چنڈیال سنگھیوٹ کا پنچائت گھر دس برسوں سے تشنہ تکمیل

مینڈھر//سب ڈویژن مینڈھر کی سرحدی تحصیل بالاکوٹ کی پنچائت چنڈیال سنگھیوٹ کا پنچائت گھر دس برسوںسے مکمل نہیں ہو سکا۔بالاکوٹ بلاک کی بی ڈی سی چیئرپرسن شمیم اختر نے کہا کہ پنچائت گھر کے معاملہ کو لیکر ہم نے کئی بار اعلی حکام سے بات کی لیکن دس سال گزرچکے ہیں کہ پنچائت گھر کا سنگ بنیاد رکھا گیا تھا لیکن دیواریں مکمل ہونے کے بعد اس پر چھت نہیں ڈالی گئی او راس پر خرچے گئے پانچ لاکھ روپے بھی ضائع ہوگئے اور وہ دیواریں اب کھنڈرات بن چکی ہیں۔ انکا کہنا تھا کہ پنچائت گھر کے معاملہ کو لیکر سرکار تحقیقات کرے اور جن ملازمین نے اس پنچائت گھر پر خرچے گئے پیسے سرکا رکے ضائع کئے ہیں انکے خلاف انکوائری کی جائے کیوں کہ پنچائت نمائندگان کو بیٹھنے کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے اور کھلے عام گرام سبھا یا کوئی میٹنگ کی جاتی ہے۔ انکا کہنا تھا کہ دور دراز علاقہ سے تعلق رکھنے والی یہ پنچائت راجوری کی سرحد پر واقع ہے جہاں پر پنچائت آفیسران نے کوئی بنیادی سہولیات لوگوں کو اس وقت تک فراہم نہیں کی اورعام لوگ کیا پنچائت نمائندگان بھی در در کی ٹھوکریں کھارہے ہیں لہٰذا فوری طور یا تو اسی پنچائت گھر پر چھت ڈالی یا نیا پنچائت گھر بنایا جائے تاکہ لوگوں کے ساتھ ساتھ پنچائت ممبران کو سہولیات مل سکیں ۔