مختلف حادثوں میں چار نوجوان لقمہ اجل

سرینگر//بڈگام میں شالی گنگا نالہ میں ایک کم عمر لڑکا ڈوب کر فوت ہو گیا ہے جبکہ کولگام اور سوناواری میں دو نوجوان بجلی کرنٹ لگنے سے ہلاک ہوئے جبکہ ان حادثوں میں ایک اور شخص زخمی ہوا ۔ ادھر ضلع کپوارہ میں گزشتہ رات ایک مکسر اُلٹنے سے اس کی زد میں آکر ایک نوجوان لقمہ اجل بن گیا ۔ضلع بڈگام میں ایک کم عمر لڑکا عرفان احمد ولد عبدالرشید بٹ ساکن آری گام بڈگام ایک نالہ میں ڈوب گیا۔  اطلاعات کے مطابق یہ لڑکا نالے پر بنے عارضی پل پر چل رہاتھا کہ اس دوران توازن کھوکر وہ نالے میں گرگیا۔مقامی لوگوں اور پولیس نے لڑکے کی تلاش شروع کردی تاہم اس کو پانی سے باہر نکالنے میں وہ کامیاب نہیں ہوئے اور اس کی لاش ہنوز زیر آب ہے اور آخری اطلاع ملنے تک لاش کو ڈھونڈنے کیلئے مہم جاری تھی ۔ ادھر ضلع کولگام کے شرت علاقے میں دو نوجوان ایک ترسیلی لائن کی زد میں آگئے جن کو فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا جہاں ذاکر احمد کھانڈے ولد شبیر احمد کھانڈے کو ڈاکٹروں نے مردہ قراردیا جبکہ زخمی نوجوان کی شناخت شاہنواز احمد ڈار ولد شبیر احمد ڈار کے بطور ہوئی ہے ۔ دونوں کا تعلق شرت کولگام سے بتایا جاتا ہے ۔ پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرلیا ہے ۔بانڈی پورہ میں بجلی کا کرنٹ لگنے سے ایک طالب علم کی موت واقع ہوگئی۔  بانڈی پورہ میں سوناواری کے نیسبل علاقے سے تعلق رکھنے والا دسویں جماعت کا طالب علم بجلی کرنٹ لگنے سے ہلاک  ہو گیا۔کمسن طالب علم کی حادثاتی موت کے بعد علاقہ میں کہرام مچ گیا۔مقامی باشندوں کے مطابق یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب ایک کمسن طالب علم سبزی کے باغیچے کو سیراب کر رہا تھا کہ اچانک وہ موٹر میں لگی بجلی تار کے راست رابطے میں آیا۔مقامی باشندوں کے مطابق کرنٹ لگنے کے فوراً بعد طالب علم کی موقع پر ہی موت واقع ہو گئی۔ہلاک ہونے والے طالب علم کی شناخت نسبل، سوناواری سے تعلق رکھنے والے زاہد حمید تیلی ولد عبدالحمید تیلی کے طور پر ہوئی ہے۔ ادھر سرحدی ضلع کپوارہ کے کلاروس کپوارہ میں گزشتہ رات ایک 16سالہ لڑکا جس کی شناخت طالب حسین ولد ظفر احمد لون کے بطور ہوئی ہے ،کانی پورہ کلاروس میں دوران کام ایک مکسر کے نیچے دب جانے سے لقمہ اجل بن گیا ہے ۔ پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرلیا ہے اور قانونی لوازمات پورے کرنے کے بعد لاش  ورثاء کے حوالے کردی  ۔(مشمولات سی این آئی،کے این ایس)