کورونا پابندیاں | نیوزی لینڈ میں بھی ٹرک ڈرائیوروں کا احتجاج شروع

ویلنگٹن//کینیڈا کے بعد اب نیوزی لینڈ میں بھی ٹرک ڈرائیوروںنے کورونا پابندیوں کے خلاف احتجاج شروع کردیا۔ خبررساں اداروں کے مطابق نیوزی لینڈ کے ٹرک ڈرائیوروں نے کینیڈا میں جاری احتجاج کی حمایت کرتے ہوئے ریلیاں نکالیں۔ ٹرک ڈرائیوروںنے دارالحکومت ویلنگٹن میں پارلیمان کے اطراف کی سڑکوں سمیت دیگرشاہراہوں کوبھی بند کردیا۔ مظاہرین نے کورونا سے متعلق وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کی پالیسیوں کوانتہائی سخت قراردیتے ہوئے کورونا کی پابندیاں واپس لینے کا مطالبہ کیا۔  پولیس نے جمعرات کو پارلیمنٹ گراؤنڈ میں ویکسین کو لازمی قرار دینے کے خلاف احتجاج کرنے والے 120 مظاہرین کو گرفتار کر لیا۔ویلنگٹن ڈسٹرکٹ ہیرو سپرنٹنڈنٹ کورائی پارنیل نے یہ اطلاع دی۔ نیوزی لینڈ ہیرالڈ نے پارنیل کے حوالے سے بتایا کہ آج گرفتار کیے گئے 120 افراد کے معاملے میں الزامات احتجاج اور جرائم کے ہیں۔مسٹر نائک نے کہا کہ دو پولیس افسران پر حملہ کیا گیا جن میں سے ایک پر پیپر اسپرے سے حملہ کیا گیا اور دوسرے کو معمولی چوٹیں آئیں۔ جمعرات کو مظاہرین نے نیوزی لینڈ کو گھیرے میں لے لیا۔ درحقیقت یہ تمام مظاہرین کینیڈا میں ہونے والے مظاہروں سے متاثر دکھائی دیتے ہیں۔ تمام ویکسین اور کورونا پابندیوں کے نفاذ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے پارلیمنٹ ہاؤس کے قریب ٹینٹ لگا کر سڑک بلاک کر دی ہے ۔قابل ذکر ہے کہ ہزاروں ٹرک ڈرائیوروں اور کسانوں سمیت مظاہرین کا ایک بڑا ہجوم جنوری کے وسط سے کورونا ویکسین کو لازمی قرار دینے کے خلاف کینیڈا کے دارالحکومت اوٹاوا میں مظاہرہ کر رہا ہے ۔ادھر کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے ٹرک ڈرائیوروں کو کورونا وائرس کی پابندیوں کی مخالفت اور معیشت کو نقصان پہنچانے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔بدھ کو پارلیمنٹ میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہاکہ غیر قانونی احتجاج اور ہنگامہ آرائی ناقابل قبول ہے جس کا تاجروں، صنعت کاروں اور کاروبار پر منفی اثر پڑتا ہے ۔ ہمیں اس کو ختم کرنے کے لیے ہر ممکن کوشش کرنی چاہیے ۔انہوں نے معیشت کو مسدود کرنے اور جمہوریت اوریہاں کے شہریوں کی روزمرہ زندگی کو متاثر کرنے کے لیے مظاہرین کی مذمت کی۔غور طلب ہے کہ بڑی تعداد میں ٹرک ڈرائیوروں نے امریکہ اور کینیڈا کو جوڑنے والی ایک بڑی سڑک کا گھیراؤ کر رکھا ہے جس سے معیشت کو نقصان پہنچنے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے ۔بی بی سی کے مطابق ڈیٹرائٹ سے کینیڈا جانے والی ایک سڑک اس وقت بند ہے ، حالانکہ محدود تعداد میں لوگوں کو امریکہ جانے کے لیے ایمبیسیڈر پل عبور کرنے کی اجازت دی جا رہی ہے ۔قابل ذکر ہے کہ کینیڈا میں ٹرک ڈرائیور ویکسینیشن کے لیے بنائے گئے قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ اس ضابطے کے تحت اب امریکہ اور کینیڈا کے درمیان سفر کرنے والے ٹرک ڈرائیوروں کے لیے ویکسینیشن کا ثبوت دینا لازمی ہو گیا ہے ۔
 

امریکی بحریہ کے 240 اہلکاربرطرف

واشنگٹن//یو این آئی// امریکی بحریہ نے پینٹاگون کے ویکسین مینڈیٹ کے مطابق اینٹی کورونا وائرس ویکسین لینے سے انکار کرنے پر 240 اہلکاروں کو ڈیوٹی سے برطرف کر دیا ہے ۔بحریہ نے بدھ کو اپنے بیان میں کہا کہ ان 217 اہلکاروں میں سے زیادہ تر فعال طور پر کام کر رہے تھے اور ایک امریکی نیول ریزرو کا رکن تھا۔ سی این این کے مطابق، 240 اہلکاروں میں سے 22 کو برطرف کر دیا گیا ہے لیکن وہ اب بھی اپنی پہلے 180 دنوں کی فعال سروس ٹریننگ جاری رکھے ہوئے ہیں۔بحریہ نے کہا کہ ان کے ساتھ 8000 سے زائد اہلکاروں کو ابھی تک ویکسین نہیں لگائی گئی ہے ۔ بحریہ نے پہلے ہی نومبر 2021 کی ڈیڈ لائن دی تھی کہ وہ مکمل طور پر ویکسین لگائیں۔