جموں کشمیر میں’بلیک فنگس‘ وبائی بیماری قرار

سرینگر //جموں و کشمیر سرکار نے بلیک فنگس کو وبائی بیماری قرار دیا ہے۔ جموں و کشمیر سرکار نے ایپڈمیک ایکٹ 1897 کی شق 2کا استعمال کرکے بلیک فنگس کو وبائی بیماری قرار دیا ہے۔سرکاری نوٹیفکیشن ملک میں بلیک فنگس کو وبائی بیماری قرار دینے کے چند دن بعد سامنے آئی ہے ۔ حکم نامہ میںاس حوالے سے تمام جانکاری ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کی جانب سے فراہم کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ جموں و کشمیر سرکار کی جانب سے بلیک فنگس کو وبائی بیماری قرار دینے کیلئے جاری کئے گئے ایس او 182میں بتایا گیا ہے کہ جموں و کشمیر کے تمام سرکاری اسپتال اور نجی طبی ادارے بلیک فنگس کی سکرینگ، عالج و معالجہ اور اس کو قابو کرنے کیلئے جاری کئے گئے قوائد و ضوابط پر عمل کرنا کے پابند ہونگے۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ کوئی بھی ادارہ ، شخص یا کوئی بھی تنظیم بغیر ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کی اجازت کے بغیر بلیک فنگس کے بارے میں کوئی بھی جانکاری فراہم نہیں کریں گے۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر اور ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز جموں چیف میڈیکل آفیسر کی سربراہی میں ضلع سطحی کمیٹیاں تشکیل دیں گے جن میں شعبہ انٹرنل میڈیسن، شعبہ امراض چشم، شعبہ امراض ، شعبہ ای این ٹی کے علاوہ وبائی بیماریوں کے ایک ماہر ڈاکٹر کو بطور ممبر شامل کیا جائے گا۔ حکم نامہ میں بتایا گیا ہے کہ یہ کمیٹیاں ہر ضلع میں سرکاری قوائد و ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے افراد کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے نوٹس جاری کریں گے۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ اگر کوئی بھی شخص کسی بھی خلاف ورزی کا مرتکب پایا گیا تو وہ اس کو جرم تصور کرکے انکے خلاف انڈین پینل کوڈ کی دفعہ 188کے تحت کاروائی کی جائے گی۔