کشتواڑ میں گاڑیوں کی اور لوڈنگ

کشتواڑ//کشتواڑ میں گاڑیوں کی اور لوڈنگ سے عام لوگوں و سکولی بچوں کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔اورلوڈنگ کا حال یہ ہے کہ بعض اوقات مسافروں اور سکولی بچوں کو گاڑیوں میں لٹکتے ہوئے دیکھا ہے۔اس سے یہ معلوم ہو تاہے کہ ڈرائیور مسافروں کے تحفُظ کے تئیں کتنے سنجیدہ ہیں۔بسوں ، میٹا ڈاروں ،ٹاٹا سومووں ،ٹیمپووں،وئینز و دیگر پرائیویٹ وہیکلز اوور لوڈنگ سیمسافروں کی زندگی خطرے میں پڑتی ہے۔ ایسا لگ رہا ہے کہ پرائیویٹ گاڑیوں کو پیسے بنانے کی اجازت دی گئی ہے۔گاڑیوں کی اور لوڈنگ میں غیر یقینی وقت اور کم تعداد میں گاڑیوں کے چلنے کی وجہ ہے۔کشمیر اعظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کشتواڑ کے ایک مقامی باشندے انیس بخشی نے کہا کہ پرائیویٹ گاڑیاں مسافروں کو اوور لوڈ شدہ گاڑیوں میں سوار کرتے ہیں،جس سے اس سڑک پر لوگوں کو خطرہ لاحق ہوتا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ ضلع کشتواڑ طلبا و طالبات کو اوور لوڈشدہ گاڑیوں میں بٹھایا جاتا ہے ۔اس پر بھی ان گاڑیوں کی رفتار 60 کلو میٹر فی گھنٹہ سے بھی زیادہ ہوتی ہے،جس سے ان بچوں کی زندگی خطرے میں پڑتی ہے۔ایسا اس حقیقت کے بعد بھی کیا جاتا ہے کہ کشتواڑ۔ سنتھن ۔اننت ناگ کے اس حصہ پر کئی سڑک حادثات رونما ہوئے ہیں۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ میڈیا نے کئی بار اس مسلہ کو اُچھالا ہے ،تاہم اس کا کوئی فائدہ نہیںہوا ہے۔مقامی لوگوں نے ٹریفک حُکام کو اس سلسلہ میں مثبت کاروائی کرنے کی اپیل کی ہے،تاکہ قصبہ میں ٹریفک کیاور لوڈنگ کی بدعت پر قابو پایا جا سکے۔