پونچھ میں پانی کی قلت کے بحران سے صارفین مشکلات سے دوچار

 پونچھ//قصبہ پونچھ میں پانی کی شدید قلت برقرار ہے جس کی وجہ سے مکینوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ محلہ کھوڑی ناڑ وارڈ نمبر آٹھ کے مقامی لوگوں نے متعلقہ محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محکمہ کے افسر اور ملازموں کی لاپرواہی کی وجہ سے انھیں شدید پانی کی قلت کا سامنا ہے ۔سردار راجندر سنگھ نے کہا کہ متعلقہ حکام کی چشم پوشی کی وجہ سے پونچھ قصبہ اور اس کے گردونواح کے علاقوں میں آبنوشی کا بحران سنگین صورتحال اختیار کرگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ جن علاقوں میں ٹینکر پہنچ رہے ہیں وہاں کے مکین ٹینکر مافیا کے رحم و کرم پر ہیں اور مہنگے داموں پانی خریدنے پر مجبور ہیں۔انہوں نے کہا کہ جن محلہ جات میںٹینکر نہیں پہنچ پاتے ان کو شدید پریشانیوں کا سامنا ہے۔ سردار ہرسمرن سنگھ نے بتایا کہ قصبہ میں پانی کی شدید قلت ہے اس کے علاوہ لوگ طویل لوڈشیڈنگ سے بھی پریشان ہیں۔انہوں نے کہا کہ پانی کی فراہمی کا نظام اسقدر درہم برہم ہوکررہ گیا ہے کہ لوگ اب پریشان ہو کر احتجاج کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور ہیں۔انہوں نے کہا کہ وارڈ نمبر 8محلہ کھوڑی ناڑ میں آٹھ آٹھ روز تک پانی نہیں دیا جاتا ۔متعلقہ محکمہ کے افسروں کے پاس جائو تو وہ یقین دہانی کے علاوہ کچھ نہیں کرتے ۔ انہوں نے کہا کہ پانی کی عدم فراہمی کے باعث لوگ ذہنی مریض بن چکے ہیں بارہا حکام کو شکایت بھی کی گئی لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہ صورتحال برقرار رہی تو مکین شدید احتجاج پر مجبور ہونگے۔رابطہ کرنے پر اس حوالے سے بات کرتے ہوئے محکمہ صحت عامہ کے اے ای عبدالقیوم نے کہا کہ علاقہ میں پانی کی کوئی کمی نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت محکمہ کو پانی کی فراہمی میں دشواریاں آرہی ہیں اس کی وجہ صرف اور صرف ملازموں کی کام چھوڑ ہڑتال ہے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ کے افسر کوشش کر رہے ہیں کہ ملازموں کے مسائیل حل کر کے انھیں دوبارہ کام پر واپس لایاجائے۔انہوں نے کہا کہ جیسے ہی ملازموں کی ہڑتال ختم ہو گی پانی کا بحران بھی ختم ہوجائے گا۔انہوں نے کہا کہ وہ کوشش کر رہے ہیں کہ لوگوں کو پانی دستیاب کیا جائے۔