ہنگامے کے بیچ راجیہ سبھا میںثالثی ترمیمی بل منظور

نئی دہلی// راجیہ سبھا نے اپوزیشن کی طرف سے شدید ہنگامے کے درمیان ایک بہت ہی مختصر بحث و مباحثے کے بعد ثالثی اور مفاہمت (ترمیمی) بل 2021 منظور کردیا۔لوک سبھا یہ بل پہلے ہی منظور کرچکی ہے ، جس سے بدھ کے روز پارلیمنٹ کی مہر لگ گئی۔ یہ بل ثالثی اور مفاہمت (ترمیمی) آرڈیننس کی جگہ لے گا۔ بل کی منظوری کے بعد ، ڈپٹی چیرمین ہری ونش نے اپوزیشن ممبروں کی ہنگامہ آرائی کے پیش نظر ایوان کو دن بھر کے لئے ملتوی کردی۔وزیر قانون و انصاف روی شنکر پرساد نے بل پر بحث کی جانے والی بہت سی مختصر بحث کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کسی بھی قیمت پر ملک کے قدرتی اور دیگر وسائل کو لوٹنے کی اجازت نہیں دے گی اور اس بات کی بھی بالکل اجازت نہیں دے گی کہ کچھ کاروباری نظام کی خامیوں کا فائدہ اٹھاکر ملک کے ٹیکس دہندگان کی رقم کو ایوارڈ کے ذریعہ لوٹتے رہیں۔انہوں نے کہا کہ اس پر قابو پانے کے لئے اس بل میں مناسب انتظامات کیے گئے ہیں اور حکومت بدعنوانی کو ہر گز برداشت نہیں کرے گی۔