مریضوں کی بہتر طبی نگہداشت: ہسپتالوں کو ضروری آلات سے لیس کرنا ضروری: منیال

سرینگر //صحت و طبی تعلیم کے وزیر دیوندر کمار منیال نے کہا ہے کہ حکومت طبی بنیادی ڈھانچے کو اپ گریڈ کرنے اور ہسپتالوں میں افرادی قوت بڑھانے کے سلسلے میں تمام تر اقدامات کر رہی ہے تا کہ مریضوں کو بہتر طبی نگہداشت فراہم کی جاسکے۔محکمہ صحت کشمیر کے کام کاج کی ستائش کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ موجودہ دور میں تمام ہسپتالوں کو ضروری آلات سے لیس کرنا اور ڈاکٹر و نیم طبی عملہ کی دستیابی بنانا بہت ضروری ہے۔ان باتوں کا اظہار وزیر موصوف نے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا جو محکمہ صحت کشمیر کے کام کا ج کا جائیزہ لینے کے لئے طلب کی گئی تھی۔انہوں نے کہا کہ پچھلے سات ماہ کے دوران اپتھالمالوجیک نے 60 کارنئیل ٹرانس پلانٹ انجام دیئے ہیں۔ اس کے علاوہ ہِپ، گھٹنے اور کندھے کے ٹرانسپلانٹ پہلے سے کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جی ایم سی کے ماہرین کی نگرانی میں رینل ٹرانسپلانٹ آپریشن انجام دیئے جائیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ ایسے حالات میں اپتھالمالوجیک اور آرتھو پیڈک شعبوں کو مزید مستحکم کیا جائے گا۔میٹنگ کے دورا ن وزیر کو عملہ کی کمی کے بارے میں مطلع کیا گیا ۔ اس کے علاوہ کچھ معاملوں میں ادویات کی فراہمی کی شکایات بھی موصول ہورہی ہیں۔وزیر نے ہسپتال انتظامیہ کو یقین دلایا کہ مستقبل قریب میں تمام طرح کی مشکلات دُور کی جائیں گی تا ہم وزیر نے انتظامیہ کو ہدایت دی کہ وہ ہسپتال کی دیدہ ذیبی اور صحت و صفائی کی جانب خصوصی توجہ دیں۔ انہوں نے میڈیکل ایجوکیشن کے معیار میں بہتری لانے کے بھی احکامات دیئے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے میڈیکل کالجوں سے فارغ ہونے والے با صلاحیت ڈاکٹر اس قابل ہوں کہ وہ ملک کے دیگر ڈاکٹروں کے ساتھ کام کرسکیں۔میٹنگ میں وزیر مملکت برائے صحت و طبی تعلیم آسیہ نقاش،پرنسپل سیکرٹری ہیلتھ، کمشنر سیکرٹری ہیلتھ، پرنسپل جی ایم سی سرینگر، ایم ڈی، جے اینڈ کے میڈیکل سپلائیز کارپوریشن لمٹیڈ ، مختلف شعبوں کے سربراہاں اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔