میرواعظ کی خانہ نظربندی کوختم کیا جائے :متحدہ مجلس علماء

سرینگر//متحدہ مجلس علماء نے میرواعظ مولوی عمرفاروق کی خانہ نظربندی اور ان پر عائد پابندیوں کو فوری طورہٹانے کامطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ میرواعظ کی مسلسل نظر بندی کے جموں کشمیرکے سب سے بڑے دینی اورروحانی مرکزجامع مسجد سرینگرمیں گزشتہ82ہفتوں سے وعظ وتبلیغ نہیں ہورہا ہے۔ایک بیان کے مطابق متحدہ مجلس علماء کے اجلاس میں جملہ اراکین نے کہا کہ پارلیمنٹ میں وزیرداخلہ کے حالیہ بیان کہ جموں کشمیرمیں کوئی بھی گھر میں نظر بند نہیں ہے ،کے باوجودمیرواعظ عمرفاروق کوخانہ نظربند رکھا گیا ہے اورانہیں گھر سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہے ۔بیان کے مطابق اجلاس میں کہا گیا ہے کہ مسلمانوں کا عظیم ترین مہینہ رجب المرجب جومعراج النبیؐ کا مہینہ ہے اوراسی کے ساتھ ماہ شعبان اور ماہ رمضان کی بھی آمد آمد ہے ،کے تناظر میں میرواعظ پر عائد پابندیوں کو فوری طور ہٹایاجائے تاکہ وہ جامع مسجد سرینگر میں حسب قدیم دینی ودعوتی سرگرمیاں انجام دے سکیں۔اجلاس میں اراکین نے وادی میں منشیات کے پھیلائوپر بھی تشویش ظاہر کی اورکہا کہ ایک مہم کے تحت مختلف قسم کی منشیات کے پھیلائوکو وادی میں فروغ دے کرہماری نوجوان نسل کو فالج ذدہ بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ 
 
 
 

خانہ نظربندی باعث تشویش :مولانا ہمدانی

سرینگر//جمعیت ہمدانیہ کے سربراہ مولوی ریاض ہمدانی نے میرواعظ کشمیر مولوی عمر فاروق کی مسلسل خانہ نظربندی اورانہیں گزشتہ اٹھارہ ماہ سے وعظ وتبلیغ سے روکنے پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ مذہبی آزادی کے سراسر منافی اور دینی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے جوناقابل قبول ہے۔ایک بیان کے مطابق جمعیت کے ایک اجلاس میں حکومت سے مطالبہ کیاگیا کہ میرواعظ مولوی عمر فاروق کو فوری طور رہا کیاجائے اورجامع مسجدمیں وعظ وتبلیغ کرنے کی انہیں اجازت دی جائے۔