین جے کے بنک پرویز احمد، زرعی یونیورسٹیوں کے وائس چانسلر، وائس چئیرمین جے کے ایچ پی ایم سی عبدالکلام ریشی، ناظم باغبانی، کئی ترقی پسند کاشتکار اور متعدد اعلیٰ افسران بھی میٹنگ میں موجود تھے۔