مزید خبریں

دفعہ 370 منسوخی کے بعد جموںکشمیر میں ترقی کے میدان میں تبدیلیاں نظر آرہی ہیں

موجودہ حکومت جموں و کشمیر کو ترقی کے شاندار راستے پر لانے کی پوری کوشش کر رہی ہے:راج کمار رنجن سنگھ 

ادھم پور//جموں و کشمیر سے دفعہ 370 کو منسوخ کرنے کے بعد ترقی کے میدان میں بہت سی تبدیلیاں نظر آرہی ہیںکی بات کرتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت برائے امور خارجہ اور تعلیم ڈاکٹر راج کمار رنجن سنگھ نے کہا کہ موجودہ حکومت جموں و کشمیر کو ترقی کے شاندار راستے پر لانے کی پوری کوشش کر رہی ہے۔ جموں کے ادھم پورہ ضلع میں عوامی آوٹ ریچ پروگرام کے تحت مرکزی وزیر مملکت برائے امور خارجہ اور تعلیم ڈاکٹر راج کمار رنجن سنگھ گورنمنٹ ہائی سکول دیہاری میں منعقدہ پروگرام کے دوران عوامی مطالبات سنے۔اس موقعہ پر انہوںنے کہا کہ جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے کے بعد ترقی کے میدان میں بہت سی تبدیلیاں نظر آرہی ہیں جیسے میگا پروجیکٹوں کی تکمیل ، جاری ترقیاتی کاموں کی پیش رفت اور جموں و کشمیر میں مختلف مرکزی اسپانسر اسکیموں پر عمل درآمد ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت جموں و کشمیر کو ترقی کے شاندار راستے پر لانے کی پوری کوشش کر رہی ہے۔جموں و کشمیر کے قدرتی اثاثوں اور قدرتی خوبصورتی پر تبصرہ کرتے ہوئے ڈاکٹر رنجن نے کہا کہ جموں خطے میں سیاحت کی بہت بڑی صلاحیت ہے اور ساتھ ہی سبزیوں کی مقامی پیداوار کو ایک منظم منصوبے میں تبدیل کرنے کی صلاحیت ہے۔عوامی آوٹ ریچ پروگرام کے دوران لوگوں سے بات چیت کرتے ہوئے ، وزیر نے علاقے میں تمام سرکاری اسکیموں کے نفاذ کی صورتحال پر تفصیلی رائے لی۔ انہوں نے کہا کہ اس آوٹ ریچ پروگرام کا بنیادی مقصد مرکزی طور پر سپانسر کردہ سکیموں کے نفاذ کا جائزہ لینا اور لوگوں سے رائے لینا ہے۔نئی تعلیمی پالیسی 2020 کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ نئی پالیسی تعلیم کے شعبے میں اصلاحات کی راہ ہموار کرتی ہے اور حکومت طلباء کو معیاری تعلیم کی فراہمی کے لیے پرعزم ہے۔
 
 
 

ڈوڈہ میں کووڈ کے 6 نئے مثبت معاملات 

۔3 مریض صحتیاب ،ساڑھے تین لاکھ سے زائد ٹیکے لگائے گئے 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع میں کورونا وائرس کے 6 نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیں اور 3 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق اتوار کے روز ڈوڈہ، بھدرواہ، ٹھاٹھری ،گندوہ و عسر میں ہوئی کوؤڈ جانچ کے چھ افراد کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے جنہیں ہوم قرنطینہ میں رکھا گیا ہے اور تین مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ اس طرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد 69 و شفایاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 7555 پہنچ گئی ہے۔ضلع میں اب تک کووڈ 19 سے 133 افراد فوت ہوئے ہیں اور ساڑھے تین لاکھ سے زائد افراد کو ٹیکے لگائے گئے ہیں۔
 
 
 
 

کووڈ ایس اوپیزکی خلاف ورزی پر 23ہزارکا جرمانہ  | 3140 ٹیکے لگائے گئے ، 1419 نمونے جمع کئے گئے 

رام بن//ضلع رام بن میں کووڈ پروٹوکول کو نافذ کرنے کے لیے نافذ کرنے کی مہم کو جاری رکھتے ہوئے انفورسمنٹ ٹیموں نے خلاف ورزی کرنے والوں کو چہرے کے ماسک پہننے کے بغیر گھومنے اور جسمانی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر جرمانہ کیا۔نافذ کرنے والی ٹیموں نے اپنے متعلقہ دائرہ کار میں معائنہ کے دوران 22ہزار800 روپے جرمانہ وصول کیا ۔انفورسمنٹ افسران نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ چہرے کے ماسک پہنیں اور جسمانی فاصلہ برقرار رکھیں اس کے علاوہ اپنے قریبی سی وی سی پر کوویڈ ویکسی نیشن کی خوراکیں لیں۔ ضلع امیونائزیشن آفیسر ڈاکٹر سریش نے بتایا کہ ضلع رام بن میں آج 3140 افراد کو پہلی اور دوسری کوویڈ ویکسین کی خوراک دی گئی۔یف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر محمد فرید بھٹ کی طرف سے جاری کردہ روزانہ بلیٹن کے مطابق محکمہ صحت نے 1419 نمونے جمع کیے ہیں جن میں 302 RT-PCR اور 1117 RAT نمونے شامل ہیں اس کے علاوہ 3140 افراد کو کوویڈ ویکسین ضلع کے مخصوص ویکسی نیشن مراکز میں دی گئی ہے۔
 
 
 

پتنی ٹاپ میں پہلا مون سون فیسٹول اختتام پذیر

پتنی ٹاپ//دُنیا کے مشہور پہاڑی سٹیشن پتنی ٹاپ میں پہلا مون سون فیسٹول جموںوکشمیر اور اس سے باہر مشہور فنکاروں اور گلوکاروں کی دلچسپی ثقافتی اور موسیقی پروفارمنس کے ساتھ اِختتام پذیر ہوا۔دوسرے دِن کو علی برادراںاور اَرمان بیدل کی پنچابی نے اَپنے فن کا بھرپور مظاہرہ کیا ہے۔جموں خطے کے فولک آرٹ جینٹس جن میں مشہور روما لورام اینڈ پارٹی ، رام ڈٹا اینڈ پارٹی ، کڈڈانس پنچری پارٹی ، دیپک ، وِشاکھا اور دیویا بھارتی شامل تھے۔کھیلوں میں والی بال اور کبڈی کے مقابلے بھی مقامی یوتھ کلبوں کو شامل کر کے منعقد کئے گئے اور جیتنے والوں کو نوازا گیا۔دوروزہ مون سون فیسٹول کو صوبائی کمشنر جموں ڈاکٹر راگھو لنگر نے اے ڈی جی پی مکیشن سنگھ کے ہمراہ 25؍ ستمبر 2021ء کو ناظم سیاحت جموںوویکا نند رائے ،ضلع ترقیاتی کمشنر اودھمپور اندو کنول ، ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن مسرت الاسلام ، ایس ایس پی رام بند پی ڈی نیتیا اور سی اِی او پتنی ٹاپ ڈیولپمنٹ اَتھارتی شیر سنگھ کی موجودگی میں کھول دیا تھا۔فیسٹول کے پہلے دِن کو رنکو مانسر والا،دیپک اور گروپ اور پنجابی گلوکار پربھ گل کی شاندار فن کا مظاہرہ دیکھنے کو ملا۔پہلے دن رنکو مانسر والا ، دیپک اور گروپ ، اور پنجابی گلوکار پربھ گل کی شاندار پرفارمنس دیکھی گئی۔پتنی ٹاپ ڈیولپمنٹ اَتھارٹی ، ڈائریکٹوریٹ آف ٹوراِزم جموں، ضلعی اِنتظامیہ اودھمپور اور رام بن کے زیر اہتمام میلے ’’ آزادی کا اَمرت مہااُتسو‘‘ کے ایک حصے کے طورپر سیاحوں کو روایتی ثقافت ، موسیقی ، ضیافتیں ، دستکاری ، ہینڈ لوم ، تفریحی کھیلوں کے علاوہ مشہور فنکاروںکی پرفارمنس سے بھی روشنا س کرایا گیا۔پتنی ٹاپ ڈیولپمنٹ اتھارٹی ، ڈائریکٹوریٹ آف ٹورزم جموں ، ضلعی انتظامیہ ادھم پور اور رامبان کے زیر اہتمام ، میلہ آزادی کا امرت مہوتسو کے حصے کے طور پر ، سیاحوں کو روایتی ثقافت ، موسیقی ، کھانوں ، دستکاری ، ہینڈلوم ، تفریحی کھیلوں کے علاوہ مشہور فنکاروں کی پرفارمنس سے بھی روشناس کیاگیا۔ صوبائی کمشنر جموں نے پی ڈی اے اور ڈائریکٹوریٹ ٹوراِزم کو اِس کامیاب اقدام کے لئے مبارک باد ی۔کیوں اس میں تقریبا ً6000سیاح وارِد ہوئے۔ناظم سیاحت جموں نے کہا کہ یہ فیسٹول خطے میں سیاحتی حوصلہ اَفزائی کرے گا اور پتنی ٹاپ سرکٹ میں پُر کشش مقامات کو کو فروغ دے گا۔سی ای او پی ڈی اے نے کہا ’’ فیسٹول کا مقصد پتنی ٹاپ اور اس کے آس پاس مختلف اقسام کی سیاحت کو فروغ دینا ہے جس میںسدھ مہادیو ، شنکھپال ، گوری کنڈ ، ناگ مندر ، شیوگلی ، مانٹالائی شامل ہے۔‘واضح رہے کہ جون کے دوسرے ہفتے میں لاک ڈائون میں نرمی کے بعد سے تقریباًتین لاکھ سیاحوں نے پتنی ٹاپ سرکٹ کا دورہ کیا۔دورانِ فیسٹول فِٹ اِنڈیا، سوچھ بھارت ، پی ڈی اے کے اقدام گرین پتنی ٹاپ ، کلین پتنی ٹاپ جیسے سرکاری سکیموں پر زور دیا گیا ۔پتنی ٹاپ ڈیولپمنٹ اَتھارٹی اور محکمہ سیاحت کی جانب سے فنکاروں کو نوزاز گیا۔
 
 
 

 مرکزی وزیر فوڈ پروسسنگ اِنڈسٹریز کا دورۂ بارہمولہ | فروٹ گرئوورس کے ساتھ تبادلہ خیال اوراعلیٰ کثافت والے باغات کا معائینہ کیا  

 بارہمولہ//مرکزی حکومت کے عوامی رسائی پروگرام کے ایک حصے کے طور پر مرکزی وزیر برائے فوڈ پروسسنگ اِندسٹری پشو پتی کمار پارس نے آج ضلع بارہمولہ کے پٹن علاقے کا دورہ کیا اور وہاں اُنہوں نے فروٹ گروئورس کے ساتھ تبادلہ خیال کیا اور متعدد دیگر سماجی و اِقتصادی ترقیاتی سرگرمیاںاَنجام دیں۔مرکزی وزیر نے دورے کا آغاز باغبانی اور دیگر متعلقہ محکموں کی جانب سے لگائے گئے سٹالوں کا اِفتتاح کرنے سے کیا۔یہ سٹال سپانسرڈسکیموں اور پرگراموں کو پیش کرنے کے علاوہ مختلف پھلوں کی اقسام کو ظاہر کر رہے تھے جو کہ علاقے میں مقامی طورپر اُگائی جاتی ہیں۔مرکزی وزیر برائے فوڈ پروسسنگ اِندسٹری پشو پتی کمار پارس نے پٹن علاقے کے کچھ ترقی پسند کاشت کاروں کے ساتھ بھی بات چیت کی جس دوران اُنہوں نے وزیر موصوف کے ساتھ اَپنے تاثرات اور کاشتکاری کے تجربات شیئر کئے۔وزیر موصوف نے اُن پر زور دیا کہ وہ اَپنے شعبوں میں جدید اور سائنسی طریقوں کو اَپنائیں اور اُنہوں نے مزید کہا کہ اِس طرح کی مداخلت پیداوار اور پیداواری صلاحیت کو بڑھانے کی صلاحیت رکھتی ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ فوڈ پروسسنگ شعبے میں بے پناہ صلاحیت موجود ہے اور باغبانی مصنوعات کے ویلیو ایڈیشن کی ضرور ت ہے تاکہ بہتر منافع حاصل ہوسکے۔ مزید برآں ، اُنہوںں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ مرکزی حکومت کسانوں کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ اُن کی آمدنی دوگنا کرنے کے لئے پُر عزم ہے۔فروٹ گروئورس نے کچھ اہم مسائل اور مطالبات مرکزی وزیرموصوف کے گوش گزار کئے جن میں کولڈ سٹوریج سہولیت کا قیام، مارکیٹ اِنٹرونشن سکیم (ایم آئی ایس) کا جاری رکھنا، قومی شاہراہ پر گاڑیوں کی پریشانی سے آزاد نقل وحمل شامل ہے جو اہم عوامی اہمیت کی دیگر شکایات کے درمیان مختلف مارکیٹوں میں پھل لے کر جارہی ہیں۔مرکزی وزیر برائے فوڈ پروسسنگ اِندسٹری پشو پتی کمار پارس نے اُن کو بغور سنا اور یقین دِلایا کہ تمام جائز شکایات متعلقہ حکام کے ساتھ ان کے بروقت ازالے کے لئے اُٹھائی جائیں گی۔اُنہوں نے کہا کہ موجودہ عوامی رَسائی پروگرام کا مقصد عوامی مطالبات کو نچلی سطح پر سننا ہے تاکہ ایک عام آدمی مختلف فلاحی سکیموں اور پروگراموں کے فوائد حاصل کرسکے۔اُنہوں نے کچھ اعلیٰ کثافت والے باغات کا معائینہ بھی کیا تاکہ باغبانی سے متعلقہ مختلف پہلوئوں کا جائزہ لیا جاسکے۔دریں اثنا ، مرکزی وزیر نے کسانوں میں اِجازت نامے تقسیم کئے جنہیں وزیر اعظم ترقیاتی پروگرام کے تحت اِنتہائی سبسڈی والی کاشتکاری مشینری خریدنے کا اِختیار دیا گیا ہے۔اِس موقعہ پر ضلع ترقیاتی کمشنر بارہمولہ بھوپندر کمار ، ناظم باغبانی اعجاز احمد بٹ اور دیگر اعلیٰ اَفسران موجود تھے۔
 
 
 

مرکزی وزیر امور ِ نوجوان و کھیل کودکا زوجیلہ ، زیڈ موڈ ٹنل منصوبوں کی پیش رفت کا معائینہ 

گاندربل//مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات اور امور ِ نوجوان و کھیل کود انوراگ سنگھ ٹھاکر کل شام مرکزی حکومت کے عوامی رَسائی پروگرام کے تحت ضلع گاندربل کے دو روزہ دورے پر سونہ مرگ پہنچے ۔مرکزی وزیر نے پہلے دِن زوجیلہ اور زیڈ موڑ ٹنل منصوبوں کا معائینہ کیا۔زوجیلہ ٹنل پروجیکٹ کے دورے کے دوران جس کا تصور یونین ٹریٹری لداخ کو تمام موسمی رابطے فراہم کرنے کا ہے۔متعلقہ افسران نے جانکاری دی کہ زوجیلہ ٹنل پر کام مکمل صلاحیت میں ہے اور این ایچ ڈی سی ایل سردیوں کے مہینوں میں بھی کام جاری رکھنے کے لئے تیار ہے ۔ وزیر موصوف نے پروجیکٹ کو شیڈول کی تاریخ سے پہلے مکمل کرنے کے لئے ہرممکن کوشش کرنے پر زور دیا۔اِس موقعہ پر گفتگوکرتے ہوئے وزیر موصوف نے کام کی پیش رفت پر اطمینان کا اِظہار کیا اوراُنہوں نے کہا کہ زوجیلہ ٹنل قومی سلامتی ، ترقی اور سیاحت کے حوالے سے دونوں یوٹیوں جموںوکشمیر اور لداخ کے حوالے سے بہت اہمیت کی حامل ہے کیوںکہ یہ لداخ ۔ کرگل اور لیہہ سال بھر رابطہ فراہم کرے گی ۔ اُنہوں نے ملک کی مختلف اہم ٹنلوں ، ریل اور سڑک کے منصوبوں پر مزید روشنی ڈالی جو حکومت نے ترقی کے ساتھ ساتھ سرحدی سلامتی کو مد نظر رکھتے ہوئے ترجیحی بنیادوں پر مکمل کئے اوراُنہوںنے کہا کہ گزشتہ چند برسوں سے پورے جموںوکشمیر میں مختلف بنیادی ڈھانچہ ترقیاتی پروجیکٹ جموں و کشمیر میں شدو مد سے جاری ہے۔یہاں یہ بات ذکر کرنا ضروری ہے ، زوجیلہ ٹنل پروجیکٹ سائٹ موجودہ شاہراہ (این ایچ۔01) پر واقع ہے جو سونہ مرگ( جموں کشمیر یوٹی) سے شروع ہوتا ہے اور2700 میٹر سے 3300 میٹر کی بلندی پر مینامرگ (لداخ یوٹی  )پر ختم ہوتا ہے۔اِس طرح زوجیلہ ٹنل (13.2کلومیٹر) ایشیا کے علاقے میں اِس بلندی پر سب سے لمبی ٹنل تعمیر ہو رہی ہے۔سائٹ کا موجودہ مقام زلزلہ زدہ زون IV میں آتا ہے اور تمام احتیاطی تدابیر منصوبے میں فراہم کردہ ڈھانچے کی حفاظت کے لئے فراہم کی گئی ہیں۔زیڈ ۔موڑ ٹنل پر کام کی پیش رفت کا معائینہ کرتے ہوئے این ایچ آئی ڈی سی ایل کے اَفسران نے وزیر موصوف کو جانکاری دی کہ یہ پروجیکٹ ڈی بیایف او ٹی موڈ پر چل رہا ہے جس کی تخمینہ لاگت2,378 کروڑ روپے ہے۔مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات اور امور ِ نوجوان و کھیل کود انوراگ سنگھ ٹھاکرکو فزیکل پیش رفت کے بارے میں جانکاری دی گئی کہ ٹنل کے سروں کی کامیابی 16؍ ستمبر 2021ء کو حاصل ہوچکی ہے ۔ اس کے علاوہ مرکزی ٹنل جو 6,412 میٹر لمبی ہے باقاعدہ دو طرفہ ٹریفک کے لئے کام شدو مد اور تیزی سے جاری ہے۔وزیر موصوف کو جانکاری دی کہ ایمرجنسی حالات میں بھی ٹریفک کی محفوظ نقل و حمل کے لئے لے بائیز،موٹراور پیدل چلنے والے راستے ، آگ بجھانے کے مقامات ، ایس او ایس مواصلات رکھے جاتے ہیں۔مرکزی وزیر نے کام کی پیش رفت پر اطمینان کا اِظہار کرتے ہوئے کہا کہ زیڈ ۔ موڑ ٹنل مقامی لوگوں اور سیاحوں کو سردیوں کے موسم میں سونہ مرگ تک رَسائی میں سہولیت فراہم کرے گی۔اور بالعموم جموںوکشمیر اور بالخصوص مقامی لوگوں کو سماجی و اِقتصادی فروغ میں سہولیت فراہم کرے گی۔اِس موقعہ پر ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل کرتیکا جیوتسنا ، ایس ایس پی گاندربل نہال بور کر اور اَفسران موجود تھے۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر گاندربل ، کرتیکا جیوتسنا ، ایس ایس پی گاندربل نہال بورکر اور افسران موجود تھے۔
Box
 
 
 

  زیڈ پی ای او، کھیل میدان کا سنگِ بنیاد رکھا اور پی ایم جی ایس وائی سڑک کا اِفتتاح کیا 

 گاندربل//مرکزی وزیر برائے اطلاعات و نشریات ، نوجوانوں کے امور اور کھیل مسٹر انوراگ سنگھ ٹھاکر نے زیڈ پی ای او اور زونل پلے فیلڈ کا سنگِ بنیاد رکھا اور کِچپورہ کنگن میں پی ایم جی ایس وائی سڑک کا افتتاح کیا ۔ وزیر نے کِچپورہ کنگن کا دورہ کیا جہاں انہوں نے زونل فزیکل ایجوکیشن آفس ( زیڈ پی ای او ) اور 1.14 کروڑ روپے کی لاگت سے منظور شدہ زونل لیول پلے فیلڈ کا سنگِ بنیاد رکھا ۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ جموں و کشمیر میں قابلیت کی کوئی کمی نہیں ہے لیکن ضرورت اس بات کی ہے کہ اس پرتیبھا کو آگے بڑھایا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو سہولیات کی ضرورت ہے اور مرکزی حکومت تمام سہولیات کو یقینی بنائے گی تا کہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ علاقے میں ٹیلنٹ پھلتا پھولتا رہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت موجودہ کھیلوں کے بنیادی ڈھانچے اور یو ٹی کیلئے سہولیات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے پُر عزم ہے تا کہ زیادہ سے زیادہ نوجوان کھیلوں میں شامل ہوں اور مختلف سطحوں پر جموں و کشمیر کی نمائندگی کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کرنے کیلئے مرکزی حکومت نے پی ایم ڈیولپمنٹ پلان کے تحت پلے فیلڈز اور انڈور سٹیڈیم کی ترقی کیلئے 200 کروڑ روپے مختص کئے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ جموں و کشمیر میں مصنوعی ٹرفز ، ہاکی اور فُٹ بال گراؤنڈز کی تیاری کیلئے مزید 33 کروڑ روپے منظور کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے اجتماع پر زور دیا کہ وہ یکم اکتوبر 2021 سے شروع ہونے والے ملک بھر کے ’’ کلین انڈیا مشن ‘‘ میں شامل ہوں ۔ مرکزی وزیر کا استقبال کرتے ہوئے لفٹینٹ گورنر کے مشیر فاروق احمد خان نے مرکزی حکومت کی اس میگا آؤٹ ریچ پروگرام کو جموں و کشمیر یو ٹی میں منعقد کرنے کی کوششوں کی تعریف کی ۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر گاندر بل کرتیکا جیوتسنا ، ڈائریکٹر یوتھ سروسز اینڈ سپورٹس ، ایس ایس پی گاندر بل اور محکمہ کے دیگر حکام بھی موجود تھے ۔ بعد ازاں وزیر نے کچپورہ کنگن میں منعقدہ ایک رنگا رنگ تقریب کے دوران طلباء میں سرٹیفکیٹ ، یاد گار اور کھیلوں کی کٹس تقسیم کیں ۔ اس موقع پر وزیر نے ثقافتی پروگرام اور مارشل آرٹس ، ٹگ آف وار ، کبڈی اور والی بال میں کھیلوں کے مختلف مقابلوں کا ڈیمو بھی دیکھا ۔ وزیر نے کنگن کا بھی دورہ کیا جہاں انہوں نے بونی باغ کنگن میں 136.67 لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر شدہ پی ایم جی ایس وائی سڑک کا افتتاح کیا جو بانی ناغ بالا رہائش گاہ کو ہائی وے سے جوڑتی ہے ۔ اس دوران انہوں نے بونی باغ کے مقامی لوگوں سے بھی بات چیت کی اور علاقے میں ترقیاتی ضروریات کے بارے میں دریافت کیا ۔ مقامی لوگوں نے وزیر کا علاقہ کا دورہ کرنے اور مذکورہ سڑک کا افتتاح کرنے پر ان کی تائید کی جو کہ مقامی لوگوں کی دیرینہ مانگ تھی ۔ 
 
 

 محکمہ اطلاعات نے دودھ پتھری میں ادبی و ثقافتی مجلس کا اِنعقاد کیا

 ودھ پتھری خانصاحب//کشمیر مرکزادب وثقافت ،کلچرل یونٹ محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ اور محکمہ سیاحت کے باہمی اشتراک سے خوبصورت ترین سیاحتی مقام دودھ پتھری بڈگام میں ایک پر وقار اَدبی سمینار کا اہتمام کیا گیا۔ ادبی سمینار میں ایڈوکیٹ بابا خالق کی طرف سے حضرت شیخ العالم ؒ پر لکھی گئی تصنیف۔’’ سخنات الحیات ‘‘اور پروفیسر محمد زمان آزردہ صاحب کی تصنیف’’ننہ پوش‘‘ کے جدید ایڈیشن کی رسم رونمائی کے علاوہ محفل مقالات اور محفل مشاعرہ بھی منعقدہوا۔اِس سمینار میں وادی کے سرکردہ ادباء، شعرا ، دانشور اور ادب نواز شخصیات نے شمولیت کی۔ 25 ؍ستمبر کی شام آٹھ بجے سے لے کر 11 بجے رات تک محفل مشاعرہ منعقد ہوا جس کی صدارت پروفیسر شاد رمضان نے کی۔ اِس میں مقتدر شعرا نے اپنا تازہ کلام سنایا جن میں علی احسن ، یونس وحید،مشتاق محرم،پروفیسر فاروق فیاض ،پروفیسر زمان آزردہ، سیّد شکیل شان اور دیگر قابل ذکر ہیں۔ نظامت کے فرائض عنایت گل نے انجام دئیے۔ 26 ؍ماہ ستمبر گیارہ بجے صبح دو کتابوں کی رسم رونمائی اَنجام دی گئی پہلی کتاب ’’ سخنات الحیات‘‘ مصنف بابا خالق مہارازا۔ اس مجلس کی صدارت ادبی مرکز کمراز کے صدر محمد امین بٹ نے کی جبکہ مہمان خصوصی پروفیسر محمد زمان آزردہ صاحب تھے۔ ایوان صدارت میں پروفیسر شاد رمضان اور سیّف شکیل شان بھی موجود تھے۔ اس کتاب پر مشتاق محرم ، علی احسن اور عنایت گل نے مقالے پڑھے۔ اس کتاب کے حوالے سے یہ بات قابل توجہ ہے کہ سات سو صفحات پر مشتمل کتاب جس میں کلام شیخ العالم  ؒاور فقیر صدر صاحب کا نادر صوفیانہ کلام درج کیا گیا ہے۔ پروفیسر محمد زمان آزردہ کی لکھی کتاب ’’ ننہ پوش ‘‘ کی رسم رونمائی انجام دی گئی۔اس مجلس کی صدارت کے فرائض پروفیسر فاروق فیاض نے انجام دئیے جبکہ ایوان صدارت میں پروفیسر شاد رمضان اور مشتاق محرم بھی موجود تھے۔ اس موقعہ پرمحکمہ اطلاعات کے کلچرل شعبے کی طرف سے محفل موسیقی کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔ یہ شاندار سمینار انتہائی خوش اسلوبی کے ساتھ اختتام پذیر ہوا۔ 
 
 
 

 اپنی پارٹی کے نائب صدر کا دورہ بانہال، عوامی جلسے سے خطاب کیا

محمد تسکین
بانہال//جموں کشمیر اپنی پارٹی کے نائب صدر اور کانگریس کے سابقہ ممبر اسمبلی گول اور کانگریس کی طرف سے وزیر مملکت رہ چکے چودھری اعجاز احمد خان نے اتوار کو بانہال کا دورہ کیا اور میونسپل پارک بانہال میں ایک جلسے سے خطاب کیا۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں اعجاز احمد خان نے کہا کہ مرکزی سرکار ریاست کے لوگوں کیلئے سنجیدہ نہیں ہے اور عوام کو گونا گوں مشکلات کا سامنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ ناکام ہو چکی ہے اور اس ناکامی کی تصدیق کیلئے مرکزی سرکار پارلیمنٹیرینز کو ریاست جموں و کشمیر میں بھیج رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ دفعہ 370 کی بحالی کیلئے لڑائی سپریم کورٹ سے لڑی جا سکتی ہے اور اس مقام تک پہنچنے کیلئے ریاست جموں و کشمیر میں جمہوری نظام کی بحالی اولین ترجیحات میں ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر اپنی پارٹی ریاست میں اسمبلی انتخابات جلد از جلد منعقد کروانے کے حق میں ہے تاکہ عوامی سرکار قائم کی جائے تاکہ بے شمار عوامی مسائل کا مداوا ہوسکے ۔ چودھری اعجاز احمد خان نائب صدر جموں و کشمیر اپنی پارٹی نے مزید کہا کہ پی ایم اے وائی دیگر سکیموں کا مستحق افراد تک فائدہ نہیں پہنچ رہا ہے اور موجودہ دور میں لوگوں کی زندگی دشوار بن گئی ہے۔ 
 
 

ضلع ترقیاتی کونسل ممبران کا وفد وزیر مملکت سے چناب بھون میں ملاقی

عاصف بٹ
کشتواڑ//کشتواڑ ضلع ترقیاتی کونسل کے ممبران کا وفد چیئرپرسن کی سربراہی میں کشتواڑ کے دورے پر آئے مرکزی وزیر مملکت جل شکتی و قبائلی امور کے وزیر بھشیور ٹنڈو سے چناب بھون میں ملاقاتی ہوئے۔چیئرپرسن پوجا ٹھاکر نے وزیر مملکت کو کشتواڑ کے سبھی بلاکوں میں عوام کو  پانی کی فراہمی کو لیکر پیش آرہی مشکلات سے آگاہ کیا اور ان سے مطالبہ کیا کہ وہ مزید رقوقات محکمہ کو واگزار کرے تاکہ عوام کی مشکلات کا ازالہ ممکن ہوسکے جبکہ انھوں نے عوام کی مشکلات کے خاتمے کیلئے مزید ملازمین کو لگانے کی مانگ بھی کی۔ انھوں نے دوردراز علاقہ جات بشمول مڑواہ، دچھن ، واڑون ، پاڈر، بونجواہ میں محکمہ جل شکتی کے جاری کاموں کو موسم سرما سے قبل مکمل کرنے کو کہا۔چیئرپرسن نے وزیر مملکت سے قبائلیوں کے مسئلے پر بھی تبادلہ خیال کیا اور ان لوگوں کو درپیش مشکلات اور مسائل کو اٹھایا۔ انہوں نے کشتواڑ میں ایک قبائلی بھون تعمیر کرنے کا بھی مطالبہ کیا جبکہ چھاترو و ناگسنی بلاکوں میں قبائلی ہسپتال کھولنے کا بھی مطالبہ کیا۔ انھوں نے سیدھان ، سنتھن اور تھیمبار میں میڈیکل ڈسپنسریز بنانے کا مطالبہ بھی اٹھایا۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 

بھلیسہ کے چلی کھورنا بگڑا میں کرکٹ ٹورنامنٹ اختتام پذیر 

نارتھ زون نیلی نے ایم سی سی گندوہ کو 35 رنز سے شکست دی 

اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ڈوڈہ کی تحصیل بھلیسہ کے دور افتادہ علاقہ چلی کھورنا بگڑا میں قومی یکجہتی کے نام سے منعقد کرکٹ ٹورنامنٹ اختتام پذیر ہوا۔ لائن کلب و ٹوکن ٹرسٹ بھلیسہ کے اشتراک سے منعقد ٹورنامنٹ کا فائنل میچ ایم سی سی گندوہ و نارتھ زون نیلی کے درمیان کھیلا گیا جس نارتھ زون نے اپنی مد مقابل ٹیم کو 35 رنز سے شکست دی۔ٹورنامنٹ کے اختتام پر ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں سابق رکن اسمبلی بھدرواہ دلیپ سنگھ پریہار نے مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کی۔اس دوران دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی بھی کی گئی۔دلیپ سنگھ نے لائن کلب و ٹوکن ٹرسٹ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے قومی یکجہتی کے نام پر کرکٹ ٹورنامنٹ کا انعقاد کیا جو کہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔انہوں نے نوجوانوں پر زور دیا کہ اپنی تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیل کود میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور اپنے علاقہ کا نام روشن کریں۔اس موقع پر بولتے مقررین نے حکام سے علاقہ میں کھیل کود کی سرگرمیوں کو بڑھاوا دینے کے لئے کھیل کے میدانوں کی تعمیر کرنے و انفراسٹرکچر کی فراہمی کا حکام سے مطالبہ کیا۔