کاروبار کا آغاز کیسے کیا جائے؟ | واضح حکمتِ عملی شرطِ اولین

کوئی بھی کام کرنے کا فیصلہ کرنا اور پھر اس کا آغاز کرنابڑی ہمت، محنت اور وقت مانگتا ہے۔ یہی بات کاروبار کے لیے بھی ہے، جس میں اور زیادہ توجہ دینی کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ اس میں آپ کا سرمایہ اور امید لگی ہوتی ہے۔ کاروبار شروع کرنے سے پہلے بہت زیادہ سوچ بچار کی جاتی ہے اور پھر کسی نتیجہ پر پہنچ کر لائحہ عمل ترتیب دیا جاتا ہے کہ کیسے کاروبار کا آغاز کیا جائے گا اور کیسے اسے چلایا جائے گا۔ کاروبار مختلف طرح کے ہوتے ہیں جیسے مصنوعات تیار کرکے فروخت کرنا، خدمات فراہم کرنا، ریٹیل کاروبار کرنا، ڈسٹری بیوشن وغیرہ۔ دنیا بھر کی معروف کمپنیوں کے سربراہان اور لیڈرز کی جانب سے نیا کاروبار کرنے والوں کو کچھ مفید مشورے دیے گئے ہیں جن کا ذکر ذیل میں کیا جارہا ہے۔
٭ سب سے پہلے اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ کاروبار کرنے کے لیے صرف منفرد آئیڈیا ہونا ضروری نہیں بلکہ جو کاروبار آپ شروع کرنا چاہتے ہیں اس کے لیے آپ کے اندر جذبہ ہو اور آپ وہ کام کرنے کے لیے پُرجوش ہوں۔ اس کے لیے آپ کو روزانہ سخت محنت کرنا ہوگی اور کسی بھی مشکل وقت میں حوصلہ نہیں ہارنا۔ (برٹ مورن، سی ای او برٹ اینڈ کو)
٭ اس بات پر غور کریں کہ آپ کو کیا چیز کو متحرک کرتی ہے اور اس کے بارے میں آپ قدرتی طور پر پُرجوش ہوتے ہیں۔ اچھے لوگ تلاش کریں جو آپ کی مدد کریں۔ (جیک ڈورسی، سی ای او ٹوئیٹر)
٭ اپنے جذبہ کو اس طرح جوڑیں جس طرح آپ اپنی زندگی گزارتے ہیں۔ آخر میں یہ معنی رکھتا ہے کہ آپ اپنے خوابوں کو حقیقت کا روپ دینا چاہتے ہیں اور اس کے لیے اپنی صلاحیتیں استعمال کرنے کے لیے تیار ہیں۔ زندگی بہت چھوٹی ہے یہ جاننے کے لیے کہ آپ کس چیز کی پرواہ کرتے ہیں، لہٰذا کچھ من پسند کاموں کے لیے بھی وقت نکالیں۔ خوشی کا راز بھی یہی ہے لیکن یہ واقعی مشکل ہے۔ (ڈوگ مینیوز، دستاویزی فوٹوگرافر/فلم ساز)
٭ کچھ لوگوں کا کہنا کہ آپ یہ معلوم کریں کہ آپ کس چیز میں اچھے ہیں اور پھر وہی کام کریں۔ کچھ کہتے ہیں کہ وہ کام کریں جو آپ کرنا چاہتے ہیں جبکہ کچھ کا ماننا ہے کہ یہ دیکھیں کہ مارکیٹ میں کس چیز کی ضرورت ہے، اس کا اندازہ لگائیں اور وہ خلا پُر کرنی کی کوشش کریں۔ تاہم ان تمام باتوں میں مشوروں میں مشکل یہ ہے کہ اگر آپ کسی کام میں اچھے ہیں لیکن اس میں پیسہ نہیں ہے تو آپ کیا کریں گے؟ اسی طرح اگر آپ کسی کام میں اچھے ہیں پر اسے کرنے کے بارے میں پُرجوش نہیں ہیں؟ 
یا اگر آپ صرف مارکیٹ کی ضروریات کی بنیاد پر کوئی کاروبار کرتے ہیں تو آپ غالباً زیادہ عرصہ اسے چلا نہیں پائیں کیونکہ آپ اس سے لطف اندوز نہیں ہوتے۔ یہی وجہ ہے کہ اسٹارٹ اَپ کے لیے ان تینوں امور کا ایک جگہ ہونا ضروری ہے۔ ان تینوں امور کو بلینڈ کرکے اسمارٹ ’پلان اے‘ مرتب کیا جائے۔ اپنے اردگرد کے حقائق پر نظر رکھتے ہوئے آپ اپنی خواہشات کو پورا کرنے کے لیے اپنی طاقت سے کیسے فائدہ اٹھا سکتے ہیں؟ ۔
آپ کو لازمی طور پر ایک بہتر لائحہ عمل ترتیب دینے کی ضرورت ہوگی۔ مثال کے طور پر ، میں لکھنا پسند کرتا ہوں اور اس میں اچھا ہوں لیکن اس سے پیسے کمانا بہت مشکل ہے۔ لہٰذا میں نے اس مہارت/طاقت کو ایک ایسے میدان میں ضم کیا جہاں مارکیٹ کی حقیقتیں زیادہ سازگار (کاروبار) ہیں۔(بین کیسنوچا، مصنف)
٭ اس لمحے کا انتظار کریں جب آپ کا دل و دماغ سخت فیصلے لینے کے بارے میں واضح ہو۔ دوسری بات یہ کہ آپ کو ہمیشہ ایسے شاندار لوگوں کی پیروی کرنی چاہیے جن سے آپ اپنے کیریئر میں کچھ سیکھنا چاہتے ہیں۔ میں اس حوالے سے بہت خوش قسمت رہا ہوں کہ مجھے بہت سے حیرت انگیز لوگوں سے سیکھنے کو ملا۔ (مولی گراہم، سی او او کوئپ)
٭ یہ بات یاد رکھیں کہ کروڑ پتی افراد کی آمدنی کے کم از کم سات مختلف ذرائع ہوتے ہیں۔ تاہم، کسی بھی کام کا آغاز کرنے کے لیے یہ جانیں کہ آپ 6سے18سال کی عمر میں کن کاموں میں دلچسپی رکھتے تھے۔ اگر آپ لکھنا پسند کرتے تھے تو شاید آپ کتاب شائع کرنے کا قابل ہوں۔ اگر آپ کو اسٹاکس میں دلچسپی تھی تو پھر فائنانس کے بارے میں سوچیں۔ اگر آپ کمپیوٹر سے محبت کرتے تھے تو کوڈنگ کے بارے میں سوچیں۔ مجھے لگتا ہے کہ 10سال کی عمر میں ہمارے جذبات ہمارے ساتھ خوبصورتی سے بڑھتے چلے جاتے ہیں لیکن ہم اکثر انہیں بھول جاتے ہیں۔ (جیمز الٹوچر، انٹرپرینیور/ پوڈکاسٹر)
٭ کالج اور یونیورسٹی کے طلبا کو چاہیے کہ وہ ہر قسم کی نئی چیزیں آزمائیں۔ اس سوچ میں بند نہ ہوں کہ آپ کو کچھ مخصوص کام ہی کرنے ہیں۔ ایسے مضامین بھی پڑھیں جن کے بارے میں آپ نے کبھی نہیں سنا ہو۔ ایسے گروپس میں شامل ہوں جو آپ کو اپنے کمفرٹ زون سے باہر نکالیں۔ کالج میں پڑھائی کے ساتھ ساتھ تعلقات )Connectionsقائم کرنے پر بھی توجہ دیں۔ یہ بھی ایک صلاحیت ہے، جو پیشہ ورانہ زندگی میں کام آتی ہے۔ لہٰذا لوگوں سے بات چیت اور اپنے پروفیسرز سے ملاقات کریں۔ (ڈینیل پنک، مصنف)
٭ مجھے لگتا ہے کہ میں نے دس سال پہلے اپنے آپ کو کہا ہوگا کہ فکر کم کرو۔ میری توجہ میرے کام اورکمپنی وغیرہ پر اتنی زیادہ مرکوز تھی کہ میں ادھر ادھر دیکھنے اور زندگی کا لطف اٹھانے سے باز رہا۔ لیکن اب تمام مشقت کے اختتام پر، میں بہت شکر گزار ہوں کہ میں نے محنت کی۔ (کمّی اسکاٹی، جنرل پارٹنر فارمیشن 8)
٭ ٹی ۔شیپ کے سائز کا ہونا سیکھیں۔ آپ کو کئی چیزیں آنی چاہئیں لیکن کسی ایک چیز میں واضح مہارت حاصل کریں۔ کسی ایک کام میں ماہر ہونے کے لیے آپ کو برسوں تک ایک ہی چیز پر دن رات کام کرنا پڑے گا۔ پڑھنے سے زیادہ لکھنے اور سوچنے میں وقت گزاریں۔ اپنے کام اور شوق کو ہکجا کردینا اچھا ہے، جس کا مطلب ہے کہ آپ اپنے کام سے ہر وقت لطف اندوز ہوتے ہیں۔ زندگی گزارنے کے لیے اپنا وقت نہ بیچیں۔ (اینڈریو چن ، سپلائی گروتھ ٹرانسپورٹ کمپنی)
٭ جب میں پراڈکٹ منیجر تھا تو ہمارے باس اپنی ٹیم کے تمام پراڈکٹ منیجرز کو کہتے تھے کہ پر دس سال میں اپنی ’سی وی‘ لکھو۔ آپ خود کو کہاں دیکھناچاہتے ہیں؟ جب تک میں نے ایسا نہیں کیا، مجھے شک تھا۔ مجھے بہت جلدی احساس ہوا کہ 10سالوں میں میرے ’سی وی‘ میں کہیں ’سی ای او‘ نہیں لکھا تھا اور نہ ہی میں سی ای او بننا چاہتا تھا۔ یہ جان کر کہ میں کچھ مختلف چاہتا ہوں، مجھے اپنے کیریئر کے فیصلوں کے بارے میں زیادہ پُرجوش ہونے اور اپنے مقاصد کو دوسروں تک پہنچانے میں مدد ملی۔ (کین نورٹن، پارٹنر گوگل وینچرز)
٭ آپ جو بھی کرنا چاہتے ہیں، وہ گزشتہ کل سے شروع کریں۔ جتنی جلدی آپ کام کی ابتدا کریں گے ، اتنی جلدی آپ فوائد حاصل کر سکتے ہیں یا یہ جان سکتے ہیں کہ یہ کام چل بھی پائے گا یا نہیں۔ آپ کو یہ سوچنے کی ضرورت نہیں ہوگی کہ ’کیا ہوگا؟‘ کیونکہ یہ کام آپ پہلے ہی کرچکے ہوں گے۔ اس سے زیادہ تکلیف دہ کوئی چیز نہیں ہوتی کہ آپ اپنے ذہن میں ’کیا ہوگا؟‘ کو حاوی رکھیں۔ تو جو کام بھی کرنا ہے اس پر ابھی سے عمل کریں۔ (جیف ایٹ ووڈ، شریک بانی اسٹیک ایکسچینج اینڈ ڈسکلوژر)
٭ ایک بار جب آپ اپنے کاروبار کا آغاز کردیتے ہیں تو گویا ایسا محسوس ہوتا ہے ہر طرف آگ لگ رہی ہو لیکن آپ کے پاس کوئی ایسی چیز نہیں ہوتی جس سے آپ اس آگ کو ختم کرسکیں یا آپ بتاسکیں کہ آپ کی حکمت عملی کیا ہے ، کیونکہ اس وقت آپ کے پاس وقت نہیں ہوتا۔ لہٰذا کسی بھی کاروبار کے آغاز سے قبل ہی واضح حکمت عملی اپنائیں کیونکہ جب آپ واضح حکمت عملی کے ساتھ کسی کاروبار میں قدم رکھیں گے تو ہر چیز کو صحیح طرح سے مینج کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ (الیگزا وون ٹوبل، امریکی فائنانشل پلاننگ کمپنی کی بانی اور مصنفہ)
�����