کانگریس ملک کے دشمنوں کو کیا اشارہ دے رہی ہے ؟ بی جے پی

یو این آئی

نئی دہلی// بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بدھ کو کانگریس لیڈر منی شنکی ایٔر کے ذریعے 1962 کے چین کے فوجی حملے کو “نام نہاد” قرار دینے پر کانگریس پر شدید حملہ کیا اور کہا کہ ہندوستان کے دشمن ہمیشہ کانگریس کے دوست رہے ہیں اور انہوں نے ہمیشہ ہندوستانی فوج کی قربانیوں اور بہادری کی توہین کی ہے۔بی جے پی کے ترجمان گورو بھاٹیہ نے یہاں پارٹی کے مرکزی دفتر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف جمہوریت کا عظیم تہوار چل رہا ہے اور وزیر اعظم نریندر مودی عوام سے رابطہ کرنے اور اشتراک کرنے کے لیے انتھک محنت کر رہے ہیں۔ دوسری طرف ہندوستان مخالف اپوزیشن ایسے بیانات دے رہی ہے جس سے فوج کا حوصلہ پست ہو اور قومی تشخص مجروح ہو۔ بھاٹیہ نے کہا کہ کانگریس لیڈر منی شنکر ایٔر نے کہا تھا کہ چین نے 1962 میں ہندوستان پر ‘مبینہ طور پر’ حملہ کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ یہ کوئی سادہ سا بیان نہیں ہے۔ یہ ہندوستان کی سالمیت کی توہین ہے اور ہندوستانی فوج کی بہادری اور قربانی کی توہین ہے۔ انہوں نے کانگریس صدر ملک ارجن کھڑگے اور کانگریس لیڈر راہل گاندھی سے اس پر اپنی وضاحت دینے کا مطالبہ کیا، کیونکہ مسٹر ائیر کا بیان کھڑگے اور راہل گاندھی کی رضامندی کے بغیر نہیں آسکتا ہے۔بی جے پی کے ترجمان نے کہا کہ ہندوستان، چین جنگ میں 1400 ہندوستانی فوجی شہید، 1700 فوجی لاپتہ اور 4000 سے زائد ہندوستانی فوجی جنگی قیدی بنائے گئے تھے ۔ ائیر کو بتانا چاہیے کہ کیا یہ سب کچھ نام نہاد حملے میں ہوا؟ انہوں نے کہا ”مسٹر ایٔر غدار ہیں۔ وہ مسٹر راہل گاندھی کی زہریلی سوچ کی عکاسی کرتے ہیں جو ڈوکلام حملے کے وقت چینی سفارت خانے میں ہکا نوڈلس کھا رہے تھے۔ بھاٹیہ نے کہا کہ اس طرح کے بیانات انتخابات کے وقت دیے جا رہے ہیں اور حال ہی میں ائیر نے بھی کہا تھا کہ پاکستان کے پاس بھی ایٹمی بم ہے۔ اب ائیر چین کی حمایت کر رہے ہیں۔ آخر انتخابات کے وقت کانگریس ہمارے دشمن ممالک کو کیا سگنل دے رہی ہے؟ انہوں نے کہا کہ ساتویں مرحلے کی ووٹنگ کے بعد ہندوستان مخالف اس ٹاور کو اکھاڑ پھینکا جائے گا۔بی جے پی کے ترجمان نے کانگریس سے سوال کیا کہ کانگریس اور چینی کمیونسٹ پارٹی کے درمیان 2008 میں طے پانے والے معاہدے کو کیوں ظاہر نہیں کیا گیا۔ اس معاہدے میں ایسا کیا ہے کہ مسٹر راہل گاندھی چین پر تنقید کرنے کو بالکل تیار نہیں ہیں۔ اس کے برعکس ان کا کہنا ہے کہ ہندوستانی فوج کو چینی فوج نے شکست دی جبکہ سچ یہ ہے کہ ہندوستانی فوج کو نہ تو شکست ہوئی ہے اور نہ ہی شکست دی جا سکتی ہے۔ بی جے پی کے ترجمان نے کہا کہ اگر گاندھی سچے ہندوستانی ہیں تو انہیں چین کا بگل بجانا بند کر دینا چاہئے اور چین کو آئینہ دکھانا چاہئے۔