رجسٹرڈ کارکنوں میں62کروڑ روپے کی مالی امدادتقسیم

 جموں// کمشنر سیکرٹری محنت و روزگار سریتا چوہان نے یہاں محکمہ روزگار کے کام کاج کاجائزہ لینے کے لئے سول سیکرٹریٹ میں ایک میٹنگ منعقد کی۔میٹنگ کے دوران کمشنر سیکرٹری نے کہا کہ رواں سال فروری تک بی او سی ڈبلیو ڈی کے تحت فعال رجسٹرڈ کارکنوں میں 62 کروڑ روپے کی مالی امداد کے طور پر تقسیم کیا گیا ہے۔ اُنہوں نے مزید کہاکہ 57,566 کیسوں کو مختلف فلاحی منصوبوں کے تحت تعلیم کی امداد ، طبی امداد ، دائمی مریض سے متعلق امداد ، معذوری کی مدد ، وفات سے متعلق معاملات ایک ہی وقت میں نمٹائے گئے جب کہ مختلف لیبر ایکٹس کے تحت 2,649 معائینے بھی کئے گئے ۔اس کے علاوہ اِمسال   1.60 کروڑ روپے کے ہدف کے مقابلے میں 1.70 کروڑ روپے بطور محصول ہوا۔اِس موقعہ پر کمشنرسیکرٹری اَپنے خیالات کا اِظہار کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ محنت مزدور طبقے کی فلاح و بہبود اور مزدوروں کو بااختیار بنانے کے لئے پُرعزم ہے تاکہ وہ جموں و کشمیر کی  تعمیر میں اَپنا رول اَدا کرسکیں۔عدالتی مقدمات کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے کمشنر سیکرٹری نے زیرِ اِلتوا ٔمقدمات کو جلد از جلد نمٹانے پر زور دیا۔ اُنہوں نے افسران سے کہا کہ وہ کارکنوں کے عدالتی معاملات کو آسان بنانے کے لئے ایک طریقۂ کار وضع کریں ۔انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر حکومت نے فلاحی اِقدامات کو عملی جامہ پہنانے کے لئے ایک عمدہ ادارہ سازی کا طریقہ کار وضع کیا ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ کارکنان کو حکومت کے زیر اہتمام فلاحی سکیموں سے ہر طرح کے فوائد فراہم کئے جائیں۔میٹنگ میں لیبر کمشنر عبدالرشید وار ، ڈپٹی لیبر کمشنر کشمیراحمد حسین بٹ ،صوبہ کشمیر کے اسسٹنٹ لیبر کمشنروں اور دیگر متعلقہ اَفسران نے شرکت کی۔میٹنگ کے دوران مختلف فلاحی منصوبوں کے عملانے کے سلسلے میں سیر حاصل بحث ہوئی۔