ہماری پابندیاں بہت تکلیف دیں گی، روس کا مغرب کو انتباہ

ماسکو// روس نے مغرب کو خبردار کیا ہے کہ اگر ماسکو نے پابندیاں لگائیں تو مغربی ممالک کو سخت مشکلات اور تکالیف کا سامنا کرنا پڑے گا۔غیرملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روس کا کہنا ہے کہ پابندیاں لگانے سے متعلق ہم بڑے پیمانے پر کام کر رہے ہیں جو مغربی ممالک میں بہت شدت سے محسوس کی جائیں گی۔وزارت خارجہ کے شعبہ اقتصادی تعاون کے ڈائریکٹر دمتری بریچیفسکی نے بتایا کہ روس کی جانب سے لگائی جانے والی پابندیاں بہت خطرناک ہوگی جو مغربی ممالک کو جھنجھوڑ دیں گی۔امریکی صدر جو بائیڈن نے منگل کو روسی تیل اور توانائی کی دیگر درآمدات پر فوری پابندی عائد کر دی تھی۔اس سے قبل، روس نے خبردار کیا تھا کہ اگر امریکا اور مغربی ممالک نے روس کے خام تیل کی درآمد پر پابندی لگائی تو عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت 300 ڈالر فی بیرل تک پہنچ جائے گی۔واضح رہے کہ 1991 میں سوویت یونین کے زوال کے بعد اس وقت روس کی معیشت کو سب سے زیادہ بحران کا سامنا ہے۔ روسی ایوان صدر کریملن نے کہا ہے کہ امریکہ نے اپنے اقدامات سے روس کیخلاف اقتصادی جنگ کا اعلان کردیا ہے۔عالمی میڈیا کے مطابق کریملن کے ترجمان ڈمتری پیسکوف کا یہ بیان امریکی صدر جوبائیڈن کی جانب سے روسی تیل اور گیس کی درآمدات پر پابندی عائد کرنے کے بعد سامنے آیا ہے۔پیسکوف نے کہا، ‘‘صورتحال ایک گہرے تجزیے کی متقاضی ہے۔اگر آپ مجھ سے پوچھ رہے ہیں کہ روس امریکا کے اس اقدام کے ردِعمل میں کیا کرنے جا رہا ہے تو جواب یہ ہے کہ روس ہر وہ ضروری اقدام کرے گا جو اس کے مفادات کے لیے ضروری ہوں۔’’انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے یقینی طور پر روس کے خلاف اقتصادی جنگ کا اعلان کیا ہے اور وہ اس جنگ کو اور بھڑکا رہا ہے۔