عوامی ٹرانسپورٹ میں ہورہی کمی باعث تشویش

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری حاجی علی محمدساگر نے سڑکوں پر پبلک ٹرانسپورٹ کی کمی خصوصاً شام کے وقت مسافر گاڑیوں کے سڑکوں سے غائب ہونے پر زبردست تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اس صورتحال سے نہ صرف عام لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے بلکہ اس سے تجارتی اور کاروباری سرگرمیوں کو بھی زبردست نقصان پہنچ رہاہے۔ ان باتوں کا اظہار انہوںنے مختلف علاقوں سے آئے ہوئے وفود خصوصاً شہر خاص کے دکانداروں کے ایک وفد کیساتھ تبادلہ خیالات کرتے ہوئے کیا۔ وفد نے کہاکہ لوگ دفتروں اور اپنے کام کاج سے فارغ ہوکر خرید و فروخت کیلئے جاتے تھے لیکن ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی سے لوگ اب گھروں میں رہنے کو ترجیح دیتے ہیں جو دکانداروں اور دیگر تاجروں کیلئے نقصان دہ ثابت ہورہاہے۔ ساگر نے وفد نے کہاکہ اس سے قبل بھی کئی وفود ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کی شکایات لیکر آئے ہیں اور پارٹی نے اس سلسلے میں متعلقہ حکام کی توجہ اس جانب مرکوز کرانے کی کوشش بھی لیکن انتظامیہ خواب غفلت میں ہے۔ انہوں نے کہاکہ ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی سے صرف تجارتی سرگرمیاں ہی متاثر نہیںہوئی ہیں بلکہ عام لوگوںکی روز مرزہ کے معاملات پر بھی منفی اثر پڑاہے ۔ بیماروں کو ڈاکٹروں کی کلینکوں اور ہسپتالوں تک پہنچنے میں زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے اور ایسے ملازمین کو بھی مشکلات درپیش ہیں جو دیر تک دفتروں میں کام کرتے ہیں۔ ساگر انتظامیہ خصوصاً آر ٹی او ور ٹریفک حکام پر زور دیا کہ رات دیر گئے تک ٹرانسپورٹ کی سہولیات یقینی بنانے کیلئے ٹھوس اور کارگر اقدامات اٹھائیں۔