مزید خبرں

پیپلز مومنٹ کی جانب سے نزول قرآن کانفر نس کا انعقاد

مقررین نے امت میں انتشار کو قرآن سے دوری کا نتیجہ قرار دیا

راجوری// گزشتہ روز جموں کشمیر پیپلز مومنٹ کی جانب سے تھنہ منڈ ی میں بہروٹ کے مقام پر ایک روح پرور  نزول قرآن کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں مختلف مکاتبِ فکر سے تعلق رکھنے والے علماء￿  اکرام اور دانشوروں نے عصر حاضر میں قرآنی تعلیمات کی اہمیت اور افادیت پر سیر حاصل گفتگو کی۔یہاں جاری بیان کے مطابق کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علماء￿  اکرام اور دانشوروں نے مسلمانوں کو ہر طرح کے مکتبی اور مسلکی تعصبات سے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ایک بین الاقوامی سازش کے تحت مسلمانوں کو مختلف مسالک اور مکاتب میں تقسیم کر کے ایک دوسرے کے خلاف اکسایا اور بھڑکایا جا رہا ہے تاکہ امت مسلمہ کے اتحاد اور اتفاق کو پارہ پارہ کیا جائے۔علماء￿  اکرام نے کہا کہ امّتِ مسلمہ کے مابین عدم رواداری اور باہمی منافرت کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ ہم لوگ قرانی تعلیمات سے دور ہوتے جا رہے ہیں۔علماء￿ ِ اکرام نے کہا کہ مسلمانوں کو اللہ کی رسی یعنی قرآنِ پاک کو مضبوطی سے تھامے رکھنا چاہیے اور ہر طرح کی تفرقہ بازی اور بٹوارے سے اجتناب کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ اللہ کا قرآن اور نبی کی حدیث دو ایسی چیزیں ہیں جنہیں بنیاد بنا کر مسلمانوں میں اتفاق اور اتحاد قائم کیا جا سکتا ہے۔ مقررین نے مسلمانوں کے مابین موجود بگاڑ اور انتشار کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ ان تمام مسائل کی جڑ امت مسلمہ کی قرآن سے دوری ہے۔ انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ کومکتبی اور مسلکی تنگ نظری سے باہر نکل کر قرآن و حدیث سے رشد و ہدایت حاصل کرنی چاہیے۔کانفرنس سے جموں کشمیر پیپلز مومنٹ کے چیرمین میر شاہد سلیم کے علاوہ جن علماء￿  اکرام اور دانشوروں نے خطاب کیا ان میں مفتی عبدالرحیم ، غلام نبی شہباز، حافظ مقصود احمد ڈار، مفتی ریاض احمد، عبدالرشید فدا، بشیر احمد میر، مولانا عابد رحمانی، اور نثار احمد مرزا شامل ہیں۔
 

سیول سوسائٹی پونچھ نے رہبر تعلیم اساتذہ کے مطالبا ت حل کرنے پرزوردیا

پونچھ//رہبر تعلیم اساتذہ کی مانگوں کو جائزقرار دیتے ہوئے پونچھ سول سوسائٹی کے ممبران نے ان کی حمایت کا اعلان کیاہے۔پونچھ میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مختلف تنظیموں سے تعلق رکھنے والے نمائندوں نے حکومت سے اپیل کی کہ ان کے مطالبات کو فوری طورپر پورا کیاجائے۔سرسوتی کلا کیندر کے چیرمین اور مشہور ناظم پردیپ کھنہ نے کہا کہ رہبر تعلیم اساتزہ رمضان میں فطرانہ نہیں ہرجانا مانگ رہے ہیں جو انہیں ملنا چاہئے۔کھنہ نے کہا کہ اگر یہ اساتذہ سپریم کورٹ چلے گئے تو کام کے بدلے ہرجانہ  کے قانون کے تحت انہیں ان کا حق دیناہوگا۔پردیپ کھنہ نے مزید کہا کہ ایک استاد 45000جبکہ رہبر تعلیم ٹیچر 5000روپے پر کام کررہاہے اور یہ تنخواہ بھی اسے وقت پر نہیں ملتی جو ناانصافی کی بات ہے۔گوجر بکروال ایمپلائز ایسو سی ایشن کے صدر چوہدری محمد اسد نعمانی نے کہا کہ ریاست اور ملک کا مستقبل تیار کرنے والے یہ با وقار اساتذہ سڑکوں پر اترنے کے لئے کیوں مجبور ہورہے ہیں جس پر حکومت کو سوچناہوگا۔انہوں نے کہا کہ ان کی تنخواہیں عید سے قبل واگزار کیا جانا چاہئے اور ساتھ ہی ڈی لنک کی مانگ کو بھی پورا کیا جانا چاہئے تاکہ ان کی تنخواہیں واگزار ہوسکیں۔اسد نعمانی نے کہا کہ رہبر تعلیم اساتذ ہ جنہوں نے بینکوں سے قرض لئے ہوئے ہیں جو تنخواہ نہ ملنے کی وہ سے ادا نہیں ہورہا اور قرض پر سود بڑھتاجارہاہے۔سردار سرجن سنگھ سیکریٹری گوردوارہ پربھندک کمیٹی نے  کہا کہ حکومت45000کنبوں کے جذبات سے کھیل رہی ہے جو مناسب نہیں۔سرجن سنگھ نے کہا کہ اس وقت ریاست اور مرکز میں ایک ہی جماعت کی حکومت ہے اور ایسے میں بھی یہاں کے اساتذہ کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔سرفراز میر چیئرمین سرسید ایجوکیشن مشن نے تمام مطالبات کو حل کئے جانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ یہاں موجود تمام تنظیمیں رہبر تعلیم اساتذہ کے ساتھ ہیں۔میر نے کہا کہ عید سے قبل ان کے مطالبات کو حل کیا جانا چاہئے۔نصرت شاہ چیئرمین ایس آر کے پیس فاؤنڈیشن نے کہا کہ اساتذہ نے اس بات پر زو ر دیاکہاساتذہ کے تمام مسائل ترجیحی بنیاد پر حل کئے جائیں اور ان کے ساتھ سوتیلا سلوک نہ روارکھاجائے۔
 
 

پولیس تھانہ منڈی سے ملزم فرار 

عشرت حسین بٹ

منڈی//چوری کے الزام میں گرفتار ایک ملزم سنیچر کی شام پولیس اسٹیشن منڈی سے پولیس کی آنکھوں میں دھول جھونک کر فرار ہو گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق منڈی پولیس نے گزشتہ دنوں منڈی کے ہی ایک علاقہ سے چوری کرتے ہوئے اشتیاق احمد ولد باغ حسین ساکنہ سرنکوٹ کوگرفتار کرلیا جس پر ایک کیس ایف آیی آر نمبر/2017 71 زیر دفعات 457/380آر پی سی منڈی پولیس اسٹیشن میں درج ہے جو گزشتہ روزپولیس تھانہ سے فرار ہو گیا۔ذرائع نے بتایا کہ سنیچر کی شام جب پولیس اہلکار پولیس تھانہ منڈی میں روزہ افطاری میں مشغول تھے توملزم تھانہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ مذکورہ ملزم کو پولیس نے راجپورہ منڈی میں ایک گھر سے چوری کرتے ہوئے زنانہ لباس میں گرفتار کیا۔رابطہ کرنے پر ایڈیشنل ایس پی پونچھ انوار الحق نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ چوری کے الزام میں گرفتار شدہ شخص گزشتہ شب پولیس تھانہ منڈی سے فرار ہو گیا جس کی تلاش جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں پولیس تھانہ منڈی میں ایک کیس ایف آئی آر نمبر 50/2018 زیر دفعات 233/244درج کر لیا گیا ہے۔
 

ٹائلیں بچھانے پر متعلقہ حکام کے تئیں اظہار تشکر

حسین محتشم

پونچھ//محلہ کھوڑی ناڑ وارڈ نمبر آٹھ میں سڑکوں کی خستہ حالت تھی جن کی وجہ سے مقامی لوگ پریشان تھے۔مقامی شہریوں کے مطابق اس سلسلے میں لوگوں نے ایم ایل سی پردیپ شرما سے بات کی جنہوں نے محلہ کا دورہ کر کے وہاں جائزہ لیا اور کچھ ہی دنوں میں سڑکوں کی مرمت اور ٹائل ورک کر نے کا سنگ بنیاد رکھا جس کے بعد تیز رفتاری سے اس محلے کی مختلف سڑکوں پر کام مکمل کیا گیا اور بقایا سڑکوں پر کام جاری ہے۔محلہ کی ایک خاتون ستویر کور نے محکمہ میونسپل کونسل پونچھ اور ایم ایل سی پردیپ شرما کا شکریہ اداکرتے ہوئے  کہا کہ پردیپ شرما نے عوام کی مشکلات کو سمجھتے ہوئے فوری اقدامات اٹھائے۔ماسٹر ہرجیت سنگھ نے بھی ایم ایل سی کی سراہنا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ محلہ کی گلیوں میں سے جن کاکام ابھی بقایا ہے ،وہ بھی انجام دیاجائے گا۔
 
 
 

منشیات مخالف مہم پر پولیس کی ستائش 

 
تھنہ منڈی //ممنوعہ ادویات کا استعمال کرنے والوں پر شکنجہ کسنے پر تھنہ منڈی کی متعدد تنظیموں نے پولیس انتظامیہ کی ستائش کی ہے۔ تھنہ منڈی کی سیاسی وسماجی تنظیموں کے ارکان نے کہا کہ ممنوعہ ادویات کا استعمال یا منشیات کا دھندا کرنے والے افراد یا گروہ نئی نسل کے دشمن ہیں جن کے خلاف اسی طرح کی کارروائی کی ضرورت ہے جو پولیس کررہی ہے۔ ان کاکہناتھاکہ سبھی کو پولیس سے تعاون کرکے ان افراد کا پردہ فاش کرنا چاہئے۔ تھنہ منڈی بیوپار منڈل صدر حاجی غلام محی الدین عارف ، مغل روڈ جوائنٹ ایکشن کمیٹی  کے قائم مقام چیئر مین عبدالر شید شال اور ٹریڈ یونین لیڈر طاہر احمد شال نے کہاکہ پولیس کی کارگردگی قابل ستائش ہے۔ انہوں نے کہا کہ وکلاء￿  برادری کو چاہئے کہ ایسے افراد جو ممنوعہ ادویات کا استعمال کرتے ہوں ،کی عدالت سے ضمانت میں مدد نہ دی جائے اوراس سلسلے میں پولیس کو تعاون پیش کیاجائے۔
 

عید اور شب قدر 

ضلع راجوری میں انتظامات کو حتمی شکل دی گئی

راجوری//ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری ڈاکٹر شاہد اقبال چوہدری کی قیادت میں ایک میٹنگ منعقد ہوئی جس دوران عید الفطر اور شب قدر کے سلسلے میں کئے گئے انتظامات کو حتمی شکل دی گئی۔اس موقعہ پر ڈپٹی کمشنر نے افسران کو ہدایت دی کہ وہ اضافی اقدامات کرکے انتظامات کریں اور اس بات کو یقینی بنایاجائے کہ لوگوں کو ان تہواروں کے مواقع پر تمام تر سہولیات فراہم ہوں اور کسی طرح کی کوئی پریشانی درپیش نہ ہو۔انہوں نے محکمہ امور صارفین کے افسران کو ہدایت دی کہ وہ راشن،کھانڈ اور رسوئی گیس وغیرہ فراہم رکھیں۔انہوں نے کہاکہ شب قدر اور عید کے موقعہ پر بجلی کی کٹوتی نہ کی جائے جبکہ محکمہ پی ایچ ای بھی اس بات کویقینی بنائے کہ لوگوں کو پانی فراہم ہو۔ڈپٹی کمشنر نے افسران کو ہدایت دی کہ وہ مارکیٹ میں قیمتوں کو اعتدال پر رکھنے کیلئے مارکیٹ چیکنگ کریں۔انہوں نے کہاکہ ایسے دکانداروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائیگی جو قوانین کی خلاف ورزی کے مرتکب ہوں۔انہوں نے کہاکہ اشیاکی فروخت مقررہ قیمتوں پر ہونی چاہئے۔اس دوران ایمبولینس اور فائر سروس گاڑیوں کی فراہمی کے منصوبے کو بھی حتمی شکل دی گئی جبکہ سیکورٹی انتظامات پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔اسی طرح کی میٹنگیں نوشہرہ،کالاکوٹ،سندر بنی اور تھنہ منڈی و کوٹرنکہ میں بھی ہوئیں۔
 

تھنہ منڈی میں ’حسن نعت گوئی‘کا مقابلہ

راجوری//راجوری پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن کی جانب سے مسلم ایجوکیشنل ٹرسٹ ہائر سکنڈری اسکول تھنہ منڈی میں مقابلہ"حسن نعت گوئی" کا انعقاد کیا گیا جس میں  مختلف پرائویٹ تعلیمی اداروں کے طلبا نے شرکت کی۔اس دوران سرور کائنات حضرت محمد مصطفے صلی اللہ علیہ وسلم کی بارگاہ میں گلہائے عقیدت نچھاور کئے گئے۔محفل کی صدارت حافظ امجد خان نائب مہتمم مدرستہ التوحید تھنہ منڈی  نے کی جبکہ حاجی بشیر احمد شال مہمان خصوصی تھے۔اس موقعہ پر چیئرمین مسلم ایجوکیشنل ٹرسٹ خورشید بسمل نے کہاکہ فکر و خیال کی پاکیزگی،زبان و ادب کی شیرینی اور عشق رسول کی چاشنی کانام نعت ہے۔اس دوران حافظ محمد ارشد متعلم جامعہ ضیا الاسلام منجاکوٹ کو پہلی جبکہ شاہد مرزا متعلم الائٹ پبلک سکول ساج کو دوسری پوزیشن کیلئے منتخب کیاگیا۔اس سلسلے کے ریاستی سطح کے پروگرام کا اہتمام تیرہ جون کو سرینگرمیں کیاجائے گا۔اس موقعہ پر نظامت کے فرائض ادارہ کے سینئر استاد عمران سائل نے انجام دیئے۔آخر پر بچوں میں انعامات تقسیم کئے گئے۔
 
 

فوج کی طرف سے بدھل میں افطار پارٹی کا اہتمام

بدھل//فوج کی راشٹریہ رائفل کی طرف سے بدھل کے سموٹ علاقے میں افطار پارٹی کا اہتمام کیاگیاجس میں مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔اس موقعہ پر سیول و پولیس انتظامیہ کے افسران بھی موجو دتھے۔اس دوران روزہ داروں نے افطاری کی اور امن و امان کیلئے دعائیں کی گئیں۔
 

اضافی مسافر کرایہ 

ایگزیکٹو مجسٹریٹ کے ساتھ بدسلوکی،پولیس شکایت درج 

سمت بھارگو

راجوری//راجوری پونچھ میں چلنے والی مسافر گاڑیوں میں اضافی کرایہ کی وصولی ایک عام سی بات ہوگئی ہے اور ڈرائیوروں کی طرف سے کسی بھی معاف نہیں کیاجاتا۔اضافی کرایہ کاشکار ایک ایگزیکٹو مجسٹریٹ کو بھی ہوناپڑاجن کے ساتھ بدسلوکی سے بھی پیش آیاگیا جس پر وہ پولیس کے پاس شکایت درج کروانے پر مجبور ہوئے ہیں۔سرنکوٹ کے لسانہ علاقے میں تعینات نائب تحصیلدار محمد رشید نے بتایاکہ سنیچر کو وہ پونچھ سے ایک بس پر سوار ہوکر لسانہ آرہے تھے جس دوران کنڈیکٹر نے پینتیس روپے کرایہ چارج کیاجس پر اعتراض کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کرایہ بتیس روپے ہے اور ان سے کیوں اضافی کرایہ وصول کیاجارہاہے۔انہوں نے کہاکہ اس پر ڈرائیور اور کنڈیکٹردونوں نے بس میں ان کے ساتھ بدسلوکی کی۔انہوں نے اس سلسلے میں پولیس کے پاس شکایت درج کروائی ہے جس میں بتایاگیاہے کہ وہ ایک ایگزیکٹو مجسٹریٹ ہیں اور ایک عام شہری بھی کرایہ کے بارے میں جانکاری حاصل کرسکتاہے تاہم ان کے ساتھ غیر پارلیمانی زبان کا استعمال کیاگیا۔ان کاکہناتھاکہ اگر ایک ایگزیکٹو مجسٹریٹ کے ساتھ ایسا رویہ اختیار کیاجاسکتاہے تو پھر عام لوگوں کا کیا حال ہوگا۔انہوں نے بتایاکہ انہوں نے اس سلسلے میں پولیس کے پاس شکایت درج کروائی ہے۔رابطہ کرنے پر ایڈیشنل ایس پی راجوری انوار الحق نے بتایاکہ پولیس کو شکایت موصول ہوئی ہے اور اس پر تحقیقات کی جارہی ہے۔
 

جاوید رانا کا دورہ ? لوہر دھرانہ

محکمہ پی ایچ ای کو ہنگامی بنیاد پر سپلائی فراہم کرنے کی ہدایت

مینڈھر// مسلسلخشک سالی کی وجہ سے پورے سرحدی خطہ میں عوام کو پینے کے صاف پانی کی شدید قلت ہے ،قدرتی چشمے اور چھوٹے بڑے ندی نالے مکمل طور پر خشک ہو چکے ہیں ،اب اس دشوار گزار علاقہ میں آباد عوام کے لئے پینے کے پانی کا ذریعہ زیرِ زمین آبی زخائرواحد متبادل ہے۔یہاں جاری بیان کے مطابق اِن خیالات کا اظہار نیشنل کانفرنس کے مرکزی سکریٹری اور ممبر قانون ساز اسمبلی مینڈھر جاوید احمد رانا نے محکمہ پی ایچ ای کیآفیسران کے ہمراہ پنچایت حلقہ دھرانہ اپرو لوہر اور پنچایت حلقہ چھجلہ اپر میں اپنے  دورہ کے دوران مختلف عوامی وفود سے خطاب کے دوران کیا۔اْنہوں نے کہا کہ ان سرحدی دیہات میں بسنے والی عوام کو پینے کے صاف پانی کی شدید قلت کو محسوس کرتے ہوئے نبارڈ سکیم کے تحت چار کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والا ایک بور ویل منصوبہ منظور کروایاگیاہے ،جس سے محلہ تھملوٹ،محلہ ملکاں،محلہ جٹاں،محلہ پتری،محلہ مغلاں،محلہ قاضیاں،محلہ درگیاں،محلہ سدھناں اور محلہ گوجراں کے عوام کو فائدہ ملے گا۔انہوں نے کہاکہ دھرانا میں زیر تعمیر بورویل سکیم کو فعال بنانے کیلئے اضافی رقوم منظور کروائی گئی ہے جس سے دھرانا اور ڈیری ڈبسی کے عوام کو پانی ملے گا۔انہوں نے محکمہ کے افسران کو ہدایت دی کہ وہ پانی کے بحران پر قابو پانے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کریں اور کوتاہی برتنے والوں کو معاف نہیں کیاجائیگا۔
 
 

ناری نکیتن میں افطاری پارٹی کااہتمام

جاوید اقبال

مینڈھر//آل انڈیا کانگریس کمیٹی کی ممبر و ریاستی سکریٹری پروین سرور خان نے ناری نکیتن مینڈھر میں ایک پروگرام کا انعقاد کرکے غریب اور بے سہارا بچیوں کو روزہ افطار کروایا۔اس دوران ناری نکیتن مینڈھر کی انچارج کے علاوہ سٹاف ممبران بھی موجود تھے۔پروین سرور خان نے لڑکیوں سے پڑھائی کی تلقین کرتے ہوئے کہاکہ ان کی دعاہے کہ وہ اعلیٰ سے اعلیٰ عہدوں پر فائز ہوں تاکہ کل کو کسی غریب اور بے سہارا کی مدد انجام دے سکیں۔ناری نکیتن کی بچیوں نے پروین سرور خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے نالہ مینڈھری پر پل تعمیر کروانے کی اپیل کی اور کہا کہ بارشوں کے موسم میں انہیں کئی کلو میٹر پیدل سفر کرنا پڑتا ہے۔
 
 

پہاڑی طبقہ کے ساتھ انصاف کیاجائے:بیوپار منڈل مینڈھر

جاوید اقبال

مینڈھر//بیوپار منڈل مینڈھر کے کئی عہدیداران نے حکومت کو تقنید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ پہاڑی طبقہ کو اسکا حق دینے کے لئے ٹال مٹول کی پالیسی اپنائی جارہی ہے اور طبقہ کے لوگوں کو صرف ووٹ کے نام پر استعمال کیا جا رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کے دنوں میں ہر سیاسی پارٹی کے لیڈران ان سے کئی قسم کے وعدے کرتے ہیں لیکن برسر اقتدار آنے کے بعدسب کچھ فراموش کردیاجاتاہے اورپھر اگلے چھ سال بعد شیڈیول ٹرائب درجہ و دیگر معاملات یاد آتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اب پہاڑی قوم ان لیڈران کے جھوٹے وعدوں میں نہیں آنے و الی ہے اور اب کوئی نہ کوئی لائحہ عمل تیار کرناہی ہوگا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ریاستی حکومت نے تین فیصد ریزرویشن کے لئے ایک بل پاس کرکے ریاستی گورنر کو بھیجا گیا تھا جو گورنر نے واپس حکومت کو بھیجا تھا لیکن کئی مہینے گزر جانے کے بعد وہ فائل پتہ نہیں کس دفتر کی دھول چاٹ رہی ہے ا ور واپس گورنر کو نہیں بھیجی گئی جس سے صاف ظاہر ہے کہ حکومت بھی گورنر کے ساتھ ملی ہوئی ہے اور پہاڑی طبقہ کے ساتھ انصاف نہیں کرنا چاہتی۔انہوں نے سرکار کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اگر چند دنوں کے اندر فائل واپس گورنر کے پاس بھیج کر تین فیصد ریزرویشن نہیں دلائی گئی تووہ آنے والے پارلیمانی انتخابات کا بائیکاٹ کرنے کا سوچیں گے اور بڑے پیمانے پر احتجاج کرکے پیدل مارچ کرکے سرینگر میں سیکریٹریٹ کا گھیرائو کیاجائے گا۔اس سلسلہ میں بیوپار منڈل کے جنرل سکریٹری خورشید احمد نے میڈیٰا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جب بھی پہاڑی طبقہ کے لوگوں کو ان کی ضرورت پڑے گی تووہ اس سلسلہ میں بیوپار منڈل کی میٹنگ کرکے کوئی لائحہ عمل بنائیں گے اور اپنا حق لینے کے لئے کچھ بھی کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ حالات خراب ہونے سے قبل ہی پہاڑی طبقہ کے مطالبات پورے کئے جائیں۔