پروفیسر طلعت کا گلمرگ آبزرویٹری سنٹر بحال کرنے پر زور

سرینگر// کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے یونیورسٹی کے گلمرگ آبزرویٹری سنٹر کو تعلیمی، سائنسی اور سیاحتی مقاصد کے لیے بحال کرنے پر زور دیا ہے۔ایک دن پہلے گلمرگ کے اپنے ایک روزہ دورے کے دوران، جہاں انہوں نے گلمرگ آبزرویٹری میں انفراسٹرکچر، آلات اور دیگر سہولیات کا معائنہ کیا، پروفیسر طلعت نے کہا کہ اساتذہ، محققین اور محققین کی سہولت کے لیے اس کی ضروری بحالی اور اپ گریڈیشن کے بعد اس سہولت کا مناسب استعمال کیا جانا چاہیے۔وائس چانسلر نے کہا کہ یہ اہم آبزرویٹری جس پر پہلے بھی ملک کے مختلف حصوں اور بیرون ملک کے نامور سائنسدان تحقیقی مقاصد کے لیے آتے رہے ہیں، سال بھر گلمرگ آنے والے سیاحوں کے لیے کشش کا مرکز بن سکتی ہے۔آبزرویٹری کے پاس ایک پوائنٹ-2 ملی میٹر ہائی اینڈ ٹیلی سکوپ ہے جسے گلمرگ میں کم سے کم ماحولیاتی مداخلت کے ساتھ صاف آسمان کے نیچے مختلف فلکیاتی مظاہر کا مشاہدہ کرنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ اس جگہ کی اضافی خصوصیات میں کچھ نایاب کتابوں کے ساتھ ایک پرانی لائبریری، ریڈیو ایکٹیویٹی اسٹڈیز کے لیے جگہ، جڑی بوٹیوں کا باغ اور موسم کی پیشن گوئی کا نظام شامل ہے۔انہوں نے کہا’’ہمارے طلبا، بشمول اسکولوں کے طلبا، اس جگہ کا دورہ کر سکتے ہیں جو نوجوانوں کے ذہنوں میں سائنسی مزاج پیدا کرنے میں مدد کر سکتا ہے‘‘۔پروفیسر طلعت نے کہا کہ آبزرویٹری کثیر الجہتی تحقیق کے لیے ایک جگہ بھی بن سکتی ہے جیسا کہ قومی تعلیمی پالیسی 2020 کے تحت تصور کیا گیا ہے، جہاں ہمارے جغرافیہ دان، زمینی سائنس دان اور ماہر طبعیات ایک منفرد ماحول میں جدید ترین تحقیق کر سکتے ہیں۔پروفیسر طلعت نے یہ بھی کہا کہ آبزرویٹری کی ضروری اپ گریڈیشن کی جائے گی تاکہ اس جگہ کو یونیورسٹی کے فیکلٹی، طلبا اور اسکالرز کے لیے رہائش کے مقاصد کے لیے مفید بنایا جا سکے۔وی سی کے ہمراہ رجسٹرار ڈاکٹر نثار اے میر، ڈائریکٹر ڈی پی ای ایس پروفیسر شوکت اے شاہ، ہیڈ ڈیپارٹمنٹ آف فزکس پروفیسر بشارت وانٹ، جوائنٹ رجسٹرار ڈاکٹر اشفاق زری، سپیشل سیکرٹری ٹو وی سی ڈاکٹر اشفاق اے زری، ڈائریکٹر آئی ٹی ڈاکٹر معروف قادری بھی موجود تھے۔