بانہال میں لیبارٹریوں کو سربمہر کرنے کی سراہنا

 بانہال // بانہال سے تعلق رکھنے والے عام لوگوں اور سماجی کارکنوں نے انسانی زندگیوں اور صحت سے کھلواڑ کرنے والے نام نہاد لیبارٹریوں کے خلاف محکمہ صحت کی طرف سے کی گئی کاروائی کی سراہنا کی ہے اور محکمہ صحٹ اور چیف میڈیکل افسر رام بن سے اپیل کی گئی ہے کہ ہمارے سماج میں چھپے ایسے عناصر کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کی جائے۔ ارشاد احمد سوہل نامی ایک شہری نے بتایا کہ لیبارٹری والے ڈاکٹروں کے ساتھ ملکر کر یوں بھی مریضوں کو لوٹتے رہتے ہیں اور ایسے میں چیف میڈیکل افسر کی طرف سے بانہال میں تین لیبارٹریوں کو سیل کرنے کی خبر سے ان کے ہوش اڑ گئے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے اور اْن کے کئی رشتہ داروں نے سربمہر کی گئی تین میں سے دو لیبارٹریوں سے ماضی میں کئی ضروری ٹیسٹ بھی کروائے ہیں اور اب جب پتہ چلا کہ یہ فراڈ تھے تو بڑی حیرت ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ کو ضلع رام بن میں تمام دوائی کی دکانوں، لیبارٹریوں اور کلیشن سینٹروں کی جانچ کرنی چاہئے تاکہ ایسی بھیڑیوں کو اس مقدس پیشے سے باہر کیا جائے۔ سماجی تنظیم سوشل ویلفیئر ایسوسی ایشن بانہال یا ثواب نے چیف میڈیکل افسر رام بن کی طرف سے شروع کی گئی اس کارروائی کا خیر مقدم کرتے ہوئے محکمہ صحت کے حکام سے اپیل کی ہے کہ وہ شہر وگام میں پھیلی ایسی لیبارٹریوں ، دوا دکانوں ، الٹرا ساونڈ اور دیگر کلنکوں کی جانچ پڑتال کریں تاکہ نقلی اور فراڈ افراد کو جیل بھیجا جائے جو عام اور مجبور مریضوں کو لوٹتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی زندگی سے کھیلنے والے ایسے افراد کو سماج بھی کبھی معاف نہیں کرے گا کیونکہ ایسے لوگ پیسوں کیلئے انسانی زندگیوں کو داو پر لگاتے ہیں۔ انہوں نے پورے ضلع میں ایسے لوگوں کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے محکمہ کو پوری ریاست میں سرگرم ہونے اور مزید کاروائیاں کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا صحت کا شعبہ دیہی علاقوں میں زوال پزیر ہے جس کی وجہ سے لوگ ایسے دونمبری اور غیر قانونی دلالوں کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں۔