پرائیویٹ کنٹریکٹرس یونین 5دنوں سے احتجاج پر

 رام بن//ضلع کے سرکاری محکموں کے ساتھ کام کر رہے پرائیویٹ کنٹریکٹرس ایگزیکٹو انجینئر صحت عامہ، تعمیرات عامہ کے دفاتر کے سامنے اپنے عرصۃ دراز کے مطالبات کو لیکر احتجاج کر رہے ہیں۔یہ احتجاجی کنٹر یکٹر گذشتہ سال انجام دی گئی کاموںکی اپنے بلوں کی عدم ادائیگی پر گُذشتہ 5 دنوں سے احتجاج کر رہے ہیں۔ان لوگوں کی مبینہ شکایت ہے کہ سرکار غیر ضروری روکاوٹیں پیدا کرکے ترقیاتی کاموں کے ورک کلچر میں رخنہ ڈال رہی ہے۔کنٹریکٹروں کی ہڑتال سے ضلع بھر میں ترقیاتی کام بند ہوئی ہیں۔کنٹریکٹرس یونین کے صدر عبدالوحید نے کشمیر عُظمیٰ کو بتایا کہ یہ حیرانی کی بات ہے کہ2014 کی  واجب الادا  بلیں ابھی تک واگُذار نہیںکی گئی ہیں۔کنٹریکٹروں کی یہ بھی شکایت ہے کہ بلوں کی عدم ادائیگی کی وجہ سے وہ اپنا قرضہ نہیں چُکا سکے ہیں جو انہوںنے کاموں کی تکمیل کے لئے مارکیٹ سے اُٹھایا ہے۔یونین کے نائب صدر شام سنگھ کٹوچ نے کہا کہ ہم بلوں کی ادائیگی کے لئے جگہ جگہ گھومتے ہیں لیکن بجائے ادائیگی کے ہمیں فقط یقین دہانیاں مل رہی ہیں۔انہوںنے کہا کہ جب تک ہمارے پُرانی بلوں کی ادائیگی نہیں ہوتی ہے تو تب تک ہم اپنا احتجاج جاری رکھیں گے۔