وادی میں سستے داموں جنرک ادویات کی فراہمی

سرینگر//پردھان منتری جن اوشدھی یوجنا کے تحت جموں و کشمیر میں لوگوں کو سستے داموں معیاری ادویات فراہم کرنے کیلئے سرکاری اسپتالوں اور نجی سطح کے25دکانوں نے کام کرنا شروع کردیا ہے جن میں 263مختلف ادویات سستے داموں پر دستیاب ہیں جبکہ رواں مالی سال کے آخر تک جموں و کشمیر میں جنریک ادویات کی دکانوں کی تعداد 50ہوجائے گی۔جموں و کشمیر میں اس سکیم کے تحت کھلنے والی دوکانوں سے مریض معیاری ادویات 80فیصد سستے داموں پر حاصل کرسکتے ہیں۔ تاہم جنریک ادویات فروخت کرنے والے کئی دکانداروں کا کہنا ہے کہ ڈاکٹروں کی جانب سے نسخے موٹے حروف میں نہ لکھنے اور سپلائی میں رکاوٹ کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پورے بھارت میں لوگوں کو سستے داموں پر ادویات فراہم کرنے کیلئے  وزیر اعظم کی طرف سے شروع کی گئی ’’ پردھان منتری جن اوشدھی یوجنا ‘‘ کے تحت جنریک ادویات فروخت کرنے والے دوکانیں ادویات کی قلت سے بھی جوجھ رہے ہیں ۔ سرینگر  میں قائم جنریک ادویات فروخت کرنے والے  ایک دوکاندار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ لوگ جنریک ادویات کی جانب راغب ہورہے ہیں مگر ڈاکٹروں کی جانب سے جنریک ادویات تفوض نہ کرنے اور مریضوں کے نسخے موٹے حروف میں نہ لکھنے کی وجہ سے کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ مذکورہ دوکاندار نے بتایا کہ محکمہ صحت نے مریضوں کو جنریک ادویات لکھنے اور نسخے موٹے حروف میں لکھنے کی جو ہدایت ڈاکٹروں کو جاری کی تھیں اس کا زمینی سطح پر کوئی بھی اثر نہیں دکھائی دے رہا ہے۔پردھان منتری جن اوشدھی یوجنا کی ریاستی کارڈنیٹر رفعت نذیر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ پردھان منتری جن اوشدھی یوجنا کا آغاز بھارت میں سال 2008میں ہوا ہے اورسال 2011میں اسکی پہلی دوکان پنجاب کے امرتسر شہر میں کھولی گئی  اور اب اس مشن کے تحت پورے بھارت میں 2ہزار 300دوکانوں نے کام کرنا شروع کردیا ہے جبکہ سکیم کے تحت پورے بھارت میں 3ہزار دکانیں کھولنی ہیں‘‘۔ رفعت نذیر نے بتایا کہ اس وقت وادی میں سرکاری اسپتالوں کے علاوہ نجی سطح پر بھی جنریک ادویات کی دوکانیں کام کررہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری سطح پر ادویات ضلع اسپتال اننت ناگ ، پلوامہ، کولگام، کپوارہ، پولیس اسپتال سرینگر پر دستیاب ہیں جبکہ نجی سطح پر یہ دوکانیںغوثیہ اسپتال خانیار، نور باغ ،راج باغ، صنعت نگر، شوپیاں، بڈگام اور ناگام میں کھولی گئی ہیں جہاں لوگ سستے داموں میں معیاری ادویات حاصل کرسکتے ہیں۔ رفعت نذیر نے مزید بات کرتے بتایا کہ مرکزی سرکار کی اس سکیم کے تحت جموں و کشمیر میں 100دوکانیں کھولنے کا منصوبہ ہے تاہم رواں مالی سال کے آخر  تک جموں و کشمیر میں 50دوکانیں قائم ہوجائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت مرکزی اسکیم کے تحت چلنے والی دکانوںپر مریضوں کیلئے 263مختلف ادویات دستیاب ہیںجبکہ یہ تعداد 2ماہ کے اندر 600تک پہنچ جائے گی۔