گاندربل کے کئی علاقوں میں پینے کے پانی کی قلت | وتر ونی بڈگام میں جل شکتی محکمہ کے خلاف احتجاجی دھر نا

گاندربل//پینے کے پانی کی قلت کے پیش نظر گاندر بل کے کئی علاقوں میں لوگ گوناگوں مشکلات سے دوچار ہیں جبکہ  ضلع بڈگام کے وترونی علاقے میںلوگوں نے جل شکتی محکمہ کے خلاف احتجاجی دھرنا دیا۔گاندربل کے قصبہ لار کے علاقوں جن میں گجر بستی ولی وار، ژونٹھ ولی وار میں پچھلے پندرہ روز کے زائد عرصہ سے پینے کے پانی کی شدید قلت واقع ہونے سے گوناگوں مسائل کا سامنا ہے ۔مقامی آبادی کو ایک کلومیٹر دور سے پانی حاصل کرناپڑتا ہے۔مقامی آبادی کے مطابق دونوں علاقے پہاڑی پر موجود ہیں جس کی وجہ سے ان علاقوں میں بنیادی سہولیات کا فقدان پایا جارہا ہے۔ مقامی شہری محمد الطاف نے بتایا کہ پچھلے پندرہ روز سے پانی کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگرچہ انہوں نے جل شکتی محکمہ کے اعلیٰ حکام کو پانی کی عدم فراہمی سے آگاہ کیا تاہم کوئی سد باب نہیں کیا گیاجس کی وجہ سے ان کی پریشانیوں میںروز افزوں اضافہ ہورہا ہے ۔ادھر  ضلع بڈگام کے وترونی علاقے میںلوگوں نے جل شکتی محکمہ کے خلاف احتجاجی دھرنا دیتے ہوئے کہا کہ وہ پینے کے صاف پانی کی قلت سے دوچار ہیں۔احتجاج کے دوران علاقے میں کئی گھنٹوں تک ٹریفک کی آمدو رفت معطل رہی ۔احتجاجی مظاہرین کا کہنا تھا کہ انہیں پانچ برسوں سے پینے کے صاف پانی کی قلت ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں جل شکتی محکمہ کے افسران کو متعدد بار آگاہ کیا گیا لیکن کوئی سدباب نہیں ہوا۔ انہوںنے کہا کہ آلودہ پانی کے استعمال سے بستی میں وبائی امراض پھیلنے کا خدشہ لاحق ہے۔مظاہرین کے مطابق انہیں  احتجاج کا راستہ اختیار کرنے کیلئے مجبور کیا گیا۔کے این ایس