مزید خبرں

ہائی سکول کنڈرہ کادرجہ ہائرسکینڈری کرنے کامطالبہ

مقامی لوگوں کااحتجاج ،جائزمانگ پوری کرنے کی استدعا

جموں//ریاسی کے گاوں کنڈرہ کے ہائی سکول کادرجہ ہائرسکینڈری کرنے کی مانگ کولے کرمقامی لوگوں اورسکول کے بچوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔اس دوران مظاہرین نے کہاکہ جب تک ہائی سکول کنڈرہ کادرجہ نہیں بڑھایاجائے گاتب تک عوام اپنی جدوجہدجاری رکھے گی۔انہوں نے کہاکہ کنڈرہ سکول سے منسلک چارپنچایتوں کے لوگوں نے متعلقہ حکام کوپہلے ہی کئی بارمطلع کیاہے کہ یہ عوام کی جائزمانگ ہے لیکن اس پرحکام کوئی توجہ نہیں دے رہاہے جس کی وجہ سے کنڈرہ ،ڈیرہ بابابندہ ،وغیرہ پنچایتوں کے لوگوں حکام سے مایوس ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہم لوگ آخرکب تک ظلم سہتے رہیں گے۔انہوں نے کہاکہ ہمارے بچوں کوہرروزتیس کلومیٹرکاسفرکرکے ریاسی ہائرسکینڈری سکول جاناپڑتاہے جوکہ غریب عوام کےلئے پریشانی کاباعث ہے۔انہوں نے کہاکہ بچوں کاکافی ساراوقت سکول آنے جانے میں ضائع ہوجاتاہے جس کی وجہ سے ان کی تعلیم بری طرح متاثرہوتی ہے اوران کامستقبل داﺅپرلگ جاتاہے۔ لوگوں نے کہاکہ یہاں پرلیڈرانتخابات کے دوران ہی آتے ہیں اورووٹ حاصل کرکے دوبارہ نہیں آتے جس کی وجہ سے عوام کے مسائل اورجائزمانگیں جوں کی توں ہی پڑی رہتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہائی سکول کنڈرہ کادرجہ بڑھاناعوام کی جائزمانگ ہے جس کوحکومت کوبلاتاخیرپوراکرناچاہیئے۔ لوگوں نے ریاستی حکومت اورمتعلقہ حکام سے پرزورمانگ کی ہے کہ ہائی سکول کنڈرہ کادرجہ بڑھاکرہائرسکینڈری کیاجائے تاکہ علاقہ کے بچوں کی تعلیم متاثرنہ ہواوروہ دسویں کے بعدکی اعلیٰ تعلیم جاری رکھ سکیں۔
 
 
 

جموں یونیورسٹی کے ایس سی /ایس ٹی ملازمین کااجلاس

 ترقیوں میں ریزرویشن کی بحالی کاخیرمقدم کیا

جموں//جموں یونیورسٹی ایس سی /ایس ٹی ایمپلائزایسوسی ایشن کااجلاس یہاں یونیورسٹی کیمپس میں آرایل کیتھ کی صدارت میں منعقدہواجس میں مختلف ڈیپارٹمنٹوں میں کام کررہے ایس سی /ایس ٹی ملازمین نے شرکت کی۔اس دوران سپریم کورٹ کی جانب سے حال ہی میں ایس سی /ایس ٹی ملازمین کی ترقی میں ریزرویشن بحال کرنے کے فیصلے کاخیرمقدم کیاگیا۔مقررین نے کہاکہ یہ تاریخی فیصلہ ہے جس کی جتنی ستائش کی جائے کم ہے۔انہوں نے کہاکہ اس فیصلے سے ایس سی/ایس ٹی طبقہ کے حقو ق بحال ہوئے ہیں ۔اس دوران میٹنگ میں RUSA کے دوسرے مرحلے میں سوکروڑروپے کی گرانٹ ملنے پریونیورسٹی کومبارکبادپیش کی گئی۔اس دوران میٹنگ میں سرجیت سنگھ ہیر، دھرم پال ،ملکھی رام ملہوترہ، منظوراحمد، سکھدیو بھگت، کنج لال بھگت، اشوک کمار سنتال، تھوڑورام منگلوودیگران بھی موجودتھے۔