ڈرون کا استعمال بذات خود ایک خطرہ

جموں و کشمیر میں تمام اہم تنصیبات اور جگہوں کی سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے

کٹھوعہ//جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ ڈرونز کا استعمال بذات خود ایک خطرہ ہے جس سے نمٹنے کے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جموں ایئر فورس سٹیشن پر حالیہ فضائی حملے کے پیش نظر تمام اہم تنصیبات اور جگہوں کی سکیورٹی بڑھائی گئی ہے ۔دلباغ سنگھ نے جمعے کو یہاں ایس پی ایس پولیس ٹریننگ سکول کٹھوعہ میں منعقدہ اٹسٹیشن و پاسنگ آئوٹ پریڈ کی تقریب کے حاشئے پر نامہ نگاروں کو بتایا: 'ڈرون کا استعمال بذات خود ایک خطرہ ہے ۔ اس کا ملک دشمن عناصر کی طرف سے استعمال ہو چکا ہے ۔ ہم اس خطرے سے نمٹنے کے اقدامات اٹھا رہے ہیں'۔انہوں نے کہا: 'سبھی سکیورٹی ایجنسیاں مل کر کام کر رہی ہیں۔ تمام اہم تنصیبات اور جگہوں کی سکیورٹی کا جائزہ لیا جا رہا ہے ۔ کچھ اضافی اقدامات اٹھائے گئے ہیں جن کو ہم میڈیا کے سامنے بیان نہیں کر سکتے ہیں'۔پولیس سربراہ نے کہا کہ جموں ایئر فورس سٹیشن پر حالیہ فضائی حملے کی تحقیقات جاری ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا: 'تحقیقات اس مقام پر نہیں پہنچی ہے جہاں ہم یہ کہہ سکے کہ کون ملوث ہے ۔ چونکہ ہم نے ماضی قریب میں دیکھا ہے کہ لشکر طیبہ نے ہتھیار اور منشیات سرحد کے اس پار بھیجنے کے لئے ڈرونز کا استعمال کیا ہے لہٰذا اس بنیاد پر ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ حالیہ حملوں میں لشکر طیبہ کا ہاتھ ہو سکتا ہے '۔دلباغ سنگھ نے کہا کہ وادی کشمیر میں آنے والے دنوں میں جنگجو مخالف آپریشنز میں مزید تیزی لائی جائے گی۔ان کا مزید کہنا تھا: 'ہماری کوشش ہے کہ امن اور عام لوگوں کی جانوں کے دشمنوں کا صفایا کیا جائے ۔ جنگجوئوں کو پوری طرح سے ناکامیاب کرنے کا وقت آ گیا ہے ۔ میں چاہتا ہوں کہ نوجوان امن کی پہل میں ہمارا حصہ بنے ۔ نوجوان ایسی سرگرمیوں سے دور رہیں جو ان کے لئے ٹھیک نہیں ہیں'۔پولیس سربراہ نے کہا کہ جنگجوئوں کی صفوں میں مقامی نوجوانوں کی بھرتی کے رجحان میں کمی آئی ہے ۔انہوں نے کہا: 'ہم نوجوانوں کو مثبت کاموں میں مصروف رکھنے کے لئے کوشاں ہیں۔ پہلے کے مقابلے میں ریکروٹمنٹ نا کے برابر ہے ۔ مجھے یقین ہے کہ آنے والے وقت میں ریکروٹمنٹ میں مزید کمی آئے گی'۔یاد رہے کہ اس پاس آوٹ پریڈ میں 02ڈی وائی ایس پی، 28پی ایس آئیز سمیٹ508ریلروٹ کانسٹیبل شامل تھے۔کانسٹیبل انوج سنگھ کو ٹریننگ میں بہترین کارکر دگی(All round best) آنے پر ترقی سے نو اذ گیا۔  
 
 

جموں میں مذہبی مقامات پر دھماکے کرنے کی سازش

 آئی ای ڈی کیس میں کردار ادا کرنے پر 2 افراد گرفتار: پولیس

 سید امجد شاہ
جموں// پولیس نے آج شوپیان اوربانہال سے تعلق رکھنے والے مزید دو افراد کو بارودی سرنگ بازیافت کیس میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کرنے کا دعوی کیا ہے۔پولیس نے ان کی گرفتاری ندیم الحق ولد عبد الرحمٰن راتھر ساکن بانہال سے دوران تفتیش ان کے انکشاف کے بعد کی ۔پولیس نے مزید بتایا کہ ندیم کو حال ہی میں ضلع جموں کے بٹھنڈی کے ایک علاقے میں IED کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا۔اس کے مطابق پولیس ٹیمیں حرکت میں آگئیں اور انہوں نے ان دونوں افراد کی پکڑ دھکڑ کی جن کی شناخت ندیم ایوب راتھر ولد ایوب راتھرساکن چک چولینڈ ہرمین شوپیاں اور طالب الرحمان ولد عبد الرحمن  ساکن کسکوٹ بانہال کے طور ہوئی ہے۔مستقل پوچھ گچھ کے دوران پولیس نے بتایا کہ ملزمان نے آئی ای ڈی کیس میں ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے۔گرفتار افراد کے انکشافات کی بنیاد پر پولیس نے کہا "وہ اپنے ہینڈلرز کی ہدایت پربانہال میں مجرمانہ سازش کی منصوبہ بندی کر رہے تھے ، انہیں جموں کے بڑے مذہبی مقامات پربارودی سرنگ دھماکے کرنے کی ہدایت کی گئی تھی"۔پولیس نے مزید کہا: "یہی وجہ ہے کہ پہلے ہی گرفتار ملزم ندیم دہشت گردی پھیلانے اور جموں شہر کے پرامن ماحول کو غیر مستحکم کرنے کے لئے IED حملہ کرنے کے مقصد کے ساتھ بانہال سے جموں آیا تھا"۔پولیس نے مزید کہا ابتدائی تفتیش سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ لگتا ہے کہ آئی ای ڈی کو ڈرون کے ذریعے گرایا گیا ہے "۔ پولیس نے مزید کہا ، اس معاملے کی تحقیقات جاری ہے جبکہ تھانہ باہو فورٹ میں کیس درج کیاگیا ہے۔
 
 

پاکستانی ڈرون کی ارنیہ میں داخلہ

کوشش ناکام بنانے کے بعد بی ایس ایف الرٹ

سید امجد شاہ
جموں//سرحدی سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کے جوانوں نے ارنیہ میں ہندوستان کی حدود میں داخل ہونے کے لئے پاکستان سے ڈرون کی کوشش ناکام بنانے کے بعد بین الاقوامی سرحد پر الرٹ کردیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ الرٹ فوجیوں نے ارنیہ میں بین الاقوامی سرحد پر بارڈر آؤٹ پوسٹ (بی او پی) جبوال کے قریب ڈرون کی مشکوک حرکت دیکھی۔ذرائع نے بتایا "بی ایس ایف کے دستوں نے بین الاقوامی سطح پر صبح 4:50 بجے چھوٹے ہیکسا کاپٹر (ڈرون) پر پرواز کرتے ہوئے متعدد راؤنڈ فائر کیے ، اور اسے واپس لوٹنے پر مجبور کیا۔"ذرائع کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی سرحد کے ساتھ الرٹ کیاگیا اور پاکستانی ڈرون کی ارنیہ میں داخل ہونے کی کوشش ناکام بنانے کے بعد نگرانی میں اضافہ کیا گیا۔ذرائع کے مطابق ، بین الاقوامی سرحد کے ساتھ گشت میں اضافہ کیا گیا ہے ، ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈرونز پاکستان کے عناصر کی جانب سے سرحد کے اس طرف اسلحہ اور اسلحہ پھینکنے کے لئے استعمال کیے جارہے ہیں۔ تاہم بی ایس ایف کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہے۔دریں اثنا ذرائع نے بتایا کہ بی ایس ایف کے سینئر عہدیداروں نے سرحد کی صورتحال کا جائزہ لیا ہے اور سیکورٹی گرڈ کو مضبوط بنانے کے لئے ضروری ہدایات منظور کی گئی ہیں۔