ہر کسی نے وراٹ سے کہاتھا، براہ کرم ہندوستانی ٹیم کی خاطر کپتان بنے رہیں: چیتن شرما

نئی دہلی//ہندوستان کے چیف سلیکٹر چیتن شرما نے اعتراف کیا ہے کہ وراٹ کوہلی کو ون ڈے ٹیم کی کپتانی سے ہٹانے کا سلیکشن پینل کا فیصلہ ان کے ٹی 20 کپتانی سے دستبردار ہونے کے فیصلے کے بعد کیا ہے انہوں نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ میٹنگ میں موجود سبھی سلیکٹر کے ساتھ ساتھ بی سی سی آئی کے صدر سورو گنگولی نے وراٹ سے اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے کی درخواست کی تھی چیتن نے جمعہ کو ایک ورچوئل پریس کانفرنس میں جنوبی افریقہ ون ڈے سیریز کے لیے ہندوستانی ٹیم کے اعلان کے موقع پر کہا،’یہ سلیکٹر کا فیصلہ تھا کہ وائٹ بال فارمیٹ میں ایک کپتان رکھا جائے۔ یہ یقیناً ایک مشکل فیصلہ تھا لیکن سلیکٹر کو سخت فیصلے کرنے ہوتے ہیں۔ آپ اپنی پلیئنگ الیون بناتے وقت سخت فیصلے بھی کرتے ہیں۔ میں جانتا ہوں کہ وراٹ آنے والے دنوں اور سالوں میں ہمارے لیے ایک اہم کھلاڑی ہیں‘۔
سلیکشن پینل کے سربراہ نے کہا،’2021 کے ٹی-20 ورلڈ کپ سے ٹھیک پہلے وراٹ کا ٹی-20 کی کپتانی چھوڑنے کا اعلان اس ٹورنامنٹ کے بعد میٹنگ میں موجود سلیکٹر اور بورڈ حکام کے لیے ایک دھچکا تھا۔ وراٹ نے پہلے اس بات کی تردید کی تھی کہ بی سی سی آئی کے صدر سورو گنگولی کے ایسا کرنے کے چند گھنٹوں بعد ہی کسی نے انھیں ٹی-20کی کپتانی چھوڑنے کی حوصلہ شکنی کی تھی‘۔