ملنگا پر ایک سال کی پابندی

 کولمبو/ سری لنکا کے تیز گیند باز لست ملنگا پر معاہدہ کی مسلسل خلاف ورزی کرنے اور میڈیا میں بغیر اجازت مسلسل بیان دینے کے الزام میں ایک سال کی پابندی اور میچ فیس کا 50 فیصد جرمانہ عائد کیا گیا ہے ۔پابندی کو سردست معطل رکھا گیا ہے ۔ سری لنکاکے گیندباز نے کھیل کے وزیر دیاسر¸ جیاسیکرا کے خلاف بھی میڈیا میں کئی قابل اعتراض بیان دئے تھے جس میں انہوں نے دیاسر¸ کو 'بندر' تک کہہ دیا تھا۔ ان بیانات کے بعد ملنگا کو اس سخت کارروائی کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔ سری لنکا کرکٹ بورڈ ( ایس ایل سی) نے بدھ کو جاری بیان میں کہا کہ ملنگا کو ان کے میڈیا میں بغیر اجازت بیانات دینے پر تادیبی کمیٹی نے مجرم پایا اور ان پر ایک سال کی پابندی لگائی دی گئی۔ 33 سالہ بالر کو اپنی آئندہ ون ڈے سیریز میں میچ فیس کے 50 فیصد کا جرمانہ بھی دینا ہوگا۔ بہرحال سری لنکا کے کرکٹر پر ان پابندیوں کی وجہ سے زمبابوے کے دورے میں ان کی دستیابی پر اثر نہیں پڑے گا جہاں انہیں پہلے دو میچوں کے لیے 13 رکنی ٹیم میں شامل کیا گیا ہے ۔ جاری بیان میں کہا گیا کہ ملنگامعاملے کی جانچ کرنے والی تادیبی کمیٹی کے سامنے منگل کو پیش ہوئے تھے جہاں انہوں نے خود پر عائد الزامات اورسزا قبول کو کر تے ہوئے باقاعدہ طور پر معافی بھی مانگ لی تھی۔خصوصی طور پر طلب کی گئی ایگزیکٹو کمیٹی نے ملنگا پر ایک سال کی پابندی عائد کی ہے جو چھ ماہ میں ختم ہو جائے گی، لیکن یہی غلطی دوبارہ ہونے پر باقی چھ ماہ کی مدت میں بھی انہیں معطل رکھا جائے گا۔ اس کے علاوہ اگلے ون ڈے سیریز میں میچ فیس پر 50 فیصد جرمانہ بھی لگے گا۔واضح رہے کہ سری لنکا ئی بورڈ کے ساتھ معاہدہ کی فاسٹ بالر ملنگا نے دو بار خلاف ورزی کی ہے ۔معاہدے کے مطابق بورڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کی اجازت کے بغیر انہیں میڈیا میں کچھ بھی کہنے کا حق نہیں ۔ ملنگا نے 19 جون کو اور پھر 21 جون کو معاہدے کی خلاف ورزی کی جس کے بعد بورڈ کی ایگزیکٹو کمیٹی نے فورا ً تادیبی کارروائی کا فیصلہ کیا ۔ ملنگا کے معاملے کی تین رکنی کمیٹی نے سماعت کی تھی جس میں بورڈ کے سیکرٹری موہن ڈی سلوا، سی ای او ایشلے ڈی سلوا اور تادیبی کمیٹی کے چیئرمین اسیلا ریکاوا شامل تھے ۔یو این آئی ۔