فلپائن میں طوفان ’رائے‘ کی تباہ کاریاں | ہلاکتیں 400سے متجاوز،82لاپتہ اور ایک ہزار سے زائد زخمی

منیلا //فلپائن میں ڈیزاسٹر ایجنسی کا کہنا ہے کہ خطرناک طوفان ’رائے‘ سے ہونے والی تباہی میں ہلاکتوں کی تعداد 400 سے تجاوز کر گئی۔طوفان کو دو ہفتے گزر جانے کے باوجود زیادہ متاثر ہونے والے صوبوں کے حکام نے متاثرین کے لیے غذا، پانی اور پناہ گاہیں بنانے کے لیے مزید ساز و سامان کی اپیل کی ہے۔ قومی ڈیزاسٹر ایجنسی کے سربراہ ریکرڈو جلاد نے نیوز کانفرنس میں بتایا کہ اب تک 405 ہلاکتوں کی تصدیق ہوئی ہیں جن میں پیشتر افراد درخت گرنے اور لینڈ سلائیڈنگ کی زد میں آکر ہلاک ہوئے۔انہوں نے کہا کہ 82 شہری لاپتہ اور ایک ہزار 147 زخمی ہیں۔ریکرڈو جلاد نے کہا کہ مجموعی طور پر طوفان میں 5 لاکھ 30 ہزار کے قریب گھر متاثر ہوئے جن میں ایک تہائی مکمل طور پر تباہ ہوئے جبکہ بنیادی ڈھانچے اور کھیتوں کی تباہی سے 45 کروڑ 90 لاکھ ڈالرز کے نقصان کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔حکومتی اعداد و شمار کے مطابق طوفان ’رائے‘ سے 5 لاکھ انخلا مراکز میں رہنے والوں سمیت 45 لاکھ افراد متاثر ہوئے۔طوفان نے صوبہ بوہول، سیبو اور سوریگاؤ شمالی میں سب سے زیادہ تباہی مچائی ہے۔فلپائن کے مرکزی صوبوں میں ڈیزاسٹر اور حکام پانی اور بجلی کے نہ ہونے کے باوجود امدادی سرگرمیوں میں مصروف عمل ہیں۔بوہول میں ڈیزاسٹر ایجنسی کے سربراہ انتھونی ڈیمالریو نے ’رائٹرز‘ کو بتایا کہ طوفان سے بڑی تعداد میں تباہی ہوئی ہے، طوفان ایک بارودی مواد کی مانند تھا جو بوہول پر گرا۔